Baseerat Online News Portal

کوئی بی مذبح بھگوان کے قانون کے مطابق قانونی نہیں :رام دیو

لکھنو،۳؍اپریل:اترپردیش میں یوگی حکومت کی طرف سے غیر قانونی ذبیحہ خانوں کے خلاف کی جا رہی کارروائی کو لے کر بیان بازیوں کا دور مسلسل جاری ہے۔اب اس معاملے میں یوگ گرو بابا رام دیو نے بھی اپنے ردعمل کا اظہار کیا ہے۔ اس پر لوگ اپنی اپنی رائے بھی رکھ رہے ہیں۔بابا رام دیو نے ٹوئٹر پر ایک پوسٹ کیا ہے، جس میں لکھا ہے کوئی بھی ذبیحہ خانہ بھگوان کے قانون کے مطابق قانونی نہیں ہے۔اس کے ساتھ ہی انہوں نے لکھا ہے کہ جانوروں کو مارنا ہی غیر قانونی ہے۔اس سے پہلے بابا رام دیو نے گزشتہ دنوں یہاں دارالحکومت لکھنؤ میں یوگی آدتیہ ناتھ حکومت کی طرف سے غیر قانونی ذبیحہ خانوں پر کی جا رہی کارروائی کی حمایت کی تھی۔انہوں نے اسے حکومت کا صحیح قدم قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ ہر غیر قانونی چیز کے خلاف کارروائی ہونی چاہیے۔حالانکہ ریاستی حکومت کی جانب سے کہا گیا ہے کہ جو ذبیحہ خانے نیشنل گرین ٹربیونل (این جی ٹی )کے احکامات کی خلاف ورزی کر رہے ہیں اور غیر قانونی طور پر گندگی پھیلا رہے ہیں ان کو ہٹا یا جائے گا اور کسی کو بھی صحت کے ساتھ کھلواڑ کرنے کی چھوٹ نہیں دی جائے گی۔وہیں یوگی کابینہ کے وزیر سدھارتھ ناتھ سنگھ نے بھی کہا ہے کہ حکومت غیر قانونی ذبیحہ خانوں کے خلاف ہی قدم اٹھا رہی ہے۔ایسے میں بابا رام دیو نے اپنے تازہ تبصرہ سے اس بحث کو پھرسے ایک نیا موڑ دے دیا ہے۔بابا رام دیو کے ٹوئٹ پر سوشل میڈیا میں ردعمل آنے شروع ہو گئے ہیں ، کچھ لوگ ان کی حمایت کر رہے ہیں ،وہیں کچھ لوگ اس بیان پر سوال بھی اٹھا رہے ہیں۔

You might also like