Baseerat Online News Portal

رام مندر بابری مسجد تنازعہ کا حل بات چیت سے ہو تو بہترہو گا

یوپی کے وزیراعلیٰ کا پانچ جنیہ اخبار کو پہلا انٹرویو
نئی دہلی۔۳؍اپریل:  یوپی کا وزیر اعلیٰ بننے کے بعد یوگی آدتیہ ناتھ نے راشٹریہ سوئم سیوک سنگھ کے پانچ جنیہ اخبار کو پہلا انٹرویو دیا ہے۔ اس انٹرویو میں یوگی نے ایودھیا میں رام مندر بنانے کے معاملے پر اپنی رائے رکھی ہے۔انٹرویو میں یوگی نے رام مندر کے ساتھ ساتھ مذبح پر بھی بات کی ہے۔رام مندر نرمان کو لے کر یوگی نے کہا ‘دونوں طرف اگر بات چیت کے ذریعے تنازعہ کا حل نکالتے ہیں تو اچھا رہے گا۔ میں سپریم کورٹ کے ابزرویشن کا استقبال کروں گا، حکومت چونکہ بحث میں نہیں ہے، تو جو دو فریق ہیں وہ آپس میں بات چیت کے ذریعے کوئی حل نکالیں،حکومت کو کہیں تعاون کرنا ہے ہوگا تو اس پر حکومت اتفاق کرےگی۔ بہتر ہوگا کہ پرامن طریقے سے اس مسئلے کا حل ہو۔یوگی نے آگے کہا ‘سب کچھ موجود ہے جو جنگ تھی اس پوری جنگ کو تو 30 ستمبر، 2010 کو کورٹ کا فیصلہ واضح کر دیتا ہے تو جب سب کچھ واضح ہو چکا ہے تو مجھے لگتا ہے کہ تنازعہ کا بات چیت سے ہی حل ہو تو بہترہو گا اور اچھا پیغام جائے گا۔ہم نے دونوں فریقوں پر زور دیا ہے کہ لائحہ عمل طے کریں اور حل کا راستہ نكالیں۔واضح رہے کہ رام مندر بابری مسجد تنازعہ پر سپریم کورٹ نے حال ہی میں کہا تھا ‘یہ ایک حساس اور جذباتی معاملہ ہے اور حساس مسائل کو باہمی رضامندی سے حل نکالنا بہتر ہے۔اس تنازعہ کا حل تلاش کرنے کے لئے تمام متعلقہ فریقوں کو نئے سرے سے کوشش کرنی چاہئے۔ ‘سپریم کورٹ کے اس اہم تبصرہ کے بعد ایک بار پھر رام مندر بابری مسجد کا تنازعہ اٹھنے لگا تھا ۔ لیکن اس تنازعہ کولے کر فی الحال کوئی خاص بات نہیں بن سکی ہے۔

You might also like