ہندوستان

ہم ملک بھر میں گئو کشی پر پابندی کا قانون چاہتے ہیں :موہن بھاگوت

بی جے پی زبردستی اپنے نظریات کوتھوپنے کے مشن پرسرگرم عمل:سچن پائلٹ
نئی دہلی،9؍اپریل :ملک میں نام نہاد گئو رکشک تنظیموں کی طرف کی جارہی غنڈہ گردی پر اٹھے ہنگامے کے درمیان آرایس ایس چیف موہن بھاگوت نے پورے ملک میں گئو کشی پر پابندی لگانے والے قانون کی وکالت کی ہے۔انہوں نے کہا کہ گئو کشی کے نام پر کوئی بھی تشدد ہدف کو نقصان پہنچاتا ہے، قانون پر ہر حال میں عمل کیا جانا چاہیے ۔بھاگوت نے دہلی میں مہاویر جینتی کے موقع پر منعقد ایک پروگرام میں کہاکہ ہم ملک بھر میں گئو کشی پر پابندی لگانے والا قانون چاہتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ گئو کشی کے نام پر کوئی بھی تشدد ہدف کو بدنام کرتا ہے اور قانون پر عمل کرنا ہی چاہیے ،لیکن ساتھ ہی آر ایس ایس سربراہ نے یہ بھی کہا کہ قانون پر عمل کرتے ہوئے گائے کی حفاظت کرنے کا کام جاری رہنا چاہیے ۔بھاگوت کا یہ بیان ایسے وقت میں آیا ہے جب نام نہاد گئو بھکتوں کی طرف سے راجستھان میں پہلو خان نامی ایک شخص کو ہلاک کرنے سے پورے ملک میں سیاسی بھونچال مچا ہوا ہے۔سابق مرکزی وزیر اور کانگریس کے سینئر لیڈر سچن پائلٹ نے اس معاملے پر بی جے پی کو گھیرتے ہوئے کہا کہ اینٹی رومیو اسکواڈ ہو، لو جہاد ہو، گئو رکشکو ں کے غیر قانونی کام ہو یا مذبح کے خلاف کارروائی ہو، ان سب باتوں سے ایک بات صاف ہے کہ بی جے پی حکومت پورے ملک پر زبردستی اپنے نظریات کو تھوپنے کے کام کو بہت تیزی سے آگے بڑھارہی ہے۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی کا اصلی ایجنڈا اب کھل کر ملک کے سامنے آ رہا ہے۔پائلٹ نے کہاکہ الور میں پیٹ پیٹ کر کئے گئے قتل کے بارے میں افسوس یا ہمدردی کا ایک لفظ بھی بولا نہیں کیا گیا۔وزیر اعلی کو نام نہاد گئو رکشکو ں اور ان کی پر تشدد کاروائیوں کے خلاف بولنا چاہیے ، کیا وہ بولیں گی؟۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker