ہندوستان

5 ریاستوں میں بجلی کی زیادہ قیمت نہیں وصول سکیں گے ٹاٹا-اڈانی پاور:سپریم کورٹ کافیصلہ

نئی دہلی،11؍اپریل : اب ٹاٹا اور اڈانی پاور 5 ریاستوں میں بجلی کی من مانی قیمت نہیں وصول سکیں گے۔ سپریم کورٹ نے منگل کو اس کی اجازت دینے سے انکار کر دیا ہے، دونوں کمپنیاں انڈونیشیا میں کوئلے کی قیمت بڑھنے کا حوالہ دیتے ہوئے بجلی سپلائی کے زیادہ پیسے چاہتی تھیں۔ مرکزی الیکٹریسٹی ریگولیٹری کمیشن نے دسمبر میں دونوں کمپنیوں کو دسمبر میں بجلی کی قیمت بڑھانے کی اجازت دے دی تھی لیکن آج سپریم کورٹ نے اس سے انکار کر دیا۔ اس فیصلے سے گجرات، ہریانہ، پنجاب، راجستھان اور مہاراشٹر کے صارفین کو فائدہ ہو گا۔ ٹاٹا گروپ کا کوسٹل گجرات پاور لمیٹڈ اور اڈانی پاور مندرا پراجیکٹ ان 5 ریاستوں میں 8620 میگاواٹ بجلی کی سپلائی کرتے ہیں۔ بجلی کی پیداوار کے لئے یہ کمپنیاں انڈونیشیا سے کوئلہ درآمد کرتیں ہیں۔2010 میں انڈونیشیا کے قانون میں تبدیلی کے بعد درآمد مہنگی ہو گئی ہے۔ اسی بنیاد پر ایپلیٹ ٹریبونل فار الیکٹریسٹی اوردیگرنے دونوں کمپنیوں کو بجلی کی قیمت بڑھانے کی اجازت دے دی تھی۔ اس کا سیدھا اثر صارفین پر پڑتا لیکن آج سپریم کورٹ کے جسٹس پی سی گھوش اور آر ایف نریمن نے صاف کر دیا کہ کمپنیوں کو ریاستوں کے ساتھ ہوئے معاہدے پر عمل کرناہو گا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker