Baseerat Online News Portal

مسلم پرسنل لاء بورڈ کے فیصلہ کا ممبئی کی خواتین ونگ نے خیر مقدم کیا

ممبئی ۔۱۷؍اپریل: (نمائندہ خصوصی) مسلم پرسنل لاء بورڈ کے ایک نشست میں تین طلاق دینے والوں کے سماجی بائیکاٹ کے فیصلہ کا خواتین مسلم پرسنل لاء بورڈ نے خیر مقدم کیا ہے ساتھ ہی اسے ایک بہتر قدم بھی قرار دیا ہے ۔ آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کی ممبئی خواتین ونگ کی سر گرم خواتین نے بھی اب یہ فیصلہ کیا ہے کہ وہ طلاق سے قبل افہام و تفہیم کے فروغ کیلئے مہم چلائے گی تاکہ بلا شرعی عذر طلاق نہ دیا جائے ۔ ایسی صورت میں مسلم پرسنل لاء بورڈ کے اس سماجی بائیکاٹ کے فیصلہ سے طلاق ثلاثہ کے واقعات میں بھی کمی واقع ہوگی۔ مسلم پرسنل لاء بورڈ کے فیصلہ کو خواتین ونگ نے قابل مستحسن قدم بھی قرار دیا اور کہا کہ مسلمانوں میں طلاق کے واقعات دیگر قوموں کے مقابلے میں انتہائی کم ضرور ہے لیکن طلاق کے واقعات ہی نہ ہو اس کیلئے خواتین ونگ بڑھ چڑھ کر طلاق کے قبل افہام و تفہیم کیلئے مہم چلائیگی۔ انہوں نے کہا کہ طلاق ثلاثہ کے معاملے میں ایک طبقہ مسلمانوں کو بدنام کر نے کی مذموم سازش بھی کر رہا ہے مسلم پرسنل لاء بورڈ کا یہ فیصلہ ان لوگوں کے منہ پر زناٹے دار طمانچہ ہے یہ طبقہ مسلمانوں کا ازلی دشمن بھی ہے لیکن خواتین کے حقوق دیگر طبقات اور قوموں سے کئی زیادہ اسلام میں ہے اور خواتین طلاق کے بعد بھی بے یارو مددگار نہیں ہوتی بلکہ اس کے گھر والے اس کے ماں باپ , بھائی بہن و دیگر اس کے نگہبان ہوتے ہیں اوران کی جائیدادوں میں بھی لڑکی کو حصہ دیا جاتا ہے ۔ممبئی کی خواتین ونگ کی جانب سے مسز شہلا سہیل شیخ.ذکیہ فرید شیخ اور ریحانہ سلامت نے یہ اعلامیہ جاری کیا ہے۔

You might also like