Baseerat Online News Portal

حیدرآباد میں اکابر علماء کے ہاتھوں ۱۳؍حفاظ کرام کی دستار بندی

حیدرآباد۔۱۷؍اپریل: (غلام رسول قاسمی) گزشتہ دنوں مدرسہ ســـراج العــــلوم حشمت پیٹ سکندر آباد حیدرآباد میں ایک عظیم الشان اجــــلاس عـــــام کا انعقاد عمل میں آیا، جس میں اندرون و بیرون شہر سے اکابر علماء کرام تشریف لائے قابل ذکر شخصیات میں امیر الہند حضرت مولانا قاری محمد عثمان منصور پوری دامت برکاتہم استاذ حدیث و فقہ دارالعلوم دیوبند اور محقق عصر و فقیہ دہر حضرت مفتی شبیر احمد صدر مفتی جامعہ قاسمیہ شاہی مرادآباد یوپی انکے علاوہ علماء و عوام کی ایک بڑی تعداد اس سالانہ جلسہ عام میں شریک ہوئ ، جلسہ کا افتتاح شہر دکن کے مشہور و معروف قاری جناب قاری اقبال صاحب کی سحر انگیز و دلسوز آواز میں تلاوت قرآن پاک سے ہوا اسکے بعد آقائے نامدار تاجدار مدینہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کی بارگاہ میں نذرانہ عقیدت پیش کیا گیا اسی موقع سے طلبہ کی انجمن اصلاح البیان کے سالانہ مسابقہ نعت و خطابت میں پوزیشن حاصل کرنے والے طلباء کرام کو بھی عوام کی عدالت میں ما فی الضمیر ادا کرنے کا موقع دیا گیا، جس پر الحمد للہ یہ طلباء کھرے اترے، اور عوام کے دلوں کو فتح کرنے کامیاب رہے، اسکے بعد اکابر علماء کے ہاتھوں امسال حفظ قرآن کریم مکمل کرنے والے کل 13 حفاظ کرام کی دستار بندی کی گئی، پھر مہمان خصوصی امیر الہند حضرت مولانا قاری محمد عثمان منصور پوری نے تمام حفاظ کو آخری درس پڑھایا، بعد ازاں مہمانانِ کرام و مفتیان عظام نے اپنے پرمغز خطابات کے ذریعے اہل ایمان کو قرآنی تعلیمات سے وابستگی پیدا کرنے اور علماء کرام سے تعلق جوڑے رکھنے پر زور دیا، جبکہ نظامت کے فرائض ادیب عصر و انشاء پرداز جناب مفتی ولی اللہ خان قاسمی صاحب بحسن و خوبی انجام دئیے، اور کرسی صدارت، ذمہ دارانِ مدرسہ نے اپنے ہردلعزیز و بزرگ شخصیت حضرت مولانا محمد خالد القاسمی صدرالمدرسین جامعہ ھذا کے سپرد کیں، ذرائع کے مطابق دورانِ اجلاس مدرسہ کی وسیع و عریض مسجد اپنی وسعت کے باوجود تنگ دامنی کا شکوہ کر رہی تھی، آخر میں قاری محمد عثمان منصور پوری صاحب صدر جمعیۃ علماء ہند کی دعاء پر پروگرام کا اختتام ہوا۔

You might also like