Baseerat Online News Portal

صدرجمہوریہ انتخاب میں مودی حکومت کو شکست دینے کی تیاری

بی جے پی کے خلاف مہاگٹھ بندھن کیلئے لالوسونیاسے ملیں گے
بی جے پی کی قبائلی شخص کو صدر جمہوریہ اور وینکیانائیڈوکو نائب صدر جمہوریہ بنانے کی تیاری
نئی دہلی ،۲۲اپریل :(ممبئی اردونیوز)صدارتی الیکشن سے قبل اپوزیشن پارٹیاں مودی حکومت کے خلاف ایک مہاگٹھ بندھن بنانے کی تیاریاں کررہی ہیں اور بی جے پی کےصدارتی امیدوار کے خلاف سیکولر اپوزیشن پارٹیوںکا ایک متحدہ امیدوار کھڑاکرنے پر غوروخوض کیاجارہاہے۔اسی ضمن میں کانگریس صدر سونیاگاندھی سےبہار کے وزیراعلیٰ نتیش کمار کی ملاقات کے دودن بعد آج راشٹریہ جنتادل (آرجے ڈی)سربراہ لالوپرساد یادونے کہاکہ ’’بی جے پی کے خلاف متحدہ اپوزیشن محاذ بنانے کیلئے وہ بھی جلد ہی سونیاگاندھی سے ملاقات کریں گے۔سنیچر کے روزلالوپرساد نے کہاکہ ’’سونیاگاندھی سےملاقات کے دوران موجودہ سیاسی صورتحال پر بات چیت کی جائے گی اور بی جے پی کے خلاف سیکولر اور سوشلسٹ پارٹیوں کو ملاکر ایک مضبوط اتحاد بنانے کیلئے ٹھوس لائحہ عمل تیارکرنے پر صلاح ومشورہ کیاجائے گا۔لالو نے مزید کہاکہ بی جے پی کی بڑھتی طاقت کامقابلہ کرنے کیلئے بہار کی طرز پر قومی سطح پر بھی ایک بڑے اتحادکی ضرورت ہے ۔واضح رہے کہ جمعرات کو بہار کے وزیراعلیٰ نتیش کمارنے سونیاگاندھی سے دہلی واقع ان کی رہائش گاہ پر ملاقات کی تھی ۔نتیش کمار کی پارٹی جے ڈی یو نے اسے ایک رسمی ملاقات قراردیاتھالیکن سیاسی ماہرین اس ملاقات کو بی جے پی کے خلاف اپوزیشن پارٹیوں کاایک ’مہاگٹھ بندھن‘کی تیاری کے طورپر دیکھ رہے ہیں ۔نتیش کمار کی قیادت میں جے ڈی یو، آر جے ڈی اور کانگریس نے بہار اسمبلی انتخابات میں مہاگٹھ بندھن بناکربی جے پی کو شکست دی تھی۔ اب قومی سطح پر ’مہاگٹھ بندھن‘ بنانے کی بحث اپوزیشن پارٹیوں میں شروع ہوگئی ہے۔ نتیش کی سونیا سے ملاقات کو بھی اس تناظر میں دیکھا جا رہا ہے۔ویسے بھی نتیش کمار قومی سطح پر وزیراعظم نریندر مودی سے مقابلہ کرنے کے لئے سیکولر جماعتوں کے مہاگٹھ بندھن کے لئے اپیل کرتے رہے ہیں، جیسا کہ بہار انتخابات سے پہلے کیا گیا تھا۔بی جے پی سے شکست کے بعد ویسے بھی کانگریس اس وقت ماتھاپچی کرنےمیں مصروف ہے۔ اسی کڑی میں ذرائع کے مطابق نتیش کمار نے سونیا گاندھی کو مشورہ دیتے ہوئے کہاکہ ’’نریندر مودی پر رائےزنی کرنے کے بجائے ہم لوگوں کو اپنا ایجنڈا خود طےکرنا چاہئے‘‘۔ کم و بیش ایسا ہی مشورہ کانگریس نائب صدر راہل گاندھی کو بھی نتیش کمار دے چکے ہیں۔دریں اثناءذرائع سے ملی اطلاعات کے مطابق مودی حکومت آئندہ صدرجمہوریہ کیلئے این ڈی اے کی طرف سےکسی قبائلی شخص کو نامزد کرنے کیلئے غورکررہی ہے تاکہ قبائیلیوں اور پچھڑے سماج کی اسے حمایت حاصل ہوسکے ۔اس کےعلاوہ بی جے پی مرکز ی وزیراطلاعات ونشریات وینکیانائیڈو کو نائب صدر جمہوریہ بنانے کی تیاری کررہی ہے تاکہ جنوبی ہند کی ریاستوں میں ہونے والے الیکشنوں میں اسے سیاسی فائدہ حاصل ہوسکے ۔

You might also like