ہندوستان

راجیو گاندھی قتل معاملے کی آگے جانچ ہونی چاہیے : سپریم کورٹ

نئی دہلی، یکم مئی :سابق وزیر اعظم راجیو گاندھی قتل معاملے میں سپریم کورٹ نے سی بی آئی سے کہا کہ جین کمیشن کی ہدایت کے مطابق ، راجیو گاندھی کے قتل کی آگے جانچ ہونی ہی چاہیے ۔عدالت عظمی نے سی بی آئی سے معاملے کی آگے جانچ کرنے کے لیے چار ہفتے میں سیل بند لفافے میں اسٹیٹس رپورٹ مانگی ہے۔عدالت نے سی بی آئی کو یہ بتانے کے لیے بھی کہا ہے کہ اس معاملے کی آگے کی جانچ کب تک مکمل ہو سکتی ہے، ساتھ ہی یہ بھی بتانے کی ہدایت دی ہے کہ اس معاملے میں فرار ملزمان کی حوالگی سمیت کیا کیا قانونی دشواریاں آ رہی ہیں؟سی بی آئی نے ان رکاوٹوں کے لیے کیا اقدامات کیا ہے؟ عدالت معاملہ کی سماعت 16؍اگست کو کرے گی ۔سی بی آئی کی جانب سے بتایا گیا کہ اس معاملے کی جانچ چل رہی ہے، لیکن یہ نہیں بتایا جاسکتا کہ معاملہ کی جانچ میں کتنا وقت لگے گا۔اس معاملہ میں فرار ملزمان کے حوالگی میں بھی وقت لگ رہا ہے، جب تک ان ملزمان کو واپس نہیں لایا جائے گا، تفتیش مکمل نہیں ہو سکتی۔دراصل ، راجیو گاندھی قتل کے سلسلہ میں دو معاملے درج کئے گئے تھے، ایک معاملہ میں مرگن، نلنی، پیراری ولن سمیت سات افراد کو سزا ہو چکی ہے اور وہ عمر قید کی سزا کاٹ رہے ہیں،جبکہ دوسرے معاملے میں لٹے چیف پربھاکرن، اکیلا اور پٹوامن سمیت 11لوگوں کو سازش کا ملزم بنایا گیا تھا، ان میں سے 9کی موت ہو چکی ہے ۔راجیو گاندھی قتل کے مجرم پیراری و لن نے سپریم کورٹ میں عرضی داخل کرکے قتل کی آگے تحقیقات کی ہدایت دینے کی اپیل کی ہے۔درخواست میں کہا گیا ہے کہ جین کمیشن کی سفارش کی بنیاد پر معاملے کی آگے کی جانچ کے لیے سی بی آئی کی نگرانی میں ملٹی ڈسپلینیری ما نیٹرنگ اتھارٹی بنائی گئی تھی، لیکن 18سال گزر جانے پر بھی جانچ آگے نہیں بڑھی ہے ۔سپریم کورٹ اس معاملے میں پہلے ہی سی بی آئی کو نوٹس جاری کرکے جواب مانگ چکا ہے۔پیراری و لن کو راجیو گاندھی قتل معاملہ میں سازش کا مجرم قرار دیا گیا تھا اور وہ 26سال سے جیل میں ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker