ہندوستان

حصول تعلیم کے تئیں محنت و لگن طلباء کے روشن مستقبل کی علامت :حافظ عثمان

ڈاکٹر عبد العلی طبیہ کالج کٹولی میں لٹریری اسپورٹس کے طلبہ وطالبات کیلئے اعزازی تقریب کا انعقاد
لکھنؤ ؍۱۲؍مئی (سعید ہاشمی ) موجودہ ترقی یافتہ دور میں جب تک ہم اعلی زیور تعلیم سے آراستہ ہونگے اس وقت مسلمان ترقی نہیں کرسکتا اس لئے کہ اعلی تعلیم ہی ہماری فلاح و بہبود کی شاہ کلید ہے لہذا طلبہ و طالبات کو چاہئے کہ وہ اس مقابلہ جاتی عہد میں اپنا قیمتی وقت تحصیل علم میں صرف کریں اور دوران تعلیم اساتذہ کرام کا ادب و احترام کو یقینی بنائیں ہندوستان ایک سیکولر ملک ہے جو سبھی کو با وقار اور سبھی طبقات کو یکساں طور پر ترقی کے مواقع فراہم کرتا ہے ہمیں اس کا زیادہ سے زیادہ فائدہ اٹھانا چاہئے ۔مذکورہ خیالات کا اظہار کمشنر محکمہ ٔ اطلاعات اترپردیش حافظ عثمان نے کیا وہ ڈاکٹر عبد العلی طبیہ کالج کٹولی ملیح آبادی میں لٹریری اسپورٹ ویک کے تحت منعقدہ تقسیم اسناد و انعامات کی تقریب کے موقع پر بطور مہمان خصوصی خطاب کر رہے تھے ۔انہوں نے کہا کہ محنت و جدوجہد کے تحت ہر مشکل منزل سرکی جاسکتی ہے لہذا ہمیں حصول مقصد کے تئیں شب وروز محنت و جدوجہد کرنے کی ضرورت ہے ،کمشنر اترپردیش نے خواتین کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپکی ذمہ داری مزید بڑھ جاتی ہے گھریلو کام کاج کے ساتھ سماج اور معاشرہ کو بھی سنبھالنا ہوگا انہوں نے کہا کہ اگر ایک بیٹی تعلیم یافتہ ہوگی تو پورا خاندان تعلیم یافتہ ہوگا اور آنے والی نسلیں ترقی کرینگی ،انہوں نے واضح طور پر کہا کہ جو دنیا میں محنت اور کوشش کریگا اس کو آخرت میں انعام ملے گا ،مہمان خصوصی نے زور دیکر کہا کہ احسان کا بدلہ احسان کے تحت دو اور یاد رکھو جو لوگ والدین اور اساتذہ کی خدمات کو فراموش کردیتے ہیں وہ کبھی ترقی اور خوشحال نہیں رہ سکتے اس لئے اساتذہ کے ادب و احترام کو یقینی بنائیں انہوں نے طلبہ سے محنت اور انہماک کے ساتھ اعلی حسن اخلاق کامظاہرہ کرنے کی نصیحت کرتے ہوئے کہا کہ نرم گفتاری اور حسن اخلاق جیسی صفات طلبہ اپنے اندر پیدا کریں انہوں نے پڑوسی کے حقوق کی ادائیگی پر زور دیا اور ہندو مسلم اتحاد اور یکجہتی کو وقت کی ضرورت قراردیتے ہوئے کہا کہ ہمیں پڑوسیوں کے حقوق کا خیال رکھنا ہوگا ۔ہندو مسلم جن ایکتا منچ کے صدر سوامی لکشمی شنکر آچاریہ نے ہندو مسلم اتحاد کیلئے نیک نیتی سے کام کرنے کو وقت کا اہم تقاضا قراردیا اور کہا کہ اسلام امن و شانتی اور مساوات کا علمبردار ہے اور اسلام انسانیت اور ایکتا کا درس دیتا ہے اس لئے جب تک کسی بھی پیشہ میں ایمانداری اور دیانت داری نہایت ضروری ہے اور یہ خوف خدا سے ہی ممکن ہے انہوں نے جہاد پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ جہاد ظلم و زیادتی اور خون خرابہ کیلئے بلکہ انسانیت بھلائی ،عدل و انصاف اور حقوق کے تحفظ کیلئے ہوتا ہے ۔لہذا ہمیں فروغ انسانیت کیلئے اپنی ذمہ داری نبھائیں ۔سید حسن مظاہری ڈائریکٹر ڈاکٹر عبد العلی طبیہ کالج نے علم کی اہمیت پرروشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ انسانیت سے عظیم مذہب ہے اور ملک کے موجودہ حالات کے تناظر میں پیام انسانیت وقت کا اہم ترین تقاضا ہے سید حسن مظاہری نے لفظ اقراء پر تفصیلی روشنی ڈالتے ہوئے علم کی اہمیت بیان کی اور طلبہ وطالبات کیلئے اعلی تعلیم کو ترقی کا ضامن قراردیا۔انہوں نے بانی ڈاکٹر عبد العلی مرحوم کی تعلیمی سماجی اور یونانی خدمات کو بھی نسل نو کیلئے مشعل راہ بتایا۔اور مہمان کرام کا خیر مقدم کیا۔علاوہ ازیں صحافی اے آر آزاد دہلی نے بھی خطاب کیا۔دریں اثنا کرکٹ ٹیم اور مختلف کھیل مقابلوں میں امتیازی نمبرات حاصل کرنے والے طلبہ وطالبات کو مہمانوں کے بدست سند اور انعامات سے نوازا گیا۔اس سے قبل سید حسن مظاہری ڈائریکٹر ڈاکٹر عبد العلی طبیہ کالج ،پرنسپل ڈاکٹر ساجد ،اور رجسٹرار اوصاف اکبر وغیرہ نے مہمانوں کا خیرمقدم کیا۔جبکہ کالج کی جانب سے مہمانوں اور منتظمہ کمیٹی کے ممبرا ن کو خصوصی اعزاز سے نوازا گیا ۔قبل ازاں پروگرام کا آغاز قاری عبد الرحمن کی تلاوت سے ہوا ۔پروگرام کی صدارت حافظ عثمان نے کی اور نظامت ڈاکٹر رضوان الرضا نے کیا ۔پروگرام میںجملہ اساتذہ طلبہ وطالبات موجود رہے آخر میں سید حسن مظاہری نے تمام مہمانوں اور حاضرین کا شکریہ ادا کیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker