ہندوستان

چا چا نہرو مدرسہ میںگاندھی جینتی اور صاف بھارت مہم ایک ساتھ منایا گیا

علیگڑھ 2 اکتوبر(پریس ریلیز)گاندھی جینتی اور صاف بھارت مہم ایک ساتھ منایا گیا گاندھی جینتی کے موقے پر راشٹریہ گان کے ساتھ خراج عقیدت پیش کیا گیا۔ شہر میں جگہ جگہ صاف بھارت رکھیں گے اس کا نظارہ چا چا نہرو مدرسے میں دیکھنے کو ملا ہندوستان کے وزیر اعظم نریدر مودی کا صاف بھارت مہم اکی گونج ہر شہر میں ہر گلیوں میں اس کی گونج سنائی دیتی ہے۔صاف بھارت مہم میں سب کے ہاتو میں جھاڑو تھی چچا نہرو مدرسے میں بچوں سے لے کر ٹیچرس تک اس میں شامل رہے۔چا چا نہرو مدرسے میں صاف بھارت مہم میں وہاں کے تمام ٹیچرس اور 400 بچوں نے اس سوچتہ مہم میں گاندھی جینتی کے موقے پر شرکت کی سابق نائب صدر ہند حامد انصاری کی اہلیہ سلماانصاری کی جانب سے چلائے جا رہے صفائی ابھیان صاف بھارت مہم کے تحت چلایا گیا سلما انصاری اس اسکول کی چیئرمین بھی ہیں یہ اسکول چیر یٹیبل بیس ہے۔ صفائی ابھیان چا چا نہرو اسکول سے شروع ہوکر شمشاد مارکٹ پر ختم کیا گیا۔ اپنے ہاتھوں سے سڑک پر جھاڑو لگا کر کوڑا الگ الگ سے اٹھا کرایک جگہ جمع کیا گیا۔ اس علاقے میں صفائی مہم چلائی گئی ۔چا چا نہرو مدرسے کی پرنسپل صاحبہ سلیم نے ہمارے نماندہ سے خصوصی بات کرتے ہوئے کہا کہہر سال کی طرح امسال بھی گاندھی جینتی کے موقع پرسوچھتا ابھیان پروگرام کا انعقاد کیا گیا اس تقریب کا انعقاد نہایت عقیدت اور جوش و خروش کے ساتھ کیا گیا۔بائے قوم مہاتما گاندھی کی تصاویر پر بھول ڈال کر انکو خراج عقدت پیش کی گئی ۔ اس خصوصی تقریب میں پرنسپل صاحبہ سلیم نے اساتذہ، طلبہ کو قومی اتحاد ، قربانی کے جذبہ سے کام کرنے اور صفائی قائم کرنے کا حلف دلایا۔اس موقعہ پر دیہات اور پسماندہ بستیوں میں سوچھ بھارت مشن(صاف ستھرا ہندوستان مہم ) کے تحت لوگوں کو صفائی کے تئیں بیدار کیا۔اس اسکول میں زیاتر بچے جھگی جھونپڑیوں میں رہنے والے لوگوں رکشا چلانے والے سبزی بیچنے والوں کے بچے پڑھنے آتے ہیں۔ ان سے بھی کہا گیا کہ اپنے قرب و جوار کی جگہوں کو صاف ستھرا رکھنے اور کوڑے کو صحیح طریقہ سے صحیح جگہ پھینکنے کی اپیل کی تاکہ بیماریوں سے بچا جا سکے۔انہوں نے کہا کہ گاندھی جی نے ہمیشہ دنیا کے کمزور اور دبے کچلے طبقات کی آواز کو بلند کیا ہے ہماری یہی کوشش ہے کہ ہمارے بچے مستقبل میں کچھ بن سکیں۔انہوں نے کہا کہ گاندھی جی کے اصولوں کو اپنا کر اور دیہی علاقوں کو با اختیار بناکر بے روزگاری کے مسئلہ کو بڑی حد تک حل کیا جاسکتا ہے کیوں کہ گاندھی جی دیہاتوں کو خود کفیل بنانا چاہتے تھے۔بچوں سے ٹیچرس اور تمام اسٹاف سے اپیل کی کہ وہ اسکول اور اپنے گھر کے آس پاس کو صاف ستھرا شہر بنانے میں اس پر عمل کرینگے۔ میں پُر امن تعلیمی ماحول کے قیام میں اپنا مثبت تعاون کریں عوام کی فلاح کے لئے کام کرے یہ ہمارا مقصد نہیں ہماری ضمہ داری بھی ہے۔انہوں نے اسکول کے ساتھ ساتھ آس پاس کے علاقہ کو اور ساتھ ہی میں تسلسل کے ساتھ صفائی مہم چلائے جانے کی اپیل کی۔ اپنے گھر ہی نہیں بلکہ پورے شہر کو صاف رکھیں گے۔اس دوران اسکول کی پرنسپل صاحبہ سلیم، ٹیچرس اسٹاف، اسکولی بچے اور میڈیا کورڈنیٹر خالد مصطفی شامل رہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker