طب وسائنس

جنسی بے راہ روی سے پیدا ہونے والی ایک نئی بیماری دریافت

لندن: (ایجنسیاں)سائنسدانوں نے انکشاف کیا ہے کہ دنیا میں جنسی بے راہ روی کے باعث ایڈز کی طرز کی ایک نئی بیماری دریافت ہوئی ہے اورحیرت انگیز بات یہ کہ جو افراد اس مرض کا شکار ہیں انہیں اس بات کا علم ہی نہیں ہے کہ ان کے اندر یہ خطرناک انفیکشن جنم لے چکا ہے۔
مائیکوپلازما جینیٹیلئم ( جی ایم) نامی یہ انفیکشن 30 سال قبل دریافت ہوا تھا اور اب انکشاف ہوا ہے کہ یہ جنسی عمل کے ذریعے ایک شخص سے دوسرے میں منتقل ہوسکتا ہے،16 سے 44 سال تک کی ایک فیصد برطانوی آبادی اس مرض کی شکار ہے اور انہیں اس کا علم بھی نہیں۔ جو شخص بہت سے لوگوں کے ساتھ جنسی تعلقات رکھتا ہے ان میں یہ مرض موجود ہوسکتا ہے، جب کہ یہ مرض 90 فیصد مردوں میں موجود ہوسکتا ہے، اگرچہ یہ مرض مہلک نہیں لیکن یہ پیشاب کی نالیوں میں جلن پیدا کرنے کے ساتھ ساتھ خواتین کو بانجھ بھی بناسکتا ہے۔
دوسری جانب ماہرین اور ڈاکٹروں نے خبردار کیا ہے کہ ٹنڈر، گرنڈر اور ایسی ہی دیگر ایپس اور سہولیات لوگوں میں ایڈز سمیت کئی امراض کی وجہ بن رہے ہیں کیونکہ لوگ ان ایپس کو جنسی تعلقات کے لیے استعمال کررہے ہیں۔ ڈاکٹروں کے مطابق اس طرح لوگوں میں ایچ آئی وی انفیکشن اور دیگر امراض کا ایک ’ طوفان‘ پھٹ پڑے گا۔
2014 میں صرف برطانیہ میں ہی سفائلس ( آتشک) اور گونوریا ( سوزاک ) کی شرح میں بالترتیب 33 اور 19 فیصد اضافہ ہوچکا ہے اور ڈاکٹروں کے مطابق ان سے بچاؤ کا صرف ایک ہی طریقہ ہے اور وہ ہے احتیاط اور اپنے شریکِ حیات تک محدود رہنا۔

Tags

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker