ہندوستان

آزادی ہند میں مسلمانوں کی قربانیوں کو فراموش نہیں کیا جاسکتا

دارالعلوم اسراریہ میں جشن ِیوم جمہوریہ کے موقع پر علماء کا خطاب
سنتوشپور۔۲۷؍جنوری: یوم جمہوریہ کی مناسبت سے حفظ و تجوید کے معروف ادارہ دارالعلوم اسراریہ فقیر پاڑہ(جولہ)سنتوشپور میں جشن جمہوریہ کے سلسلے میں ایک شاندارتقریب کا اہتمام کیا گیا۔جس میں مدرسہ کے طلباء نے مختلف پروگرام پیش کئے ۔اس موقع پرمولانامنیرالدین نے یوم جمہوریہ پر تفصیل سے روشنی ڈالتے ہوئے جنگ آزادی میں علماء اور مسلمانوں کے کردار کو بیان کیا۔انہوں نے کہاکہ ہندوستان کو آزاد کرانے میں دیگر برادران وطن کے ساتھ ملک بھر کے مسلمانوں خاص کر علمائے کرام کا نمایاں رول رہاہے اور انہوں نے دیگر طبقات کے ساتھ مل کر اپنے جان مال کی قربانیاں پیش کیں اور بے مثال جذبۂ حب الوطنی کے تحت انگریزوں کے خلاف لڑتے رہے یہاں تک انہیں ہندوستان چھوڑکر بھاگنا پڑا۔انہوں نے کہا کہ افسوس کی بات ہے کہ آج مسلمانوں کی قربانیوں کو جان بوجھ کر جنگ آزادی کی تاریخ سے نکالا جارہا ہے ،لہذاہمیں اپنے اسلاف کی قربانیوں کو یاد رکھنے اور آنے والی نسلوں کو بتانے کی ضرورت ہے کیوں کہ جب تک ہم خود اپنی تاریخ کو محفوظ نہیں رکھیں گے،تب تک ہماری جدوجہد اور قربانیوں کی تاریخ محفوظ نہیں ہوسکتی۔مولاناشہنوازنے کہا کہ جمہوریت اور گنگاجمنی تہذیب ہندوستان کی شان ہے اور ہمیں اپنے ملک کی شان کو برقرار رکھنے کے لئے ہر ممکن جدوجہد کرنی ہوگی۔انہوں نے کہاکہ اس وقت مختلف شدت پسند عناصر اور فرقہ پرست حکومت کی وجہ سے ملک کی جمہوریت اور مشترکہ تہذیب نازک حالات سے گزررہی ہے ،لیکن اگر ملک کے باشعور اور مخلص افرادان حالات کا مقابلہ کرنے کی ٹھان لیں تو کوئی طاقت ہمارے ملک کی مشترکہ تہذیبی وراثت کو نقصان نہیں پہنچا سکتی۔اس موقع پرپروگرام میںشریک رہنے والوں میںڈاکٹرمحبوب ،قاری علی مرتضی،قاری عبدالواحد اشاعتی، قاری محمد حسن دیناجپوری،قاری شریف،قاری عبدالقاد ر بھاگلپوری، قاری مجیب الرحمن ، مولانا سہیم الدین بھاگلپوری ،ماسٹر افضال ،حاجی محمد حدیث ،شمشیراحمد،محمد التمش اور محمد منور وغیرہ کے نام خاص طورپر قابل ذکر ہیں ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker