ہندوستان

سشما سوراج کے خلاف ایف آئی آر درج

کانپور، ۲۴؍ مارچ۔مرکزکی مودی حکومت پر عراق میں 39 ہندوستانیوں کے قتل کا راز چھپانے کا الزام لگاتے ہوئے کانگریس نے آج یہاں وزیر خارجہ سشما سوراج سمیت چار لوگوں کے خلاف ایف آئی آر درج کرائی اور صدر جمہوریہ سےدیگر تمام ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرائے جانے کی اجازت طلب کی۔ کانگریس کے ضلع صدر هرپركاش اگنی ہوتری نے بتایا کہ ان کی قیادت میں کانگریسی کارکنان کوتوالی پہنچے اور وزیر خارجہ سشما سوراج، وزیر مملکت وی کے سنگھ، عراق میں ہندوستان کے سفیر اور خارجہ سکریٹری کے خلاف ایف آئی آر درج کرائی۔ کانگریس کا الزام ہے کہ مرکزی حکومت نے جان بوجھ کر 39 ہندوستانیوں کے قتل کا راز چھپایا اور متاثرہ خاندانوں کے جذبات کے ساتھ کھلواڑ کیا ہے۔ مسٹر ہرپرکاش اگنی ہوتری نے کہا کہ داعش کے چنگل سے بچ کر نکلے ہرپریت مسیح نے مودی حکومت کو بقیہ ہندوستانیوں کے قتل کے بارے میں مطلع کیا تھا۔ اس کے باوجود اس بات پر حکومت نے توجہ نہیں دی۔ یہاں تک کہ وزیر خارجہ سشما سوراج نے راجیہ سبھا کو غلط فہمی میں مبتلا رکھا۔ بیشک یہ ایک ناقابل معافی جرم ہے۔ کانگریس کا مطالبہ ہے کہ اس واقعہ کی غیر جانبدارانہ جانچ کرکے قصورواروں کو سخت سے سخت سزا دلائی جائے۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں کانگریس کی ضلع اکائی نے صدر جمہوریہ رام ناتھ كووند کے نام ایک میمورنڈم بھیجا ہے جس میں ہندوستانی شہریوں کےظالمانہ قتل کا راز چھپانے کیلئے متعلقہ دفعات کے تحت مقدمہ درج کرائے جانے کی اجازت مانگی ہے۔ واضح ر ہے کہ وزیر خارجہ سشما سوراج نے منگل کو راجیہ سبھا میں بتایا تھا کہ سال 2014 میں عراق کے موصل سے اغوا کے گئے 39 ہندوستانیوں کو قتل کر دیا گیا ہے۔ ان کی لاشوں کو گہری کھدائی ریڈار کی مدد سے بدوش کے ٹیلے میں تلاش کیا گیا۔ ان لاشوں کو ڈی این اے جانچ کے لئے بغداد بھیجا گیا۔ 38 لاشوں کے ڈی این اے میچ ہو گئے جبکہ بہار کے ایک مزدور کا ڈی این اے 70 فیصد مل سکا تھا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker