ہندوستان

اجودھیا معاملہ تعددازدواج سے زیادہ اہم

ملکیت تنازعہ کی سماعت کثیر رکنی بینچ کے سپردکی جائے : مولانا ارشدمدنی
نئی دہلی 6؍ اپریل[یو این آئی]اجودھیا کی متنازعہ اراضی مقدمہ کی سماعت آج شروع ہوتے ہی جمعیۃ علماء ہند کے وکیل راجیو دھون نے کہا کہ انصاف کا تقاضہ ہے کہ بابری مسجد ملکیت تنازعہ کی سماعت کثیر رکنی بینچ کے سپرد کی جائے جو کثرت ازدواج اور نکاح حلالہ معاملےسے زیادہ اہم اور حساس معاملہ ہے اور ضخیم ریکارڈ بھی اس بات کی اجازت نہیں دیتے کہ اس معاملے کی سماعت تین رکنی بینچ کے روبرو ہو ۔واضح رہے کہ گذشتہ دنوں ہی چیف جسٹس آف انڈیا نے کثرت ازدواج اور نکاح حلالہ معاملے کو آئنی بینچ کے حوالے کیا تھا ۔ڈاکٹر دھون کی درخواست پر سہ رکنی بینچ نے کسی بھی طرح کی رائے نہ دیتے ہوئے انہیں حکم دیا کہ وہ اپنی نا مکمل بحث کو مکمل کریں ۔اس معاملے پر عدالت سینئر ایڈوکیٹ راجو رام چندرن کی بحث کی سماعت کے بعد ہی کوئی فیصلہ صادر کریگی۔ ڈاکٹر راجیو دھون نے سپریم کورٹ کی جانب سے دیئے گئے اسماعیل فاروقی فیصلہ میں کی گئی غلطیوں کو عدالت کے سامنے تفصیل سے اجاگر کیا جس کا سہارا لیکر الہ آباد ہائی کورٹ نے اپنے فیصلہ میں کہا تھا کہ نماز کہیں بھی ادا کی جاسکتی ہے جو درست نہیں ہے ۔ آج بھی ڈاکٹر راجیو دھون کی بحث نا مکمل رہی جس کے بعد عدالت عظمیٰ نے اپنی سماعت 27؍ اپریل تک کے لئے ملتوی کردی ہے ۔دوسری طرف یہاں جاری ایک ر یلیزمیں جمعیۃعلماء ہند کے صدرمولانا سید ارشد مدنی نے آج کی قانونی پیش رفت پر اظہار اطمینان کرتے ہوئے کہا کہ اجودھیا میں حق ملکیت کا معاملہ انتہائی حساس اور اہم ہے اس لئے اس معاملہ کو وسیع تر بینچ کے حوالے کرنے کا استدلال بالکل جائز اور درست ہے۔ مولانا مدنی نے کہا کہ مسجد کا معاملہ کثرت ازدواج کے معاملہ سے زیادہ اہم ہے اس لئے کہ اسلام میں کثرت ازدواج کے سلسلہ میں کوئی حکم نہیں ہے ۔ البتہ اس بات کی انتہائی مشروط اجازت ہے کہ اگر کوئی شخص اشدضرورت محسوس کرے تو ایک سے زائد شادی کرسکتا ہے ۔مولانا مدنی نے وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ جہاں تک مسجد کا تعلق ہے اس سلسلہ میں واضح احکامات موجود ہیں ۔ اس لئے ہمیں پورایقین ہے کہ عدالت کا فیصلہ مثبت ہوگا اور اس معاملہ کی سماعت کثیر رکنی بینچ کے سپردکی جائے گی ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker