ہندوستان

مرکزعلم ودانش علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی اہم خبریں

اے ایم یوکے شعبۂ جغرافیہ کی جانب سے 14؍روزہ صلاحیت فروغ پروگرام کا انعقاد
علی گڑھ: 21؍اپریل
بصیرت نیوزسروس
علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) کے شعبۂ جغرافیہ کی جانب سے 14؍روزہ ’صلاحیت فروغ پروگرام‘ منعقد کیا گیا جس کی اختتامی تقریب کے مہمان خصوصی انسٹی ٹیوٹ آف پبلک انٹرپرائز، حیدرآباد کے ڈائرکٹر پروفیسر رام کمار مشرا تھے جب کہ پروگرام کے سرپرست کی حیثیت سے اے ایم یو پرو وائس چانسلر پروفیسر تبسم شہاب شریک ہوئے۔
مہمان خصوصی پروفیسر آر کے مشرا نے معیاری ریسرچ کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ کوئی بھی استاد ریسرچ کے رجحان اور معیاری اشاعتوں کے بغیر تقریباً مردہ ہوتا ہے۔ ریسرچ سے ہی نصابی کتابوں کی تجدید ہوتی ہے اور طلبہ و اساتذہ کو نئی معلومات حاصل ہوتی ہیں۔ پروفیسر مشرا نے کہاکہ یہ افسوس کی بات ہے کہ ہندوستان میں پالیسی پہلے تیار ہوتی ہے اور ریسرچ اس کے بعد ہوتی ہے، اس کے برعکس ترقی یافتہ ممالک میں ریسرچ پہلے ہوتی ہے اور اس کی بنیاد پر پالیسی تیار ہوتی ہے۔ انھوں نے شعبۂ جغرافیہ کے 14؍روزہ تربیتی پروگرام کو سراہتے ہوئے اعلان کیا کہ انسٹی ٹیوٹ آف پبلک انٹرپرائز ، اے ایم یو کے شعبۂ جغرافیہ کے ساتھ اشتراک کا خواہشمند ہے ۔
پرو وائس چانسلر پروفیسر تبسم شہاب نے ہرشعبہ میں معیاری ریسرچ کی ضرورت پر زور دیا۔ انھوں نے کہاکہ اے ایم یو نے معیاری کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے جس کی وجہ سے وہ ہندوستان کی 10؍ممتاز یونیورسٹیز میں شامل ہے ۔
فیکلٹی آف سائنس کے ڈین پروفیسر محمد شاکر نے کہاکہ نوجوان اساتذہ کے تدریسی کیریئر کی ترقی میں صلاحیت فروغ پروگراموں کا بنیادی رول ہوتا ہے۔ انھیں اس سے نئے نظریات و تصورات، ریسرچ کی تکنیک اور تحقیق کے نئے میدانوں کا علم ہوتا ہے۔
اس سے قبل صلاحیت فروغ پروگرام کے ڈائرکٹر پروفیسر نظام الدین خاں نے پروگرام کی رپورٹ پیش کی۔انھوں نے بتایا کہ جغرافیہ، اقتصادیات، تعلیم، خواتین مطالعات، مینجمنٹ، زرعی اقتصادیات، نفسیات، سیاسیات، لسانیات اور شماریات سے تعلق رکھنے والے ریسورس پرسن اور شرکاء پروگرام کا حصہ بنے۔ بہار، جھارکھنڈ، اڑیسہ، مغربی بنگال، کیرالہ، تمل ناڈو، گجرات، ہریانہ، تلنگانہ، راجستھان اور اترپردیش سے 30؍افراد صلاحیت فروغ پروگرام میں شریک ہوئے۔ شعبۂ جغرافیہ کے پروفیسر عتیق احمد نے مہمانوں کا خیرمقدم کیا۔
پروفیسر ایس نوشاد نے مہمانوں اور حاضرین کا شکریہ ادا کیا۔ نظامت کے فرائض ڈاکٹر ممتاز احمد نے انجام دئے۔
٭٭٭٭٭٭
اے ایم یو وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور کے بدست شعبۂ طبیعیات کے سینئر پروفیسر کی کتاب کا اجراء
علی گڑھ، 21؍اپریل: علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) کے شعبۂ طبیعیات کے پروفیسر ایمیریٹس آر پرساد (ریٹائرڈ) اور سینئر پروفیسر بی پی سنگھ کی کتاب ’’فنڈامنٹلس اینڈ اپلیکیشنس آف ہیوی ایون کولیزنس‘‘ کا اجراء وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور نے کیا۔ یہ کتاب کیمبرج یونیورسٹی پریس نے شائع کی ہے۔
پروفیسر پرساد شعبۂ طبیعیات کے ریٹائرڈ پروفیسر ایمیریٹس ہیں۔ انھیں چالیس سال کا تدریسی تجربہ ہے۔ تجرباتی نیوکلیئر فزکس ان کے اختصاص کا شعبہ ہے۔ ان کی ایک کتاب ’’کلاسیکل اینڈ کوانٹم تھرمل فزکس‘‘ کیمبرج یونیورسٹی پریس نے شائع کی ہے۔ وہ شعبۂ طبیعیات کے چیئرمین اور فیکلٹی آف سائنس کے ڈین رہ چکے ہیں۔
کتاب کے دوسرے مصنف پروفیسر بی پی سنگھ شعبۂ طبیعیات کے سینئر پروفیسرہیں۔ وہ انٹر یونیورسٹی ایکسیلریٹر سنٹر، نئی دہلی کی ایکسیلریٹر یوزرس کمیٹی کے بھی چیئرمین ہیں۔
کتاب کی اجراء کے موقع پر شعبۂ طبیعیات کے صدر پروفیسر توحید احمد، پروفیسر آر جے سنگھ، پروفیسر یوگیندر کمار، پروفیسر ایم افضل انصاری، پروفیسر محمد سجاد اطہر، پروفیسر ایثار احمد رضوی، پروفیسر شبیر احمد، پروفیسر شکیل احمد، ڈاکٹر عباس علی، ڈاکٹر فیاض الرحمان، ڈاکٹر طفیل احمد، مسٹر محمد شعیب اور مسٹر اشفاق مجید بھی موجود تھے۔
٭٭٭٭٭٭
’ علیگس اکیڈمک اِنرچمنٹ پروگرام‘ کے تحت ورکشاپ 5-6؍مئی کو
علی گڑھ، 21؍اپریل:علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) کے’ علیگس اکیڈمک اِنرچمنٹ پروگرام‘ کے زیر اہتمام ’سماجی و انسانی علوم‘ کی ایک ورکشاپ فیکلٹی آف سوشل سائنسز کے کانفرنس ہال میں 5-6؍مئی 2018کو منعقد کی جارہی ہے جس میں ایریزونا اسٹیٹ یونیورسٹی ، امریکہ کی ڈاکٹر یاسمین سیکیا اور ڈاکٹر چاڈ ہینس تحقیق اور اشاعت کے موضوع پر خطاب کریں گے۔
’ علیگس اکیڈمک اِنرچمنٹ پروگرام‘ کے کوآرڈنیٹر ڈاکٹر ایس ضیاء الرحمان نے کہا کہ شرکاء کو اس ورکشاپ سے ریسرچ کے سوالات تیار کرنے اور تحقیقی تجزیہ میں انٹرڈسپلنری اپروچ اپنانے میں مدد ملے گی۔
کنوینر ڈاکٹر سید تحسین رضا نے بتایا کہ ورکشاپ میں شرکت کے خواہشمند اساتذہ اور ریسرچ اسکالرس 500؍الفاظ میں اپنے تحقیقی میدان اور تعلیمی اہلیت کی معلومات کے ساتھ ای میل آئی ڈی tahseen979@rediffmail.com پر رجسٹریشن کراسکتے ہیں۔
٭٭٭٭٭٭
اے ایم یو کے مرکز برائے تعلیمِ بالغان کے زیرِ اہتمام دیہات جروٹھی میں تربیتی پروگرام کا انعقاد
علی گڑھ، 21؍اپریل:’’ انّت بھارت ابھیان‘‘ کے تحت وزیرِ اعظم مسٹر نریندر مودی کے ’’ ڈجیٹل انڈیاپروگرام‘‘ کو زمینی سطح پر اتارنے کے مقصد سے علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) کے گود لئے گئے دیہات جروٹھی( بلاک جواں) میں ایک پروگرام کا انعقاد اے ایم یو کے مرکز برائے تعلیمِ بالغان کے زیرِ اہتمام عمل میں آیا جس میں حکومت کی جانب سے چلائے جارہے مختلف منصوبوں کو دیہی عوام تک پہنچانے کے لئے تربیت دی گئی۔ واضح ہوکہ اے ایم یو نے بلاک جواں کے پانچ دیہاتوں جروٹھی، بھیم گڑھی، سمیرا دریا پور، فرید پور، مرزا پور کو گود لیا تھا جس کے تحت ان دیہاتوں میں تربیتی پروگرام منعقد کئے جارہے ہیں۔
مرکز برائے تعلیمِ بالغان کے ڈائرکٹر پروفیسر محمد گلریز نے اس تربیتی پروگرام کا افتتاح کرتے ہوئے کہا کہ گاؤں کی ترقی کے لئے ضروری ہے کہ یہاں کی عوام سرکاری منصوبوں میں حصہ داری نبھائے ۔ انہوں نے کہا کہ اے ایم یو کے گود لئے گئے دیہاتوں میں بیداری پیدا کرنے کی غرض سے تربیتی پروگرام منعقد کئے جا رہے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ مرکز برائے تعلیمِ بالغان کے زیرِ اہتمام اس پروگرام کے انعقاد کا مقصد دیہی عوام کو ڈجیٹل انڈیا پروجیکٹ کے ساتھ کیش ٹرانزکشن، پی ایم جی دشا، آدھار کارڈ وغیرہ منصوبوں سے مستفیض ہونے کی ترغیب دلانا ہے۔
پروگرام کے مہمانِ خصوصی علی گڑھ کے چیف ڈیولپمنٹ آفیسر مسٹر دنیش چندر نے کہا کہ فی الوقت حکومتِ ہند کی جانب سے اُجّولا، اجالا، جیونت جیوتی۔ اندر دھنوش، آیوشمان وغیرہ منصوبے چلائے جا رہے ہیں جن سے دیہی عوام کو مستفیض ہونا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ عوام میں بیداری لانے کی غرض سے کی جارہی اے ایم یو کی کوششیں قومی تعمیر میں قابلِ ذکر تعاون پیش کر رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انّت بھارت کی تعمیر میں ہر فرد کھاتا کھول کر اپنا تعاون پیش کرے۔
سی ایچ سی کے ضلع مینیجر مسٹر پرویزعلی نے کہا کہ ملک برق رفتاری کے ساتھ ای۔ گورننس کی جانب بڑھ رہا ہے اور اس کو کامیاب بنانے کے لئے ڈجیٹل انڈیا پروگرام کو کامیاب بنانا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ دیہاتوں میں ’’وائی فائی چوپال‘‘ کے ذریعہ انٹر نیٹ پہنچایا جا رہا ہے۔
اس موقع پر وشنو کلانت اور دیوانشو نے عوام کو مختلف سرکاری منصوبوںکے ڈجیٹل انڈیا پروجیکٹ سے لنک کرنے وغیرہ کی معلومات مہیا کرائیں اور ان کو منصوبوں سے وابستگی کی ترغیب دی۔
مرکز برائے تعلیمِ بالغان کے کو آرڈینیٹر ڈاکٹر شمیم اختر نے کہا کہ اے ایم یو کی کوشش ہے کہ وہ اپنے ریسرچ پروجیکٹوں کا فائدہ عوام تک پہنچائے۔ اور اے ایم یو کے کئی شعبے جن میں سوشل ورک شعبہ بھی شامل ہے گود لئے گئے دیہاتوں میں جاکر انہیں کھاتے کھولنے، انٹر نیٹ کی معلومات دینے، مختلف کارڈ بنوانے وغیریہ میں مدد دے رہے ہیں۔ سوشل ورک شعبہ کی ڈاکٹر عندلیب سیٹھ نے کہا کہ شعبہ تسلسل کے ساتھ پانچوں دیہاتوں میں طلبہ و طالبات کے توسط سے بیداری پیدا کرنے اور انہیں ہر ممکن مدد مہیا کرانے کی کوشش کر رہا ہے۔ مرکز تعلیمِ بالغان کی ڈپٹی ڈائرکٹر ڈاکٹر منیرہ رشید نے حاضرین کا شکریہ کیا۔
٭٭٭٭٭٭
اے ایم یو کے مرکز برائے تعلیمِ بالغان کے زیرِ اہتمام دیہات جروٹھی میں تربیتی پروگرام کا انعقاد
علی گڑھ، 21؍اپریل:علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) کی اکیڈمک پروگرامس کمیٹی کے زیرِ اہتمام منعقدہ یو ایس۔ انڈیا ایجوکیشن فاؤنڈیشن( فل برائٹ کمیشن) آؤٹ ریچ پروگرام میں فاؤنڈیشن کی ہندوستانی پروگرام کو آرڈینیٹر ڈاکٹر انو مولو جیا بھارتی نے انجینئرنگ کالج آڈیٹوریم میں منعقدہ ایک پروگرام میں مختلف فل برائٹ اسکالر شپ اور فنڈنگ مواقع سے روشناس کرایا۔
ڈاکٹر بھارتی نے کہا کہ یہ مسرت کی بات ہے کہ اے ایم یو کے طلبہ ایف ایل ٹی اے پروگراموں میں سرگرمی کے ساتھ اپنی حصہ داری انجام دے رہے ہیں۔ انہوں نے طلبہ سے دیگر پروگراموں میں بھی سرگرم حصہ داری کی اپیل کی۔
اس موقع پر انجینئرنگ کالج کے پرنسپل پروفیسر ایم ایم سفیان بیگ، شعبۂ جغرافیہ کے پروفیسر شہاب فضل، شعبۂ قانون کے پروفیسر ظفر محفوظ نعمانی، بایو ٹیکنالوجی شعبہ کے پروفیسر رضوان خاں اور شعبۂ کیمیا کے سربراہ پروفیسر ایم منیر وغیرہ بھی موجود تھے۔
اکیڈمک پروگرام کمیٹی کے ڈائرکٹر پروفیسر وسیم احمد نے انٹریکٹو سیشن کو کو آرڈینیٹ کیا۔ پروگرام میں مختلف فیکلٹیوں کے اساتذہ، ریسرچ اسکالرس اور پوسٹ ڈوکٹورل فیلو نے حصہ لیا۔

Tags

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker