ہندوستان

اقتدار میں آنے پر کسانوں کا قرض معاف کردینگے

کرناٹک کے ووٹروں سے بی جے پی کا وعدہ
بنگلور ۴؍ مئی(یو این آئی) بھارتیہ جنتا پارٹی نے 12 مئی کو هونے والے کرناٹک اسمبلی انتخاب کے بعد اقتدار میں واپسی کا عزم کا اظہار کرتے ہوئے آج یقین دہانی کرائی کہ اقتدار سنبھالنے کے دوسرے دن سے ہی قومی بینک اور کوآپریٹو سیکٹر کے بینکوں سے لئے گئے كسانوں کا قرض معاف کردیا جائے گا۔بھارتیہ جنتا پارٹی کے وزیر اعلی عہدے کے امیدوار بی ایس يدی يورپا نے یہاں پارٹی کا انتخابی منشور جاری کرنے کے بعد کہا کہ حکومت کے قیام کے فیصلے کے بعد کابینہ کی پہلی میٹنگ میں قومی بینکوں اور کوآپریٹو مالیاتی اداروں سے لئے گئے کسانوں کے ایک لاکھ روپے تک کے قرض معاف کر دیئے جائیں گے۔ انتخابی منشور کے اهم نکتوں کوبتاتے ہوئے مسٹر يدی يورپا نے کہا کہ ‘نیگي لايوگي ہوجنا’ خشک زمین والے چھوٹے اور درمیانے كسانوں كا 10 ہزار روپے سے 20 لاکھ روپے کی براہ راست آمدنی امداد سہولت مہیا کرائے گی۔انہوں نے کہا کہ 100 دنوں کے دوران، بی جے پی کانگریس حکومت کے پانچ سالہ دور کے دوران حصولیابیوں پر مرکوز قرطاس ابیض لائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی کانگریس حکومت کی جانب سے قائم ہونے والے انسداد بدعنوانی بیورو ختم کرنے کے اقدامات کرے گی ۔ اس کے علاوہ، وہ موجودہ لوک آیکت کو مضبوط کرے گی ۔ انہوں نے کہا کہ ڈگری کالج کی سطح تک تمام طلباء کو مفت تعلیم فراہم کی جائے گی۔ اس کے علاوہ، کرناٹک میں آل انڈیا میڈیکل سائنسز کو کھولے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی کو ‘سوجلاں سفلاں کرناٹک کے تحت 2023 تک جاری آبپاشی منصوبوں کو مکمل کرنے کے لئے 15 لاکھ کروڑ روپے خرچ کرے گی ۔ اس کے علاوہ، ریاست میں تمام تالابوں اور جھیلوں کی بحالی کے لئے ‘مشن کلیانی شروع کی جائے گی۔مسٹر يدی یورپا نے یقین دہانی کرائی کہ بی جے پی حکومت تین مرحلوں میں میں 10 گھنٹے بغیر کسی رکاوٹ کے بجلی سپلائی یقینی بنائے گی جس سے آب پاشی کیلئے پمپسیٹ چلتے رہیں گے۔ انهوں نے یہ بھی کہا کہ 100 كروڑ روپے ‘ریتھا بندھو اسکالرشپ’ کے لئے مختص ہوں گے جس ریاست کے كسانوں کے بچے زرعی اور ملحق نصاب میں شامل ہو سکیں۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی کو کرناٹک انسداد گئو اور تحفظ بل 2012 کو دوبارہ لائے گی ۔ اس کے علاوہ، بی جے پی گاؤ سیوا آیوگ بحال کرے گی۔انهوں نے کہا کہ زیادہ چھوٹی اكايوں کے لئے 1000 مربع فٹ والی سلک کی اكائيوں کی سبسڈی 75،000 روپے سے بڑھاكر تین لاکھ روپے تک کی جائے گی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker