ہندوستان

کسانوں کا استحصال کر رہی ہے مودی حکومت: کانگریس

نئی دہلی، 5 جون (یو این آئی) کانگریس نے گزشتہ پانچ دنوں سے جاری کسانوں کی ہڑتال کے ساتھ آج اپنی یکجہتی ظاہر کرتے ہوئے مودی حکومت پر کسانوں کا استحصال کرنے کا الزام عائد کیا اور کہا کہ انہیں نہ قرض دیا جا رہا ہے اور نہ فصل کی مناسب قیمت دی جا رہی ہے اس لئے زراعت پیشہ طبقہ تحریک کرنے پر مجبور ہوا ہے۔ کانگریس جنرل سکریٹری موہن پرکاش نے یہاں صحافیوں سے کہا کہ گزشتہ چار سال کے دوران مودی حکومت میں کسانوں کے ساتھ صرف ناانصافی ہی ہوئی ہے۔ ان کا استحصال کیا گیا اور مجبور ہوکر اب وہ سڑکوں پر اتر آئے ہیں اور پانچ دن سے پورے ملک میں ہڑتال کر رہے ہیں۔ کسان اپنی محنت کی پیداوار کو سڑک پر پھینک رہا ہے۔ اس کے غصے اور پریشانی کا اسی سے اندازہ لگایا جا سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی اپنے دوست سرمایہ داروں کو فائدہ پہنچانے کے لئے انڈونیشیا میں پتنگ اڑارہے ہیں۔ اپنے چہیتے صنعت کاروں کا قرض معاف کرتے ہیں اور بینکوں کے لئے امدادی پیکیج کا اعلان کرتے ہیں لیکن کسانوں کو کسی بھی طرح کی مدد دینے سے انکار کر دیتے ہیں ۔ مودی حکومت کے وزیر کسانوں کی تحریک کو سنجیدگی سے لینے کی بجائے کسانوں کو بدنام کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔
مسٹر پرکاش نے کہا کہ کانگریس کسانوں کے سکھ دکھ میں ان کے ساتھ کھڑی ہے۔ مدھیہ پردیش کے مندسور میں ایک سال پہلے چھ کسانوں کو گولی مار کر قتل کیا گیا تھا۔ کانگریس صدر راہل گاندھی اس سنگین جرم کی پہلی برسی پر متاثرہ کسانوں کے ساتھ یکجہتی ظاہر کرنے کے لئے مندسور میں جائیں گے۔ گزشتہ سال اس واقعہ پر تعزیت کا اظہار کرنے کے لئے جب مسٹر راہل گاندھی مندسور جا رہے تھے تو انہیں راجستھان کی سرحد پر ہی روک دیا گیا تھا لیکن اس بار وہ وہاں جا رہے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker