مضامین ومقالات

راج ٹھاکرے:بھلا کوئی آپ کو کیوں ووٹ دے؟ 

شکیل رشید
ایک محاورہ ہے ’غریب کی جورو سب کی بھابی‘
اس محاورے میں ’سب‘ کا مطلب سیاسی پارٹیاں اور ’غریب کی جورو‘ کامطلب ’بے بس او ربے کس افراد‘ او ر’بھابھی‘ کا مطلب ’بے کس اور بے بس افراد پر جوروجبر ہے۔ہندوستان کی سیاسی پارٹیوں ، لیڈران اورکارکنان پر یہ محاورہ اس لیے صادق آتا ہے کہ ان کی دال ’طاقتوروں ‘ کے آگے نہیں گلتی۔ تازہ مثال راج ٹھاکرے او ران کی پارٹی ’مہاراشٹر نونرمان سینا‘ (منسے) کی لے لیں۔ یہ اب ملٹی پلیکسوں میں گھس کر اس عملے کے ساتھ مارپیٹ کرنے پر آمادہ ہیں جوپانچ سو ہزا ر روپئے کا ٹکٹ لے کر فلم دیکھنے کےلیے آئے لوگوں کو کھانے پینے کی اشیاء فروخت کرتے ہیں۔ پونے اور ممبئی میں یہ ہوا ہے۔ ’منسے‘ کے ایک سابق کارپوریٹر کشور شندے اپنے گرگوں کے ساتھ پی وی آر ملٹی پیلیکس میں گھسے اور عملے کو گالیاں دے کر مارنے پیٹنے لگے۔ ان کا کہنا تھا کہ اشیا کی قیمتیں پیکٹوں پر درج قیمتوں سے زیادہ کیوں لی جارہی ہیں؟ یہ کہہ رہے تھے کہ کیا سنا نہیں کہ ممبئی ہائی کورٹ نے بھی یہ سوال پوچھا ہے کہ ملٹی پیلیکسوں میں اشیائے خوردونوش کی قیمتیں زیادہ کیوں ہیں؟
ٹھیک ہے بڑھتی ہوئی قیمتوں کے خلاف تحریک چلنی چاہئے لیکن قیمتیں وہ افراد تو نہیں بڑھا رہے ہیں جنہیں پیٹا جارہا ہے! قیمتیںبڑھانے والے تو دہلی میں بیٹھے ہیں یا پھر وہ منترالیہ میں نظر آتےہیں ۔راج ٹھاکرے اپنی فوج کولےکر کیوں وہاں نہیںگھس جاتے اورکیوں ان کے گریبان نہیںپکڑتے؟ اس لیئے کہ یہ آسان نہیںہے۔ ایسا کرنے پر جیل کی ہوا کھاناپڑسکتاہے اور ’سیاسی فائدے‘کےلیے ’منسے ‘والے بھلاکہا ں جیل کی ہوا کھانے کو تیار ہونگے وہ تو بس غریبوں کو پکڑ یں گے اور انہیں دھنیںگے! راج ٹھاکرےپہلے بھی یہ کرچکے ہیں۔ اپنوں نے ہاکروں پر بھی حملے کرائے تھے یہ اور بات ہے کہ ہاکروں نے الٹا’منسے‘ والوں کوہی دوڑا دیا تھا۔ انہوںنے شمالی ہندوستان سے آنے والے مزدوروں، ٹیکسی ڈرائیوروں اور ریلوے بورڈ کے امتحانات میں شریک ہونے کے لیے آئے طالب علموں پر جورو وجبر دکھایا تھا۔
راج ٹھاکرے جی مارپیٹ کسی بھی مسئلے کا حل نہیں ہے۔ مسائل اور معاملات سنجیدگی سے حل پر غور کرنے سے سلجھ سکتے ہیں۔ تحریک چلانی ہے تو حکومت کے خلاف چلائیں، ملٹی پیلیکسوں کے مالکان کے خلاف چلائیں، صنعت کاروں کے خلاف چلائیں، غریبوں کے خلاف نہیں۔ چلتے چلتے ایک سوال کرلیں: اگر اتفاق سے (حالانکہ ایسا ہوگا نہیں) راج ٹھاکرے جی آپ کی حکومت بن گئی تو کیا کریں گے؟ کیا اسی طرح غریبوں کو ’غریب کی بھابھی‘ سمجھ کر مارتے پیٹتے رہیں گے؟ بھلا کوئی آپ کو کیوں ووٹ دے؟
(بصیرت فیچرس)

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker