جہان بصیرتخبردرخبر

یرغمال ہندوستان میں مسلم قیادت کا ٹمٹماتا چراغ

خبر در خبر
غلام مصطفی عدیل قاسمی
ایسوسی ایٹ ایڈیٹر بصیرت آن لائن

آج ایک بار پھر مدرسے سے لوٹتے وقت مجلس اتحاد المسلمین کی قیادت پر ناز و فخر ہوا جب مجلس اتحاد المسلمین کے ممبر اسمبلی جناب احمد پاشا قادری کو سکندرآباد ریلوے اسٹیشن پر پولیس اہلکاروں کے سامنے پرزور احتجاج درج کراتے دیکھا، محترم احمد پاشا نہایت فعال اور سرگرم ممبر اسمبلی ہیں، آج پھر خبر پاتے ہی اپنی ساری مشغولیت کو چھوڑ کر مدرسے کے غریب بچوں کے لئے تڑپ گئے اور بذات خود پولیس اسٹیشن پہنچ کر ان بچوں کو پولیس کے چنگل سے آزاد کروایا، اطلاع کے مطابق بہار سے آنے والے دینی مدارس کے طلباء کو مع ان کے اساتذہ شک کی بنیاد پر گرفتار کر لیا، تحقیق کرنے پر معلوم ہوا کہ یہ بچے حصول علم کے لیے بہار سے تلنگانہ کے ضلع نظام آباد جا رہے تھے، سکندرآباد ریلوے اسٹیشن پر پہنچتے ہی سکندرآباد کی پولیس نے انہیں اپنی حراست میں لے لیا بچوں سے پوچھنے پر پتا چلا کہ پولیس والوں نے ان معصوم بچوں کو دن بھر بھوکا پیاسا رکھا، اس بات کی خبر مجلسی قیادت کو ملتے ہی ایم آئی ایم کے قائدین حرکت میں آ گئے، اور جلد ہی جناب احمد پاشا قادری پولیس اسٹیشن پہنچ کر پولیس کے اعلی افسران سے بات کر کے انہیں کھری کھری سنائی، بعدہ ایم آئی ایم کے ورکرز نے ملی درد کو سمجھتے ہوئے جلد ہی ان غریب طلباء کے لیے کھانے کا بند و بست کیا،
آمدم بر سر مطلب: میں اپنے ساتھیوں سے ہمیشہ کہتا ہوں کہ جب تک ہم خود اپنے سیاسی اثر و رسوخ کو مضبوط نہیں بنائیں گے ہم ستر سالوں کی طرح اب بھی پستے رہیں گے، ہمارے لیے انصاف کی لڑائی یہاں کوئی لڑنے والا نہیں، ہمارے درد کو کوئی سمجھنے والا نہیں، یہاں صرف جذبات سے کھیلا جاتا ہے یہاں مسلمانوں کے لیے انصاف کی گہار لگانا کوئی پسند نہیں کرتا، اب بھی ہمیں سمجھنا چاہیے کہ غیروں کے ٹکڑے پر پلنے اور ان کے بھیک کی امیدیں لگانا سراسر بیوقوفی اور آنے والی نسل کے لئے جان لیوا ہے اور موجودہ نسل کی حق تلفی ہے، ہمیں یہ بھی سمجھنا ہوگا کہ ملک میں اپنا اثر و رسوخ بنانے کے لیے ہمارے پاس صرف ایک ہی آپشن ہے اور وہ ہے ووٹ کی طاقت، اور جمہوری ملک میں ایک ووٹ کی کیا کچھ اہمیت ہے اس کا اندازہ الیکشن کے وقت بخوبی لگایا جا سکتا ہے، تو ہمیں یہ بات پلو باندھ لینی چاہیے کہ مسلمانوں کے درد کو صرف ایک مسلمان قیادت ہی سمجھ سکتی ہے ورنہ ہمارے پاس ستر سالہ تجربہ ہے کہ نام نہاد سیکولرازم کی دعویدار پارٹیز ہمیں کن کن دشوار گزار گھاٹیوں سے گزارا ہے، تو آیئے اور مسلک سے اوپر اٹھ کر جلتے ہندوستان میں مجلس اتحاد المسلمین کے کاندھے سے کاندھا ملا کر مسلم قیادت کی شمع کو خوب سے خوب تر روشن کریں۔
(بصیرت فیچرس)

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker