اسلامیاتحج وقربانی

اسلام کا ایک اہم ترین رکن حج بھی ہے!

کل مولانامحمد موسی نعمانی مفتاحی سوئے حرم روانہ ہوں گے

مفتی وصی احمد قاسمی

حج کے معنی عربی لغت میں قصدوارادہ کے آتے ہیں ۔اور شریعت کی مخصوص زبان میں حج کے معنی مخصوص جگہ یعنی بیت اللہ ،عرفہ کا مخصوص وقت یعنی حج کے مہینوں میں مخصوص اعمال یعنی وقوف عرفہ ،طواف ،اور سعی وغیرہ کو مخصوص شرائط کے ساتھ ادا کرنے کا قصد وارادہ کر نے کے آتے ہیں ۔

حج زندگی میں ایک مرتبہ ہراس مسلمان پر فرض ہے جس میں حج فرض ہو نے کی شرائط پائی جائیں ۔

حج کی فرضیت قرآن وسنت سے ثابت ہے ،یہی وجہ ہے کہ فرضیت حج کاانکارکرنے والا دائرہِ اسلام سے خارج وباہرہوجاتاہے۔قرآن کریم سورہ ال عمران میں اللہ ﷻکاارشادگرامی ہے کہ :اور اللہ تعالی (کی رضا )کے واسطے بیت االلہ کا حج کرنا فرض ہے ان لوگوں پر جو اس تک جانے کی استطاعت رکھتے ہوں اور جو شخص انکارکرے تو (اللہ تعالی کااس میں کیانقصان ہےاللہ تعالیٰ تو تمام )جہانوں سے بے نیاز ہے ۔

حضرت ابن عمر ؓ کا ارشاد عالی ہے کہ رسول اللہ ﷺنے فرمایا :اسلام کی بنیاد پانچ ستونوں پر قائم کی گئی ہے ایک اس حقیقت کی شہادت دینا کہ اللہ تعالی کے سوا کوئی عبادت کے لائق نہیں اور محمد مصطفیٰ ﷺاللہ کے رسول ہیں ،دوسرے نماز قائم کرنا ،تیسرے زکوٰۃ ادا کرنا ،چوتھے حج کرنا ،پانچویں رمضان کے روزے رکھنا ۔آیت وحدیث سے معلوم ہوا کہ حج اسلام کا اہم ترین رکن ،ستون ہے جن پر اسلام کی عمارت قائم ہے۔

حج فرض ہو نے کے بعد اگر کوئی معقول عذر درپیش نہ ہوتوجلدازجلداس فریضہ سے سبکدوش ہو کر حج کے فضائل وفوائدسے دامن آلودہ کا مستفیض ہو لینا بہتر ہے ۔قرآن وحدیث میں حج کے بےشمار فضائل وفوائدبیان کئے گئے ہیں ۔

حضرت معاذبن جبل ؓسے روایت ہے کہ :رسول اللہ ﷺنے ارشاد فرمایا کہ جس نے رمضان المبارک کے روزے رکھے اور نمازیں پڑھیں اور بیت اللہ کا حج کیا تو اللہ ﷻپریہ حق ہے کہ اس کی مغفرت فرمادیں ۔

حضرت ابوالدرداءؓسے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے ارشاد فرمایا کہ پانچ چیزیں ایسی ہیں کہ جو انہیں ایمان کے ساتھ بجالائے گا تو وہ جنت میں داخل ہوگا ،ان پانچ چیزوں میں سے ایک بیت اللہ کا حج کر نابھی ہے ۔

حضرت ابوہریرہ ؓ فرماتے ہیں کہ میں نے رسول اللہ ﷺ کو فرماتے ہوئے سنا کہ جس شخص نے اللہ کے لئے حج کیا اور (اس میں ) نہ تو شہوت والی بات کی اور نہ گناہ کیا تو وہ حج کے بعد گناہوں سے اس طرح پاک وصاف ہوکرلوٹے گاجس طرح وہ اپنی ماں سے پیدا ہونے کے دن گناہوں سے پاک وصاف تھا ۔

مختصر یہ کہ ہمارا گاؤں چھوراہی ضلع مدہوبنی بہار کبھی بھی وارثین انبیاء سے نہ خالی رہا ہے اور نہ ان شاءاللہ مستقبل میں رہے گا ۔اس سرزمین نے جہاں بہت سارے جیدعلماء ماہرین حفاظ اور اہل دانش پیدا کئے وہیں ایک نہایت دیندار وایمانداراور متوسط گھرانے میں اخلاص ووفاء کے پیکر ؛حلم وبردباری کے مجسم نیک خو کریم النفس بیحد متواضع اخلاق کریمانہ کے حامل مستند عالم دین معتبر خطیب انتہائی رمزشناس ادیب اور باوقار مدرس ، اتحاد امت کے علمبردار ،بڑے مولانا حبیب الرحمن صاحب اعظمی ؒکے شاگرد رشید ،عزیزمحترم مولانا اطہر نقاد صاحب مفتاحی صاحب ومفتی انس عباد قاسمی سلمہ اللہ کے والد بزرگوار حضرت مولانا محمد موسی نعمانی مفتاحی نے جنم لیا مولانا موصوف کے چارصاحبزادے عالم دین ہیں جو الحمدللہ اپنی زیست کے ۶۵سال مکمل کرنے کے بعد کل 24جولائی 2018بروز منگل بعد نماز فجر وقت 8بجے صبح حج بیت اللہ کے لیے اپنے وارثین ،متوسلین ،متعلقین اور محبین کے بیچ سے حرمین شریفین کی زیارت کے شوق میں عبدیت کا اظہار کرتے ہوئے پرنم آنکھوں سے روانہ ہوں گے ۔اللہ پاک ان کے سفرکوآسان ومقبول بنائے ۔

لہٰذا آپ حضرات سے گزارش ہے کہ وقت سے قبل تشریف لاکر حضرت مولانا موسیٰ نعمانی صاحب چھوراہی کو نیک دعاؤں اور درخواستوں کےساتھ رخصت فرمائیں خصوصا مولانا محترم کی صحت وتندرستی کے لئے دعا فرمادیں کہ بسلامت تمام ارکان حج اداکرلیں اللہ تعالی تمام ایمان والوں کو اپنے گھر کی زیارت کی توفیق عطاکرے. آمین

(بصیرت فیچرس)

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker