جہان بصیرتنوائے خلق

جوازہم جنس پرستی اور ہمارا رد عمل!!!

مکرمی!
اس وقت ملک کی فضاء مکدر بنی ہوئی ہے۔ظلم و ستم اور قتل و غارت کا بازار گرم ہے۔کسی وقت کسی جگہ بھی فرقہ وارانہ فساد، تصادم اور قتل عام خون ریزی ہوسکتی ہے۔اس کا سب سے بڑا سبب ملک کے مختلف فرقہ وارانہ شدت پسند بھگوا تنظیموں کے قائدین اور اشتعال انگیزتقاریرکرنے والے مقررین اور مغربی تہذیب و تمدن کی دلدادہ مرکزی حکومت کا لنگڑا لولا قانون اور اھل وطن کی انتہا درجہ کی ہویٰ پسندی اور بے شعوری ہے۔
سپریم کورٹ کے ہم جنس پرستی کے جواز کے فیصلے پرجو واویلا اور افرا تفری کا ماحول پیدا کیا گیا،وہ مرکزی حکومت کی سوچی سمجھی سازش ہے ۔اس کا خاص مقصد یہ ہے کہ ان مسائل میں مسلمانوں کو الجھاکر جملہ تمام مسائل سے مسلم ارباب حل و عقد کی توجہ ہٹا دی جائے اور ان کو ایسی فکروں پر ڈال دیا جائے کہ وہ اصل حقوق اور مطالبات کو با لکل بھول جائیں،جبکہ ہم جنس پرستی یہ ایسا مسئلہ ہے کہ اس کا اثر ملک کے تمام مذاہب کے ماننے والوں کے عقائد و اعمال پر پڑے گا،اور سبھی اس کی لپیٹ میں آئیں گے۔ ہندوستان مختلف تہذیب و تمدن کا گہوارہ ہے۔اس ملک میں مختلف مذاہب کے ماننے والے لوگ رہتے ہیں،ہم جنس پرستی جیسے قبیح اورناپسندیدہ عمل سے ہر فرقہ کے لوگ متاثر ہونگے،اللہ تعالی نے مخلوق کی تخلیق فرمائی اور وہ ان کی تمام فطرتوں سے واقف ہے،اسی لئے تمام انسانوں کو ایک ایسے ضابطے میں پرو دیا ہے جو اس کی عین فطرت کے مطابق ہے،اور اس کو اجازت دے دی کہ اگر تمہاری خواہش اور تمنا ایک بیوی میں پوری نہ ہوتی ہو تو تم کو اجازت ہے کہ یکے بعد دیگر چار بیویاں رکھ کر جائز اور حلال طریقے سے خواہشات کی تکمیل کر سکتے ہو اس شرط کے ساتھ کہ باہمی حقوق پامال نہ ہوں اور ہر ایک کے حق کا پورا پورا خیال کیا جائے۔ حکومت ہند اس ملک میں ایسا قانون نافذ کرنا چاہتی ہے ،جس میں آوارگی و بے حیائی عام ہو ،جس میں ماں، بہن،بیٹی اوربہو کی عزت و آبرو ہم جنس پرستی کے نام پر لوٹی جائیں،اور جب جوانی کی عمر عیاشی میں گذر جائے اور بڑھاپے میں اسے سہارا کی ضرورت ہو تو بے یارومددگار ہوجائے،اس سب کے باوجود ہمارا رد عمل کارگر اورصحیح نتیجہ خیز ہوسکتا ہے یا نہیں؟ اسکا جواب تلاش کرنا آج کے ملکی حالات کے تناظر میں کوئی مشکل کام نہیں، ہر کس وناکس یہ کہہ کر ہی اپنے آپ کو تسلی دینا بہتر سمجھےگا کہ عدلیہ نے جو کیا وہ کیا،ہمارے لئے تو فیصلہ نبوی ہی وسیلہ نجات اور بس۔و الی اللہ المشتکی، وھوالمعین۔
عبدالخالق القاسمی
مدرسہ طیبہ منت نگر مادھوپور مظفرپور،بہار

Tags

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker