اجمیر میں جمعیۃ علماء ہند کا میڈیکل کیمپ اختتام پذیر

اجمیر میں جمعیۃ علماء ہند کا میڈیکل کیمپ اختتام پذیر

اجمیر ؍نئی دہلی:19ستمبر(پریس ریلیز)
خواجہ کی نگری اجمیر شریف میں ایک ہفتہ سے جمعیۃ علماء ہند کے جنرل سکریٹری مولانا محمود مدنی کی ہدایت پرجاری میڈیکل کیمپ اختتام پذیر ہوگیا ۔ شہر سے باہر واقع کائیڈ وشرام استھلی جہاں عرس کے موقع پر ملک بھر سے آنے والے زائرین ٹھہرتے ہیں ، وہاں جمعیۃ کا میڈیکل کیمپ ضرورت مندوں کے لیے بڑی راحت کا سبب بنا، کیوں کہ گرد ونواح میں کوئی ایسا میڈیکل انسٹالیشن موجود نہیں ہے۔ کل 2050 زائرین نے اپنی بیماری کے وقت یہاں رجوع کیا اور مفت دوائیں حاصل کیں ۔نیز بڑی تعدا د ایسے لوگوں بھی تھی جن کو سخت علالت کی وجہ سے ’ جمعیۃ ایمبولینس‘ کے ذریعہ ضلع ہسپتال تک پہنچایا گیا ۔ اس بار مریضوں کے لیے خصوصی انتظام کیا گیا تھا ، خدمت کے لیے دو ایمبولینس اور۲۴؍رضا کار شب و روز موجود رہے ، خاص طور سے اس بار مظفر نگر سے اسکاوٹ تربیت یافتہ ۱۲؍نوجوانوں کی خدمت بھی حاصل کی گئی ۔ جمعیۃ علماء ہند کے سکریٹری مولانا حکیم الدین قاسمی اورمولانا شبیر احمد قاسمی نائب صدر جمعیۃ علماء راجستھان سمیت جمعیۃ کے کئی عہدیداران بطور نگراں موجود رہے ۔
مولانا شبیر احمد نے بتایا کہ ۲۰۱۶ء میں اجلاس عام جمعیۃ علماء ہند کے بعد یہ چوتھا کیمپ ہے اور ہم ہر بار زیادہ اچھا کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔انھوں نے کہا کہ درگاہ اجمیر شریف کے مختلف ذمہ داروں نے ہمارے کیمپ کا دورہ کیا ہے، وہ جمعیۃ علماء ہند کے جنرل سکریٹری مولانا محمود مدنی کو سراہتے ہیں جومسلسل مسلمانوں کے دونوں طبقوں کو قریب لانے کی ہر ممکن کوشش کررہے ہیں ۔درگاہ کے سجادہ نشین سید زین العابدین نے اسکاؤٹ تربیت یافتہ نوجوانوں کی چستی و پھرتی کی بھی ستائش کی جو مریضوں کی مدد میں پیش پیش رہے ۔درگاہ کے ذمہ داروں نے جمعیۃ کے سبھی کارکنان کا خندہ پیشانی سے استقبال کیا اور درگاہ آمد پر ان کی دستار بندی کی ۔درین اثناء جمعیۃعلماء بناس کانٹھا کا ایک وفد بھی یہاں کیمپ آیاجن میں عتیق الرحمن قریشی ، عارف بھائی سلاٹ اور مولانا ابوالحسن پالن پوری آرگنائزر جمعیۃ علماء ہند شریک تھے ۔