“ووٹر شناختی کارڈ اور ہماری ذمہ داری”

“ووٹر شناختی کارڈ اور ہماری ذمہ داری”

از؛ نجیب الرحمٰن ململی ندوی

ووٹر لسٹ میں ناموں کی تصدیق،تصحیح اور اندراج کے سلسلہ میں الیکشن کمیشن کی جانب سے اس وقت *یکم ستمبر سے آخر اکتوبر 2018* تک پورے ملک میں ووٹر بیداری مہم چلرہی ہے۔اس مہم کے تحت اس دو ماہ کے اندر ہر اتوار کو ہر بوتھ پر BLO کو ان کاموں کیلئے موجود رہنے کی ہدایت حکومت کی جانب سے دی گئی ہے۔ ایسے موقعہ پر عام لوگوں میں بیداری لانے کیلئے ہر ذی شعور اور پڑھے لکھے افراد بطورِ خاص ملی وسماجی کاموں میں پیش پیش رہنے والے افراد اور اداروں کو آگے آنا چاہئے۔
اور اس سلسلہ میں اپنے اپنے محلہ اور اپنے حلقۂ اثر میں باقاعدہ کیمپ لگا کر بیداری پیدا کرنے کے ساتھ ساتھ اس سلسلہ میں انکی مدد بھی کرنی چاہئے۔
ڈائریکٹ آن لائن بھی نام کا اندراج یا تصحیح ہو سکتی ہے۔

*ناموں کے اندراج کے سلسلہ میں سرکاری افسران کا متعصبانہ رویہ*

کئی علاقوں سے یہ خبر بھی ملی ہے کہ بی ایل او کے پاس فارم جمع کرنے کے باوجود نام مندرج نہیں ہو سکا۔ بی ایل او کا کہنا ہے ہم نے فارم جمع کر دیا لیکن اوپر کے آفیسر کا حکم ہے کہ مسلم علاقوں میں دس فیصد سے زیادہ نام لسٹ میں نہ آنے پایے۔ ایک بی ایل او (BLO) نے بتایا کہ ہم نے زیادہ مسلمانوں کا نام ان کی غیر تحریر شدہ آڈر کے باوجود بھجوا دیا تو بڑے آفیسر نے دھمکی تک ہمیں دے دی کہ تم بڑے خیر خواہ معلوم ہوتے ہو۔ آئندہ ایسی حرکت ہوئی تو کسی نہ کسی معاملے میں گرفت کروا دیں گے کہ تم اپنی قوم کو بھول جاؤگے وغیرہ وغیرہ۔ اس لیے آن لائن فارم جمع کرنے میں ووٹر لسٹ میں اندراج کی توقع زیادہ ہے۔

*ہمیں کیا کرنا چاہئے؟*
ایسے حالات میں تو ہماری ذمہ داری دوچند ہوجاتی ہے۔
جہاں جہاں بھی کیمپ کا نظم ہم کرسکیں وہاں انٹرنیٹ کا بھی نظم کریں۔
اور اسکی آسان شکل یہ ہیکہ دو چار جانکار احباب موبائل یا لیپ ٹاپ لیکر وہاں موجود رہیں اور آن لائن چیک کرکے وہیں پر ناموں کا اندراج اور تصحیح کردیں۔
اور ساتھ ہی ساتھ کیمپ کے وقت چار چھ ذمہ دار افراد کو تیار کیا جائے کہ وہ محلہ میں ایک ایک گھر جاکر لوگوں کو اس جانب متوجہ کریں

*آن لائن رجسٹریشن کا طریقہ*
آن لائن فارم بھی آف لائن فارم کی طرح ہے۔ جس میں ایک عدد تصویر، برتھ سرٹیفکیٹ اور ایڈریس پروف کےلیے کوئی ایسی آئی ڈی پروف جس میں گھر کا پتہ درج ہو۔ فوراً موبائل سے فوٹو لے کر اپلوڈ کر دیں۔ فارم بھرنے کے بعد آپکو ایک ریفرینس نمبر ملیگا جس کے ذریعہ آپ دو مہینے یا ایک مہینہ بعد اپنے نام کا اسٹیٹس چیک کر سکتے ہیں کہ آپ کا نام ووٹر لسٹ میں آیا یا نہیں۔ اور چونکہ آپ نے پروف کے ساتھ آن لائن فارم بھرا ہے۔اس صورت میں ہم فائٹ بھی کر سکتے ہیں کہ ناموں کا اندراج کیوں نہیں ہوا۔ وجہ بتائیں وغیرہ

آن لائن رجسٹریشن کا لنک یہ ہے www.nvsp.in

*ووٹر بیداری مہم کے نتائج*

فسطائی طاقتوں کو حکومت سے دور رکھنے اور ایک انصاف پسند اور معتدل حکومت کے قیام کیلئے الیکشن میں زیادہ سے زیادہ ووٹنگ ہونا ضروری ہے اور یہ اسی وقت ممکن ہے جب ہمارا ووٹ سو فیصد موجود ہو اور الیکشن کے وقت ہم اسمیں سے حتی الامکان ووٹ ڈلواسکیں۔

اسلئے ہم میں سے ہر ایک شخص کو چاہئے کہ کم از کم اپنے وارڈ میں مہم چلاکر دو چار جگہ کیمپ کا نظم کرائیں۔
ائمۂ کرام سے جمعہ کے خطاب میں اس بات پر خصوصی توجہ دلانے کی درخواست کریں۔
ان شاءاللہ آنے والے الیکشن میں اسکا فائدہ ہم اپنی آنکھوں سے دیکھیں گے۔
اللہ تعالیٰ ہماری مدد فرمائے۔

*لکھنؤ میں ووٹر بیداری کیمپ کا انعقاد*

ووٹر شناختی کارڈ بننے اور ووٹر لسٹ میں ناموں کے اندراج کے سلسلہ میں آن لائن رجسٹریشن کیلئے سماجی و ملی کامموں میں سرگرم تنظیم *النور سوشل کیئر فاؤنڈیشن* نے سرِدست لکھنؤ کے مختلف علاقوں میں کیمپ لگانے کا ارادہ کیا ہے۔

*نوجوانوں سے اپیل*

سوشل میڈیا پر سرگرم رہنے والے نوجوانوں سے خصوصی طور پر اور قوم وملت کیلئے فکرمند رہنے والے دردمند حضرات سے عمومی طور پر گذارش ہیکہ حسبِ سہولت عوامی خدمت کے جذبہ کے تحت ہفتہ میں کم از کم ایک دن یا چند گھنٹہ کیلئے اپنی خدمات پیش کرتے ہوئے اس مہم کا حصہ بنکر اپنی ملی بیداری کا ثبوت دیں۔
اللہ آپکو بہتر بدلہ عطاء فرمائیگا۔ان شاءاللہ تعالیٰ ۔
آپ جس دن جتنا وقت اسکے لئے فارغ کرسکتے ہوں براہ کرم ان نمبرات پر مطلع فرمادیں۔
9956482287
8318979821
9335226077
والسلام
*نجیب الرحمٰن ململی ندوی*
جنرل سکریٹری:
النور سوشل کیئر فاؤنڈیشن
و کنوینر
آل انڈیا ملی کونسل مشرقی اترپردیش