اقوام متحدہ میں امریکی سفیرنکی ہیلی نے استعفیٰ دیا

اقوام متحدہ میں امریکی سفیرنکی ہیلی نے استعفیٰ دیا

واشنگٹن:10؍اکتوبر(بی این ایس؍ایجنسیاں)
اقوام متحدہ میں امریکی سفیر نکی ہیلی نے استعفٰی دے دیا ہے۔ روئٹرز نے میڈیا رپورٹوں کے حوالے سے منگل کے دن تصدیق کر دی ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ہیلی کا استعفیٰ قبول کر لیا ہے۔خبر رساں ادارے اے ایف پی نے امریکی میڈیا کے حوالے سے بتایا ہے کہ اقوام متحدہ میں امریکی سفیر نکی ہیلی اپنے عہدے سے مستعفی ہو گئی ہیں۔ متعدد ذرائع نے بتایا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ہیلی کا استعفی قبول کر لیا ہے۔
ابھی تک یہ معلوم نہیں ہو سکا ہے کہ چھیالیس سالہ نکی ہیلی نے اقوام متحدہ کے اس اہم عہدے سے الگ ہونے کا فیصلہ کیوں کیا ہے۔ حال ہی میں امریکی صدر ٹرمپ کی قومی سلامتی کی ٹیم کے متعدد رکن استعفے دے چکے ہیں، جن میں تازہ ترین مثال ریکس ٹلرسن کی ہے۔ ٹلرسن نے مارچ میں وزیر خارجہ کے عہدے سے الگ کا اعلان کیا تھا۔
میڈیا رپورٹوں کے مطابق نکی ہیلی اس وقت واشنگٹن میں موجود ہیں اور وہ جلد ہی امریکی صدر سے ملاقات کرنے والی ہیں۔ ادھر وائٹ ہاؤس کی ترجمان سارہ ساندرز نے بتایا ہے کہ ٹرمپ اور ہیلی جلد ہی اوول آفس میں ملاقات کریں گے۔
امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھی اپنی ایک ٹوئٹ میں کہا ہے کہ وہ اپنی دوست نکی ہیلی کے ساتھ ایک بڑا اعلان کرنے والے ہیں۔ ہیلی نے جنوری سن دو ہزار سترہ میں اقوام متحدہ میں امریکی مندوب کے طور پر اپنی ذمہ داریاں نبھانا شروع کی تھیں۔
نکی ہیلی حکمران پارٹی ری پبلکن کی حامی ہیں۔ وسط مدتی الیکشن سے قبل ہیلی کے اس عہدے سے الگ ہونے کے فیصلے کو ٹرمپ انتظامیہ کے لیے ایک اور دھچکا قرار دیا جا رہا ہے۔ ہیلی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی ناقد رہی ہیں۔