ریاست گجرات میں اتربھارتیوں کو نکالنے کا معاملہ

ریاست گجرات میں اتربھارتیوں کو نکالنے کا معاملہ

گجرات میں بی جے پی حکومت برسراقتدار ہے وزیر اعظم نریندر مودی اورامت شاہ اس کا جواب دیں : ششی بالا پنڈیر
دیوبند: 11اکتوبر (رضوان سلمانی؍بی این ایس)
گجرات میں اتربھارتیوں پر ظلم وستم کو لے کر سیاسی جماعتیں بھلے ہی ناراض ہوں مگر دیوبند کی سابق اسمبلی رکن اور اب بی جے پی سے بغاوت کرچکی تیز طرار لیڈر ششی بالا پنڈیر سخت ناراض ہیں اور انہوں نے بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ اور وزیر اعظم نریندر مودی پر زبردست تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ریاست گجرات میں بی جے پی برسراقتدار ہے اوروہاں پر اتربھارتیوں پر قہر برپایا جارہاہے اور وہاں پر ظلم وزیادتیاں کی جارہی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ کیرانہ مسئلہ پر نقل مکانی کا راگ الاپنے والے امت شاہ اسکا جواب دیں گے کہ گجرات میں محنت ومزدوری کرکے اپنی گزر بسر کرنے والے اتربھارتیوں کو نشانہ کیوں بنایا جارہا ہے ۔ ششی بالا پنڈیر نے کہا کہ وہ اپنی پوری طاقت کے ساتھ گجرات جائیں گی اور اتربھارتیوں کے ساتھ کھڑی ہوںگی اور اس کیلئے بھلے ہی انہیں اپنی جان کی قربانی کیوں نہ دینی پڑے۔ واضح ہو کہ گزشتہ کچھ وقت سے گجرات میں اتربھارتیوں پر مسلسل حملے ہورہے ہیں اور اب تک تقریباً 30ہزار افراد گجرات چھوڑ کر واپس اپنے اترپردیش ، بہار اورراجستھان پہنچ چکے ہیں۔ اس مسئلے پر سیاست بھی گرم ہے یہ اور بات ہے کہ ابھی تک سہارنپور میں کوئی بڑا لیڈر اس مسئلے پر آواز نہیں اٹھا پائے ہیں، فی الحال اس درمیان سابق اسمبلی رکن اور اب بھاجپا سے کنارہ کشی کرچکی ششی بالا پنڈیر سامنے آئی ہیں اور انہوں نے کہاکہ کیرا نہ میں نقل مکانی ہوئی تووزیر اعظم نریندر مودی اور بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ نے شور وغل کیا مگر اب کیا ہوگیا ہے کہ ریاست گجرات میں بی جے پی برسراقتدار ہے اور اتربھارتیہ وہاں پر مولی گاجر کی طرح مروڑے جارہے ہیں ، ان پر خونی حملے ہورہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گجرات میں اتربھارتیو ں کو زدو کوب کیا جارہا ہے ،بہو بیٹیوں کی عصمت دری کی جارہی ہے، گجرات سے لوگ نقل مکانی کرنے پر مجبور ہیں ۔ وزیر اعظم نریندر مودی اور بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ اس کا جواب دیں۔ کیوں نہیں اتربھارتیوں کو حفاظت دی جارہی ہے ۔ آخر وہ نقل مکانی پر کیوں مجبور ہیں ۔ ششی بالا نے کہا کہ اترپردیش کے ڈی جی پی یہ کہتے ہیں کہ سب انسپکٹر کو میرٹ کی بنیاد پر تھانہ کا چارج ملنا چاہئے لیکن ضلع سہارنپورمیں تو 58سال کے سب انسپکٹر کو تھانہ کا چارج نہیں دیا گیا ، اس طرح ڈی جی پی کے احکامات کی دھجیاں اڑائی جارہی ہیں۔ ڈی جی پی کے احکامات انکے ماتحت ماننے کو تیار نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت پوری ریاست کے قانون ونظم ونسق تباہ ہوچکی ہے ۔ ششی بالا نے کہا کہ وہ جلد ہی گجرات جائیںگی اوراتربھارتیوں کے درمیان ان کا دکھ درد بانٹیں گی، ان کی حفاظت کو لے کر سرکار کے سامنے ضرورت پڑی تو دھرنا اوراحتجاجی مظاہرہ بھی کریں گی اس کے لئے انہیں چاہے جو بھی قربانی دینی پڑے۔ انہوں نے کہا کہ آنے والے پارلیمانی انتخاب میں بی جے پی کو اس کا خمیازہ ادا کرنا پڑے گا، گجرات میں لاٹھیاں کھانے والوںکے اہل خانہ بی جے پی کو ووٹ نہیں دیںگے۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت میں جرم کی انتہا ہوچکی ہے ، عوام سب کچھ دیکھ رہی ہے اور سمجھ رہی ہے ، اب ان کے بہکاوے میں نہیں آئیں گی۔