نائر اسپتال میں مریض کی مرضی کے بغیر داڑھی مونڈھ دی گئی

نائر اسپتال میں مریض کی مرضی کے بغیر داڑھی مونڈھ دی گئی

عوام میں سخت ناراضگی، سابق رکن اسمبلی فیاض احمد کی تحریری شکایت پر کارروائی کی یقین دہانی
ممبئی۔ ۶؍نومبر: پچھلے ہفتے عرب گلی میں واقع ہری مسجد کے موذن مولانا خیرکی طبیعت ناساز ہونے کے بعد انہیں نائر اسپتال میں داخل کروایا گیا۔ تشخیص سے معلوم ہوا کہ مولانا کو ہرنیا کا مرض لاحق ہے جس کے لئے آپریشن کی ضرورت ہے، لہٰذا چار روز قبل ان کا ہرنیا کا آپریشن کیا گیا، لیکن آپریشن سے قبل مولانا کی مرضی کے بغیر ان کی داڑھی منڈوادی گئی جس کی وجہ سے مولانا کے رشتہ داروںاورعلاقے کے لوگوں میں اسپتال انتظامیہ کے خلاف زبر دست غم و غصہ اور بے چینی پائی جارہی تھی۔ گذشتہ کل جب مولانا کے اقرباء نے معاملے کی شکایت سابق رکنِ اسمبلی فیاض احمد سے کی تو انہوں نے فوراً نائر اسپتال کے ڈین سے فون پر گفتگو کی اور معاملے سے آگاہ کیا اور نائر اسپتال پہنچ کر سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر وندنا ، نائب ڈین ڈاکٹرکالے اور ڈاکٹر سارقہ سے ملاقات کرمعاملے پر ناراضگی کا اظہار کیا اور تحریری شکایت درج کروائی۔ انہوں نے اسپتال انتظامیہ سے کہا کہ داڑھی ہمارے نبی کی سنّت ہے اور اسطرح بلا وجہ داڑھی منڈواکرہمارے مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچانے کی کوشش کی گئی ہے ،اسپتال کا جو بھی ڈاکٹر یا ملازم اس ناپاک سازش میں ملوث ہے اس کے خلاف فوری طور پر کاروائی ہونی چاہئے ۔ اسپتال انتظامیہ نے خاطیوں کے خلاف کڑی کاروائی کی یقین دہانی کروائی ہے۔