جہان بصیرتنوائے خلق

مسلمان اشتعال انگیزی اور افواہ کے شکار نہ ہوں

جب بھی الیکشن کا وقت آتاھے تو فرقہ پرست اور شر پسند عناصر ملک میں سرگرم ھو جاتے ھیں۔اور امن و شانتی کے ماحول کو فرقہ وارانہ رنگ میں رنگنے کے لئے تیار ھو جاتے ھیں۔تاکہ فرقہ پرست پارٹیوں کا اقتدار میں رھنا یقینی ھو سکے۔

موجودہ وقت میں پھر رام مندر کے معاملہ کو اچھال کر ملک کی فضا کو مسموم کرنے کی کوشش کی جارھی ھے۔اس کے لئے ہر موقع پر شر پسند عناصر ھندتو کو حربہ کے طور پر استعمال کرتے ھیں اور ان کو متحد کرنے کی کوشش کر تے ھیں۔لیکن یہ ملک گنگا جمنی تہذیب کی علامت ھے۔سالہا سال سے ھندو ،مسلم ،سکھ اور عیسائی آپس میں مل جل کر رھتے آئے ھیں اس لئے ھندو سماج میں اکثر لوگ سیکولر ھیں۔وہ مل جل کر رھنا چاھتے ھیں۔اس طرح فرقہ پرستوں کو کامیابی نہیں ملتی ھے۔اور آئندہ بھی نہیں ملے گی۔ان شاء اللہ

ابھی پھر اجودھیا میں دھرم سبھا کے اعلان نے ملک کی فضا کو گرم کردیا ھے ۔اس کی وجہ سے دھشت کا ماحول پیدا ھو گیا ھے۔ ملک میں امن و شانتی بنائے رکھنے کے لئے حکومت کی جانب سے بھی پختہ انتظامات کئے گئے ھیں،اجودھیا اور اس کے ارد گرد کے سیکولر ھندو بھی امن و شانتی برقرار رکھنے کے لئے کوشاں ھیں ۔مسلمانوں کے سامنے بارہا ایسے مواقع اچکے ھیں۔وہ کبھی بھی خوفزدہ نہیں ھوئے بلکہ صبر وتحمل سے کام لے کر حالات کا مقابلہ کیا ۔اج پھر ھمارے سامنے ویسے ھی خراب حالات آگئے ھیں۔ ایسے موقع پر امت مسلمہ سے اپیل ھے کہ وہ حوصلہ سے کام لیں،صبر وتحمل کا مظاھرہ کریں،اشتعال انگیزی اور افواہ کے شکار نہ ھوں۔یہ شر پسند عناصر مشتعل کرکے اور افواہ پھیلا کر حالات کو خراب کر دینا چاھتے ھیں ،اس لئے آپ ھوشیار رہیں۔سیکولر برادران وطن سے رابطہ مضبوط کریں۔اللہ کی جانب توجہ کریں۔ ملک میں امن وشانتی کے لئے دعا کریں۔ان شاء اللہ یہ حالات اس طرح ٹل جائینگے کہ کچھ پتہ بھی نہیں چلے گا۔اور شر پسند عناصر ذلیل وخوار ھونگے

حکومت کی بھی ذمہ داری ھے کہ وہ لوگوں کی ھر طرح سے حفاظت کرے۔ائین کی بالا دستی قائم کرے۔شر پسند عناصر پر قانونی کاروائی کرے۔اور ملک میں امن وشانتی قائم کرے۔

مولانا ڈاکٹر ابوالکلام قاسمی شمسی

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker