اخبارجہاں

صدر ٹرمپ کا امریکہ میں ہنگامی حالت کے نفاذ پر غور

واشنگٹن:11/جنوری(بی این ایس )
بائیس دسمبر کو شروع ہونے والے شٹ ڈاؤن کے خاتمہ جلد ہوتا نظر نہیں آرہا۔ جمعے کو شٹ ڈاؤن کا 21 واں دن ہے جب کہ ہفتے کو یہ امریکی تاریخ کا طویل ترین شٹ ڈاؤن بن جائے گا۔
امریکی ذرائع ابلاغ نے دعویٰ کیا ہے کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ امریکی حکومت کے جاری شٹ ڈاؤن کے پیشِ نظر ملک میں ہنگامی حالت کے نفاذ پر سنجیدگی سے غور کر رہے ہیں۔
خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق صدر نے ملک میں ایمرجنسی کے نفاذ کا صدارتی اختیار استعمال کرنے پر وائٹ ہاؤس کے قانونی مشیران اور اپنے اتحادیوں سے بات چیت کی ہے۔
امریکی آئین کے تحت ہنگامی حالت کے نفاذ کی صورت میں صدر کو وسیع اختیارات حاصل ہوجاتے ہیں اور وہ بجٹ سمیت کئی معاملات میں کانگریس کو بائی پاس کرسکتا ہے۔
ہنگامی حالت کے نفاذ کی صورت میں صدر ٹرمپ کو کانگریس کے انکار کے باوجود میکسیکو کے ساتھ سرحد پر دیوار کی تعمیر کے لیے فنڈز مختص کرنے کا اختیار ہوگا جو جاری شٹ ڈاؤن کا سبب ہے۔
صدر ٹرمپ کانگریس سے سرحد پر دیوار کی تعمیر کے لیے بجٹ میں پانچ ارب ڈالر مختص کرنے کا مطالبہ کر رہے ہیں جسے ڈیموکریٹس ماننے سے انکاری ہیں۔
ڈیموکریٹس نے صدر کو پیش کش کی ہے کہ وہ سرحدوں کی سکیورٹی بہتر بنانے کے دیگر اقدامات کے لیے حکومت کو سوا ارب ڈالر دینے پر راضی ہیں۔

Tags

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker