ہندوستان

اکھلیش مایاوتی نے دیا کانگریس کو زبردست جھٹکا، سپا بسپا کے مہاگٹھ بندھن میں کانگریس کے لئے کوئی جگہ نہیں

اترپردیش میں 38-38 سیٹوں پر لڑے گی سماج وادی پارٹی اور بہوجن سماج پارٹی، کانگریس کو اس کے روایتی سیٹوں پر محدود کیا
نئی دہلی : 12 جنوری (بی این ایس /ایجنسی)
اترپردیش کے سابق وزیر اعلیٰ اور سماج وادی پارٹی کے سربراہ اکھلیش یادو نے بہوجن سماج پارٹی کی چیف مایاوتی کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کیا، اس موقع پر دونوں لیڈروں نے آنے والے لوک سبھا الیکشن میں نشستوں کی تقسیم کا اعلان کیا، اعلان کے مطابق دونوں پارٹیاں اترپردیش کی 80 نشستوں میں سے 38 – 38 نشستوں پر اپنے امیدوار اتارے گی، وہیں کانگریس کی خاندانی سیٹ رائے بریلی اور امیٹھی سے اپنا کوئی امیدوار کھڑا نہیں کرے گی، باقی کی دو نشستیں دیگر پارٹی کو دی جائے گی، اس موقع پر بہوجن سماج پارٹی کی سپریمو مایاوتی نے کانگریس پر جم کر حملہ کیا تو وہیں اکھلیش یادو نے بی جے پی پر اپنا غصہ اتارا، اکھلیش یادو نے کہا کہ مایاوتی جی کی بے عزتی میری بے عزتی ہوگی اسی لیے آج سے سماج وادی پارٹی کا ہر کارکن اس بات کو گرہ باندھ لے کہ اتر پردیش میں سماج وادی پارٹی اور بہوجن سماج پارٹی ایک ہی ہے اور اس اتحاد کا مقصد پردیش سے اور دیس سے بی جے پی کو باہر کرنا ہے، کانگریس کو مہاگٹھ بندھن میں شامل نہ کرنے کے ایک سوال کے جواب میں مایاوتی نے کہا کہ کانگریس اور بی جے پی کی پالیسی ایک ہی ہے، مایاوتی کو وزیراعظم بنائے جانے کے سوال کا جواب دیتے ہوئے اکھلیش یادو نے کہا کہ اتر پردیش نے ہمارے ملک کو کئی وزیراعظم دئیے ہیں ہم چاہیں گے کہ اس بار بھی ہمارا وزیراعظم اترپردیش سے ہی ہو، پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اکھلیش یادو نے کہا کہ بی جے پی کی تباہی کے لیے سماج وادی پارٹی اور بہوجن سماج کا ملنا ضروری تھا، میں اس سے پہلے بھی کہہ چکا ہوں کہ اگر اس اتحاد کے لئے مجھے دو قدم پیچھے بھی ہٹنا پڑے گا تو بھی مجھے یہ اتحاد منظور ہے، مایاوتی نے کہا کہ بی جے پی کی حکومت میں غیر اعلانیہ ایمرجینسی نافذ ہے، اور جس طرح 1977 میں کانگریس کی نیا ڈوبی تھی اسی طرح 2019 میں بی جے پی کی نیا ڈوبنے والی ہے، ہمیں کانگریس کے ساتھ جانے میں کوئی فائدہ نہیں تھا اسی لیے بہت سوچ سمجھ کر ہم نے کانگریس سے دور رہ کر الیکشن لڑنے کا فیصلہ کیا ہے، مایاوتی نے کہا کہ بوفورس کی وجہ سے کانگریس کی حکومت گئی تھی اور رافیل بی جے پی کو لے ڈوبے گا، اترپردیش میں بی جے پی نے بے ایمانی سے حکومت بنائی ہے، آج بی جے پی کی عوام مخالف پالیسیوں سے اترپردیش کی عوام پریشان ہے، ہم نے ضمنی انتخابات میں جس طرح یک جٹ ہوکر بی جے پی کو ہرایا ہے لوک سبھا الیکشن میں بھی ہم اسی طرح شکست دیں گے، اس موقع پر اکھلیش یادو نے یہ بھی کہا کہ اس وقت بی جے پی بوکھلائی ہوئی ہے اور وہ الیکشن جیتنے کے لئے کچھ بھی حربہ اپنا سکتی ہے اسی لیے ہمیں ہر محاذ پر چوکنا رہنے کی ضرورت ہے.

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker