ہندوستان

کانگریس یوپی کی سبھی ۸۰ سیٹوں پر چنائو لڑے گی : غلام نبی آزاد

نئی دہلی۔ ۱۳؍جنوری: کانگریس رہنما غلام نبی آزاد نے کہا کہ ملک میں بی جے پی کو ہرانے کا مادہ کوئی رکھتا ہے تو وہ کانگریس پارٹی ہے، انہوں نے کہا کہ وہ اکیلے لوک سبھا چناؤ لڑیں گے اور جیتیں گے بھی۔اتر پردیش میں سماج وادی پارٹی اور بہوجن سماج پارٹی کے اتحاد کے بعد کانگریس پارٹی نے بڑا فیصلہ کیا ہے۔ کانگریس پارٹی نے صاف کر دیا ہے کہ وہ اتر پردیش کی تمام 80 لوک سبھا سیٹوں پر چناؤ لڑے گی۔کانگریس کے سینئر رہنما غلام نبی آزاد نے لکھنؤ میں پریس کانفرنس سے خطاب کیا اور یہ معلومات دی۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ اگر کوئی سیکولر جماعت ان کے ساتھ آنا چاہتی ہے تو پارٹی اس کا خیر مقدم کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ راہل گاندھی کی قیادت میں ڈٹ کر لوک سبھا چناؤ لڑا جائے گا۔غلام نبی آزاد نے کہ کہا کہ کانگریس اور بی جے پی کے درمیان نظریات کی لڑائی ہے، ہندوستان کو متحد رکھنے کی لڑائی، ملک کی تمام ذاتوں کو ساتھ لے کر چلنے کی لڑائی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی وہی ہوتی ہے جو اپنا نقصان جھیل کر بھی قوم کو نقصان نہ ہونے دے۔ انہوں نے کہا کہ ’’ہم قومی مفاد میں کئی مرتبہ اپنے قدم پیچھے کھینچے ہیں۔ کئی ریاستوں میں ہم نے دوسروں کو موقع دیا اور خود کو پیچھے رکھا۔‘‘انہوں نے کہا کہ ملک کے کسانوں کی بہتری کے لئے کانگریس پارٹی نے سب سے زیادہ کام کیا ہے۔ راہل گاندھی کی قیادت میں حال ہی میں ہوئے اسمبلی انتخابات میں کانگریس پارٹی نے جو کسانوں سے وعدے کئے تھے وہ پورے کئے۔‘‘انہوں نے کہا کہ ’’کرناٹک، پنجاب، راجستھان، چھتیس گڑھ اور مدھیہ پردیش ہر ایک ریاست میں ہم نے کسانوں کا قرض معاف کیا۔ ہم وزیر اعظم اور ان کی پارٹی بی جے پی کی طرح نہیں ہیں جو وعدہ تو کرتے ہیں لیکن پورا نہیں کرتے۔‘‘ انہوں نے کہا، ’’مودی اور ان کی پارٹی نے نہ کسانوں کا قرض معاف کیا، نہ 15 لاکھ روپے کھاتوں میں ڈالے۔ ملک کے لوگوں کو 5 سال میں 10 کروڑ نوکریاں دینے کا وعدہ بھی انہوں نے پورا نہیں کیا۔‘‘غلام نبی آزاد نے کہا، ’’بی جے پی کی حکومتوں میں بچیوں سے آبروریزی ہو رہی ہے۔ نوٹ بندی اور جی ایس ٹی جیسے فیصلوں سے ملک کی معیشت تباہ ہو چکی ہے۔ ہزاروں صنعتیں بند ہو چکی ہیں۔‘‘ انہوں نے کہا کہ ملک میں کانگریس کی حکومت بنی تو اس تمام پریشانیوں کو دور کر دیا جائے گا۔‘‘

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker