ہندوستان

حکومت سکھ مخالف فسادات کے مجرموں کو انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کرنے کے لیے پر عزم: مودی

نئی دہلی، 13 جنوری (یو این آئی) وزیر اعظم نریندر مودی نے سکھ فرقہ کو آج ایک مرتبہ پھر یقین دلایا کہ ان کی حکومت 1984 کے سکھ مخالف فسادات کے مجرموں کو انصاف کے کٹہرے میں لاکر رہے گی اور متاثرین کو انصاف ملے گا۔مسٹر مودی نے یہاں اپنی رہائش گاہ پر سکھوں کے دسویں گرو ، گروگوبند سنگھ کی جینتی پر 350 روپیے کا یادگاری سکہ جاری کیا۔ اس موقع پر وہاں موجود افراد سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے گرو گوبند سنگھ کی انسانیت کی بے لوث خدمت کا جذبہ، بہادری اور قربانی کی تعریف کی اور ان کے بتائے ہوئے راستے پر چلنے کی گزارش کی۔وزیر اعظم نے کہا کہ ان کی حکومت سکھ مخالف فسادات کے مجرموں کو کیفر کردار تک پہنچائے گی۔ انہوں نے کہا،’گرو گوبند سنگھ جی ہوں یا پھر گرو نانک دیو جی، ہمارے تمام گروؤں نے انصاف کے ساتھ کھڑے ہونے کا سبق دیا ہے۔ ان کے بتائے ہوئے راستے پر چلتے ہوئے آج مرکزی حکومت 1984 میں شروع ہونے والی نا انصافی کے دور کو انصاف تک پہنچانے میں مصروف ہے۔ دہائیوں تک ماؤں، بہنوں اور بیٹیوں نے جو آنسو بہائے ہیں، انھیں پونچھنے کا کام، انھیں انصاف دلانے کا کام اب قانون کرے گا‘۔
انہوں نےکہا کہ حکومت کی کوششوں سے کرتارپور کوریڈور کا کام شروع ہوا اور اب زائرین گرودوارہ دربار صاحب کی زیارت کر سکیں گے۔ انہوں نے کہا،’ مرکزی حکومت کی انتھک اور مسلسل کوششوں سے کرتارپور کوریڈور بننے جا رہا ہے۔ اب گرو نانک کے بتائے ہوئے راستے پر چلنے والا ہر ہندوستانی، ہر سکھ، دوربین کے بجائے اپنی آنکھوں سے نارووال جا سکے گا اور بغیر ویزہ کے گرودوارہ دربارصاحب کی زیارت کر سکے گا‘۔
وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا،’ اگست 1947 میں جو چوک ہوئی تھی، یہ کوریڈور اسے مکمل کرے گا۔ ہمارے گرو کا سب سے اہم مقام صرف چند ہی کلو میٹر دور تھا، لیکن اسے اپنے ساتھ نہیں لیا گیا۔ یہ کوریڈور اس نقصان کو کم کرنے کی ایک کوشش ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker