ہندوستان

ICAI کامرس وزارڈ 2018 کے سکنڈ فیز کا ریزلٹ جاری

رحمانی 30 کی نمایاں کارکردگی

کل ہند سطح پر 16 مسلم بچے کامیاب، صوبہ بہار کے کامیاب سبھی 6 طلبہ کا تعلق رحمانی 30 سے۔

پٹنہ:یکم فروری (پریس ریلیز)

ملک میں مسلم طلبہ وطالبات کو اعلیٰ مقابلہ جاتی امتحانات کی تیاری کرانے والا اپنے طرز کا منفرد ادارہ رحمانی 30 (رحمانی پروگرام آف ایکسلنس) کے طلبہ نے ICAI کے دوسرے مرحلہ کے امتحان میں مسلم طلبہ کی نمائندگی کرنے میں سوفیصد شراکت کیا ہے۔ واضح رہے کہ ICAI کامرس وزارڈ ٹیسٹ کا مقصد کامرس کے میدان میں ملک کے طلبہ کی صلاحیت کو اُجاگر کرنا اور اُن کی حوصلہ افزائی کرنا ہے۔ ICAI ہندوستان کی نیشنل پروفیشنل اکاؤنٹنگ باڈی ہے۔ جس کی بنیاد جولائی 1949ء میں چارٹرڈ اکاؤنٹنٹ ایکٹ 1949کے تحت قانونی باڈی کے طور پر کیا گیا۔ ICAI دنیا کی دوسری سب سے بڑی پروفیشنل اکاؤنٹنگ اور فائنانس کمیٹی کے طور پر جانی جاتی ہے۔ ICIAواحد ادارہ ہے جہاں سے ہندوستان میں فائنانشیل آڈٹ اور اکاؤنٹنسی کا لائسنس اجراء ہوتا ہے اور اسی ادارہ کے ماتحت اس کی نگرانی کی جاتی ہے۔ ہندوستان بھر میں اسی ادارہ کے وضع کردہ اکاؤنٹ کے طریقہ کار کو کمپنیاں اپناتی ہیں۔ ICAI وہ ادارہ ہے جس کے وضع کردہ آڈٹ کے معیار کو ہندوستان میں فائنانشیل اسٹیٹمنٹ کی آڈٹ کو ملحوظ رکھا جاتا ہے۔ مرکزی حکومت، ریزرو بنک آف انڈیا اور سکیوریٹیز اینڈ ایکسچینج بورڈ آف انڈیا کے لیے اکاؤنٹ اور آڈٹ سے متعلق معیار کو تشکیل دینے اور اُس کو نافذ کرنے میں ICIA کا اہم کردار رہتا ہے۔

دوسرے مرحلہ میں کامیاب پہلے رینک کے طلبہ کے لیے ICAI کی جانب سے ایک لاکھ روپئے مختص ہیں، جب کہ دوسرے رینک پر رہنے والے طلبہ کے لیے پچاس ہزار کی رقم مختص ہے۔ اور اِن سارے شرکاء کو سرٹیفکیٹ سے بھی نوازا جاتا ہے۔ جو کہ مستقبل میں طلبہ کے لیے بے پناہ کار آمد ہوتے ہیں۔

ICIA وزارڈ کا ٹیسٹ دو مرحلہ میں منعقد ہوتا ہے۔ 2019 دوسرے مرحلہ کے شائع شدہ نتیجہ کے اعتبار سے پورے ہندوستان سے گیارہویں اور بارہویں کے کل 1013طلبہ وطالبات کامیاب قرار دیے گئے ہیں، جن میں مسلم طلبہ وطالبات کی تعداد کل 16ہے، جن میں رحمانی 30 کی چار طالبات اور دو طلبہ شامل ہیں۔ جب کہ صوبہ بہار میں کامیاب مسلم طلبہ وطالبات کی تعداد محض 6 ہیں، ان چھ بچے اور بچیوں کا تعلق رحمانی 30 سے ہے۔ جو کہ صوبہ بہار کے اعتبار سے مسلم طلبہ وطالبات کی کامیابی میں سو فیصد ہے۔

کامیابی کا یہ تناسب یہ بتلارہاہے کہ مفکر اسلام مولانا محمد ولی صاحب رحمانی نے مسلم طلبہ وطالبات کو رحمانی 30 کی شکل میں اعلیٰ تعلیمی میدان میں اپنی نمائندگی درج کرانے کے لیے ایک مضبوط پلیٹ فارم دستیاب کرایا ہے، جہاں جناب ابھیانند جی (سابق ڈی جی پی بہار) طلبہ کی تعلیمی نگرانی میں مشغول ہیں۔ فی الحال رحمانی پروگرام آف ایکسلنس (رحمانی 30) جناب احمد ولی فیصل رحمانی سابق ڈائریکٹر اسٹریٹجی ڈپارٹمنٹ یونیورسٹی آف کیلیفورنیا کی نگرانی میں قوم کے بچے اور بچیوں کو اعلیٰ تعلیم کی حصولیابی کے لیے ہر ممکن کوشش کر رہا ہے، اِس ادارہ سے قوم کے نمائندہ افراد کی شراکت بھی ضروری ہے تاکہ یہ کام مزید ترقیات کی جانب گامزن ہو۔

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker