ہندوستان

معصوموں اور بے گناہوں کا قتل قابل نفرت اور قابل مذمت ہے : مولانا محمود دریابادی

ممبئی : 13 مارچ (بی این ایس)ایک مسلمان کی حیثیت سے ہم ہمیشہ یہ کہتے رہے ہیں کہ بے گناہوں کا قتل و غارت گیری قابل نفرت اور قابل مذمت ہے اس لئے کہ قران میں صاف کہا گیا ہے کہ ایک بے گناہ کا قتل پوری انسانیت کا قتل ہے اور ایک بے گناہ کو موت سے بچانا گویا پوری انسانیت کی حفاظت کرنا ہے، ان خیالات کا اظہار معروف عالم دین اور سماجی شخصیت مولانا حکیم محمود دریابادی نے پلوامہ حملہ پر ہوئے ایک مذاکرہ میں حصہ لیتے ہوئے کہا، یہ مذاکرہ ممبئی یونیورسٹی میں منعقد کیا گیا تھا جس میں شہر کی معروف علمی و سماجی شخصیات نے شرکت کی، اس موقع پر مولانا دریابادی نے کہا کہ ہمیں بے حد افسوس ہوتا جب کچھ نادان دہشت گردی کا تعلق مذہب خصوصا اسلام سے جوڑتے ہیں، اسلام تو امن، سلامتی اور انسانیت کا دین ہے ـ یہ ہر طرح کی اور ہر سطح کی دہشت گردی کو حرام قرار دیتا ہے اور اس کی مذمت کرتا ہے ـ
دنیا میں جہاں کہیں قتل وغارتگری ہورہی اس کے بنیادی اسباب کاپتہ لگانا ضروری، اس میں اپنوں کی نادانیاں شامل ہیں تو کچھ غیروں کی سازشیں بھی ـ مولانا دریابادی نے اس طرح کے حملوں اور ناحق قتل و غارت گری کے اسباب اور اس کے تدارک کی تدابیر پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ قتل وخون سے روکنے کے لئے جہاں اصل مجرموں کو سخت ترین سزا دینا چاہیئے وہیں سماج میں ہونے والے ظلم وجبر ناانصافی اور عدم مساوات کا خاتمہ بھی ضروری ہے ـ
پلوامہ میں جو کچھ ہوا ہے اس کے اصل ذمہ داران، اور ان کی حمایت کرنے والے، ان کی کسی بھی طرح کی امداد کرنے والے سب کے خلاف سخت اقدام ہونا چاہیئے ساتھ ہی یہ بھی پتہ لگایا جانا چاہیئے کہ اتنی بڑی تعداد میں دھماکہ خیز مادہ سرحدی محافظوں کی نظروں سے بچ کر ملک میں کیسے داخل ہوا، خفیہ ایجنسیوں سے کہاں چوک ہوئی ان سب کی غیر جابندارانہ تحقیقات ہونی چاہئے اور ذمہ داروں کے خلاف سخت اقدام ہونا چاہئے تبھی آیندہ اس طرح کے واقعات پر روک لگ سکے گی ـ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker