ہندوستان

مسجد پر حملہ دہشت گردی ہے: مولانا محمود دریابادی

 

ممبئی ۱۵ مارچ، نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی مسجد النور میں بے گناہ نمازیوں پر وحشیانہ فائرنگ صریح اور برہنہ دہشت گردی ہے ـ
اس دہشت گردی کا شکار چالیس سے زیادہ بے گناہ مسلمان ہوئے، اس ہولناک واردات کا ویڈیو دیکھ کر رونگٹے کھڑے ہوجاتے ہیں، خاص طور پر اس لئے بھی کہ اس وقت مسجد میں بنگلہ دیش کی کرکٹ ٹیم بھی موجود تھی، اس سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ باقاعدہ پلان بناکر یہ حملہ کیا گیا ہے اور اس کی پلانگ بھی کسی ماہر دہشت گرد گروپ نے کی ہے جس میں بہت سے لوگ شامل ہوسکتے ہیں ـ
آَل علماءکونسل کے سکریٹری جنرل مولانا محمود دریابادی نے نیوزیلینڈ کے اس دہشت گردانہ حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے نیوزہلینڈ حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ فورا اس وحشیانہ حملے کی ذمہ داروں کو گرفتار کرکے برسرعام عبرت ناک سزا دی جائے ـ
مولانا دریابادی نے حملے کے بعد ہی سے مغربی میڈیا کی دہشت گرد کو ذہنی مریض قرار دینے کی کوششوں کی بھی مذمت کی اور ایسی کوششوں کو ہی عالمی پیمانے پر دہشت گردی میں اضافے کا سبب قرار دیا ـ مولانا نے تمام مسلم ممالک کے سربراہان سے بھی مطالبہ کیا کہ تمام مسلم ممالک اپنے تمام تر سفارتی رسوخ کا استعمال کرتے ہوئے نیوزیلینڈ حکومت کو دہشت گردوں کے خلاف سخت فورا سخت ترین اقدام کے لئے مجبور کریں ـ امریکہ، روس اور چین جیسے ممالک جوہمیشہ اپنے آپ کودہشت گردی سے مقابلے کا چمپیین قرار دیتے ہیں ان کو بھی اس غارت گیری کے خلاف سخت نوٹس لینا چاہیئے، مولانا دریابادی نے حکومت ہند کو بھی توجہ دلائی ہے کہ باقاعدہ نیوزیلینڈ کے سفیر کو دفتر خارجہ میں طلب کرکے اس وحشیانہ واردات کی مذمت کرے ـ

رابطہ: 9820135838

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker