ہندوستان

جامعۃ الابرار وسئی کے جمعیۃ الطلبہ کا سالانہ عظیم الشان پروگرام اختتام پذیر

ممبئی : 2 اپریل (پریس ریلیز) گذشتہ 30 مارچ 2019 سنیچر کی شام جامعہ الابرار ہوائ پاڑہ گورائ پاڑہ وسئ ایسٹ میں جمعیہ الطلبہ کے زیر اہتمام بزم ابو الحسن وبزم سلیمانی کا سالانہ اختتامی و مقابلہ جاتی اجلاس الحمدللہ پورے تزک و احتشام کے ساتھ زیر صدارت حضرت مولانا نذیر احمد ندوی( مہتمم دارالعلوم سلیمانیہ میراروڈ)منعقد ہوا۔
یکے بعد دیگرے مختلف عنوان سے طلبہ عزیز کا مسابقہ شروع ہوا ،سب سے پہلے بزم قرآنی میں حدر قرآن مجید کا مسابقہ ہوا اور حسب ترتیب محمد منور بن مطیع الرحمٰن، نظر الہدی بن ضیاء الہدی،محمد معراج بن محمد کلام مرحوم اول، دوم، سوم پوزیشن سے کامیاب قرار پائے ۔اسکے بعد بزم حسانی میں نعت خوانی کا مسابقہ شروع ہوا اورابو شحمہ بن محمد طیب (اول) محب اللہ بن سکندر (دوم)اور عبد المعید بن مسعود عالم (سوم)انعام کے مستحق قرار دیئے گئے،اسی طرح بزم ابو الحسن میں مساھمین طلبہ نے علم دین کی اہمیت پر اپنی اپنی تقریر پیش کرتے ہوئے محمد فیصل بن مظاہر اول ،رحمت اللہ بن محمد پیارے دوم اور محب اللہ بن سکندر سوم پوزیشن سے کامیاب ہوئے،واضح رہے کہ مندرجہ بالا تینوں مقابلے میں چھ چھ طلبہ شریک تھے.
حکم اول کے فرائض دارالعلوم عزیزیہ میراروڈ کے استاد حدیث مفتی توحید عالم قاسمی ،اور حکم ثانی کے فرائض جامعہ اشرف العلوم نالاسوپارہ کے مفتی محمد طیب قاسمی انجام دے رہے تھے۔
اجلاس کے ایک روز پہلے بزم سلیمانی میں مضمون نویسی کا مسابقہ بھی ہوا اور عبد المعید ،محمد فیصل، محمد قاسم حسب ترتیب اول دوم سوم انعام سے سرفراز ہوئے،اسی طرح املا نویسی میں محمد معراج، محمد مہتاب، محمد فرقان، روح اللہ حسب ترتیب فاتح قرار پائے ۔
اسکے علاوہ عربی تقریر، دلچسپ مکالمات بھی پیش کئے گئے۔
ان رنگا رنگ و خوش آہنگ پروگرام کے بعد امسال حفظ قرآن کی تکمیل کرنے والے چھ حفاظ کرام کے سروں پر دستار حفظ باندھی گئ اور پھر انکے اور مسابقے میں کامیاب طلبہ کے درمیان گراں قدر انعامات اکابر کے ہاتھوں تقسیم کئے گئے ۔
درمیان کی اس مختصر کارروائی کے بعد مفتی طیب قاسمی نے اپنے تاثرات پیش کرتے ہوئے ایک طرف جہاں طلبہ کے خوبصورت پروگرام پر اپنی مسرت کا اظہار فرمایا وہاں دوسری طرف عوام الناس خطاب کرتے ہوئے فرمایا کہ ہمارے نبی حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ و سلم نے فرمایا کہ عالم بنو یا متعلم بنو یا پھر علماء سے محبت کرنے والے بنو بصورت دیگر تمہاری ہلاکت کا اندیشہ ہے ،اس مدارس کو غنیمت جانتے ہوئے اس سے فائدہ اٹھائیں ورنہ کم از کم علماء سے محبت ضرور رکھیں ۔
مفتی توحید عالم قاسمی نے فرمایا علماء و طلبہ احساس کمتری کے ہرگز شکار نہ بنیں، آپ لوگ قرآن کو پڑھنے پڑھانے والے ہیں اور اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ و سلم نے فرمایا کہ تم میں سب سے بہتر وہ ہے جو قرآن سیکھے اور سکھائے،اگر آپ لوگ علم دین کے ساتھ سچے عامل بنینگے تو دنیا بھی آپ کے قدموں پر نثار ہوگی.
آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے زیر اہتمام میرا روڈ میں قائم دار القضاء کے قاضی مفتی صادق خان قاسمی نے علم دین کی اہمیت پر طلبہ کی بہترین تقاریر پر اپنی خوشی کا اظہار کرتے ہوئے فرمایا کہ آپ لوگ محنت کو اپنا وطیرہ بنائیں اور تجوید کی مکمل رعایتوں کے ساتھ قرآن کو اور بہتر سے بہتر پڑھنے کی کوشش کریں۔
مہمانوں میں سے قاری عظمت اللہ(مدرس دارالعلوم سلیمانیہ میراروڈ) ،مولانا رستم عادل قاسمی(مہتمم دارالعلوم زکریا نالاسوپارہ )قاری نور صاحب (امام تکیہ مسجد سوپارہ گاوں)نے اپنی اپنی خوبصورت آواز و انداز نعت پاک پیش کرکے خوب داد وصول کئے۔
اخیر میں صدر اجلاس حضرت مولانا نذیر احمد ندوی حفظہ اللہ (بانی و مہتمم دارالعلوم سلیمانیہ میراروڈ )نے اپنے صدارتی خطاب میں جامعہ ہذا کے ناظم مولانا شمیم اختر ندوی اور جملہ اساتذہ و منتظمین کو مبارک باد پیش کرتے ہوئے فرمایا کہ جامعہ الابرار میں آکر اور طلبہ کے پروگرام کو سن طبیعت باغ باغ ہوگئ اللہ آپ حضرات کی فکر و لگن کو قبول فرمائے اور اس نعمت عظمی کی قدر دانی کی توفیق عطا فرمائے، درحقیقت یہ اللہ کا بڑا فضل و کرم کہ کہ اللہ نے آپ سب کو علم دیں کی صیانت و حفاظت اور اسکی اشاعت و آبیاری کیلئے قبول فرمایا ہے۔جامعہ کے ناظم جوکہ ممبئ عظمٰی کی مشہور شخصیت کے مالک ہیں اور ایک علمی خاندان کے چشم و چراغ ہیں انشاءاللہ ان کی توجہ مزید رنگ لائے گی اور یہ ادارہ مزید بلندیوں تک پہونچیگا انشاءاللہ۔
اس اجلاس میں علماء و اکابر کی ایک بہت بڑی تعداد جلوہ افروز تھی، بطور خاص مفتی امتیاز قاسمی(منہاج السنہ ملاڈ،) قاری مرتضی صاحب و مولانا افضل قاسمی صاحب(دارالیتامی جوگیشوری )مفتی ابو الکلام قاسمی ، مولانا فیروز قاسمی ،مولانا جنید عالم قاسمی،مولانا فہیم اکرم ندوی صاحبان میرا روڈ، مولانا زین الحق صاحب ساکی ناکہ،مولانا اخلاق قاسمی و مولانا عبد الوحید قاسمی (دارالعلوم چنچوٹی نائیگاوں ) مفتی ابو الکلام مظاہری (خطیب و امام مرکز مسجد شکر محلہ سوپارہ گاوں )مولانا عبد الصمد قاسمی (مہتمم اشرف العلوم انصاری نگر نالاسوپارہ )مولانا واجد حسین قاسمی (جنرل سکریٹری جمعیہ علماء نالاسوپارہ)مولانا فیروز قاسمی(مہتمم مدرسہ تعلیم القران نالاسوپارہ)قاری کاشف صاحب و حافظ حسن صاحب (دارالعلوم فدائے ملت وسئ پھاٹا )مولانا وزیر عالم (مہتمم دارالعلوم محمدیہ ولئ پاڑہ نالاسوپارہ )مولانا شمشیر قاسمی(دارالعلوم رشیدیہ بلال پاڑہ) حافظ صلاح الدین (امام مسجد فادرواڑی )قاری کلیم اللہ (ایور شائن وسئ)مولانا احمد حسین قاسمی(مہتمم دارالعلوم احمدیہ پڑگتی نگر نالاسوپارہ) مولانا سعود عالم قاسمی ہوائ پاڑہ۔انکے علاوہ دانشوروں ،طلبہ کے والدین، اطراف و اکناف کے محبین کی ایک معتد بہ تعداد شریک اجلاس رہی۔
مشہور صاحب قلم جناب جمیل عبداللہ ہاشمی(بانی و ڈائریکٹر امام اعظم ٹرسٹ مینخ پاڑہ وسئ) اور انکے رفیق مولانا وسیم ندوی نہ صرف شریک اجلاس رہے بلکہ اپنے نیوز پورٹل زمینی سچائیاں پر یوٹیوب کی وساطت سے پورے پروگرام کو لائیو بھی دکھاتے رہے جس سے اجلاس کی افادیت دوچند ہوگئ. قاری نور صاحب کی رقت آمیز دعا کے ساتھ جلسہ اختتام پذیر ہوا.نظامت کے فرائض حافظ نوشاد صدیقی(مدرس جامعۃ الابرار )نے بحسن و خوبی انجام دیئے اور ناظم صاحب مولانا شمیم اختر ندوی نے کلمات تشکر پیش کئے۔

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker