ہندوستان

یونین بینک میں بی جے پی کارکنوں کا ہنگامہ

گارڈ کے ذریعے بی جے پی شہر صدر کے ساتھ بدسلوکی کا الزام

دیوبند۔ ۱۵؍اپریل: (رضوان سلمانی) بینک میں کسی کام سے جانے والے بی جے پی کے شہر صدر اور گارڈ کے درمیان تلخ کلامی ہونے کی اطلاع کے بعد بی جے پی کے کارکنان نے بینک کے باہر زبردستہ ہنگامہ آرائی کی۔ اس واقعہ کی اطلاع ملتے ہی پولیس بھی موقع پر پہنچ گئی اور اس نے بی جے پی کے لیڈران کوسمجھا بجھاکر معاملہ کو رفع دفع کرانے کی کوشش کی اور دونوں فریقوں کو کوتوالی میں بات چیت کے لئے بلالیا۔ تفصیلات کے مطابق بی جے پی کے شہر صدر گجراج رانا ریلوے روڑ پر واقع یونین بینک میں کسی کام سے گئے تھے بینک کا مین گیٹ بند ہوجانے کی وجہ سے جب انہوں نے گیٹ پر تعینات گارڈ سے گیٹ کھولنے کو کہا تو گارڈ نے پبلک ڈیلنگ کاوقت ختم ہوجانے کی بات بتاتے ہوئے گیٹ کھولنے سے صاف انکار کردیا، جس کے بعد بی جے پی کے شہر صدر اور گارڈ کے درمیان تلخ کلامی ہوگئی بعد ازاں دونوں کے درمیان جھڑپ بھی ہوئی اس معاملہ کی اطلاع ملتے ہی بی جے پی کارکنان بڑی تعداد میں بینک کے باہر جمع ہوگئے اور انہوں نے بینک اور بینک انتظامیہ کے خلاف جم کر نعرے بازی کی اس ہنگامہ آرائی کی اطلاع ملتے ہی پولیس موقع پر پہنچ گئی اور اس نے تمام معاملہ کی تفصیلات معلوم کرنے کے بعد بی جے پی کے لیڈران اور کارکنان کو بڑی مشکل سے سمجھا بجھاکر خاموش کیا۔ شہر صدر گجراج سنگھ رانا نے کہا کہ مقامی بینک میں کسانوں اور عام صارفین کے ساتھ مسلسل بداخلاقی کا مظاہرہ کیا جارہا ہے۔ وہیں دوسری جانب بینک کے گارڈکشل پال نے بتایا کہ بینک کے قوانین پر عمل کرتے ہوئے انہوں نے ٹھیک وقت پر گیٹ بند کردیا اور بی جے پی لیڈر کو گیٹ نہ کھولنے کی وجہ بتائی، لیکن گجراج رانا نے تمام باتیں سننے کے بعد بھی اس کے ساتھ بہت برا رویہ اختیارکیا۔ تفصیلات معلوم کرنے کے بعد پولیس نے بینک کے افسر اورگارڈ کو کوتوالی میں طلب کرلیا اور جھگڑا کرنے والے بی جے پی لیڈر اور کارکنان کو بھی بلالیا۔ دیر شام تک دونوں کے درمیان صلح صفائی سے متعلق بات ہوتی رہی۔ یونین بینک کے منیجر اوم پرکاش پنڈت نے بتایاکہ پورے معاملہ کی جانچ کرائی جارہی ہے۔ تمام تفصیلات معلوم ہونے کے بعد ہی کوئی رائے زنی کی جاسکتی ہے۔ وہیں برانچ منیجر کا کہنا ہے کہ بینک صارفین کے ساتھ کسی قسم کی کوئی بد سلوکی نہیں کی جاتی اور تمام صارفین کو ایک جیسی سہولیات مہیا کی جاتی ہیں۔تفریق والی کوئی صورت حال پیدا ہونے نہیں دی جاتی۔ انہوں نے بی جے پی کارکنان کی جانب سے لگائے گئے تمام الزامات کو بے بنیاد بتایا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker