ہندوستان

انسانیت کا درد محسوس کرنے والا برمی مہاجرین کے حالات زندگی کی فکر کریں: غیور احمد قاسمی

نئی دہلی:16/مئی (بی این ایس)

روہنگیائی مظلوم مسلمانوں کو کسمپرسی اور بے بسی کے حالات میں نہ چھوڑیں درد مند حضرات ان برمائی مہاجرین کی بدحالی اور مظلومیت وحسرت تنگدستی کے حالات سے قوم وملت کے ذمہ دار مساجد کے ائمہ کرام کمیٹیوں کے صدوروسکریٹری مدارس کے ذمہ داران ومہتمم سب واقف ہیں برمی مہاجرین کے پاس مستقل کوئی روزگار نہیں اپنے بچوں کی پرورش کرنے کے لئے یہ لوگ انتہائی پریشان ہے۔ بچوں کے علاج معالجہ ہو یا تعلیم وتربیت ان بے کسوں کا کوئی معقول نظم نہیں ہے برمی مہاجرین کے ہر کیمپ میں بیوائیں ہیں یتیم بیچ ہیں معذور وبیمار لوگ ہیں ان کے پاس ضروریات زندگی کے اسباب نہیں ہے اتم نگر، بدیلہ، رن ھولہ، کھجوری بلاک اے، کنچن پارک ، شاہین باغ، کالندی کنج، فرید آباد سکیٹر 86، نوح نگلی، متھرا وغیرہ میں روہنگیا پناہ گزیں ہیں شدید گرمی کے حالات میں ان لوگوں کے لئے پنکھے، کولر، پینے کا پانی، افطار وسحر کے لئے ضروری اشیا یا نقد رقم وغیرہ کا نظم کرنا مخیر حضرات ومالدار لوگوں کی ذمہ داری ہے مولانا غیور احمد قاسمی نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ سماجی خدمت گاروں کو روہنگیائی کیمپوں کا دورہ کرکے ان کی مشکلات وضروریات کا انتظام کریں مذہب اسلام میں بڑی فضیلت ہے محسن انسانیت نبی پاک صلی اللہ علیہ وسلم پر پہلی وحی نازل ہونے کے بعد اپنی کیفیت جب اللہ کے نبی نے ام المؤمنین سیدہ خدیجہ الکبریؓ کو بتائی تو انہوں نے پیارے نبی کی زندگی چھ جملوں میں بیان کردی وہ تمام حقوق العباد سے متعلق ہے (۱)آپ صلہ رحمی کرتے ہیں (۲) سچی بات کی تصدیق کرتے ہیں (۳) دوسروں کا بوجھ اٹھاتے ہیں (۴) بے سہارا کا سہارابنتے ہیں (۵) مہمان نوازی کرتے ہیں (۶) ہر حق والے ساتھ دیتے ہیں۔
کھجوری کے تحت راجیو نگر کے سی بلاک میں پناہ گزیں روہنگیائی 20 خاندانوں کے معصوم بچوں میں کپڑے اور مردوخواتین میں افطار کا سامان سمیت کپڑے تقسیم کئے جس سے مستحقین نے راحت کی سانس لیتے ہوئے علما کرام کے اقدام کی ستائش کی ۔ تقسیم کے عمل کو مولانا محمد غیور قاسمی ، مولانا اسلام الدین قاسمی ، قاری سعید میرٹھی ،کمال اور محترمہ یاسمین نے اپنے ہاتھوں سے انجام دیا ۔اس موقع پر مولانا محمد غیور قاسمی نے کہا کہرمضان المبارک کا پہلا عشرہ ہے اور پھرلوگ عید کی تیاریوں میں مصروف ہوجائیں گے جس کے مد نظر روہنگیائی پناہ گزینوں کو ضروریات زندگی کی اشد ضرورت ہے جس میں افطار کٹ ، کھانے پینے کی اشیا سمیت دال چاول ، آٹا چینی ، تیل ، سوئیا ںمسالہو معصوم بچوں کے لئے دودھ پائوڈر،بسکٹ کی سخت ضرورت ہے ۔انہوں نے مخیر اصحاب حیثیت لوگوں کومتوجہ کرتے ہوئے کہا کہ مستحقین کی مدد کے لئے جددو جہد کرنا بارگاہ ایزدی میںمحبوب عمل ہے جس سے غفلت کا مظاہر ہ نہیں کرنا چاہئے۔انہوں نے مزید کہا کہ جو بندہ حاجت مندوں کی ضروریات کو پورا کرنے میں مصروف رہتا ہے اللہ تعالیٰ اس کی غیبی مدد فرماتا ہے اورایسے افراد کا مقام دنیا اور آخرت میں بلند ہوتا ہے ۔

Tags

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker