ہندوستان

سیتامڑھی صدر ہسپتال میں ڈاکٹروں کی لاپرواہی کی وجہ سے ڈیلیوری کے درمیان لڑکی کی موت

سیتا مڑھی ( عنا یت اللہ ندوی/ بصیرت آن لائن) رامپور خرد، تھانہ پوپری ضلع سیتامڑھی بہار کے باشندے ایاز قریشی صاحب کی بچی کو آج صبح ساڑھے تین بجے ڈیلیوری کے لیے سیتامڑھی شہر صدر ہسپتال میں داخل کرایا گیا تھا وہاں ڈاکٹروں نے ان سے زچگی کیلیئے پیسے مانگے جب انہوں نے یہ کہہ کرپیسہ دینے سے انکار کر دیا کہ یہ تو سرکاری ہسپتال ہے اور یہاں سب کا علاج مفت ہوتا ہے تو وہاں کے ڈاکٹروں نے اس بچی کے ساتھ غیر انسانی سلوک کیا اور اسکا علاج نہیں کیا بلکہ اس کو ولادت کے درمیان ٹرپتا ہوا چھوڑ کر فرار ہوگئے، جس کی وجہ سے بچی کی موقعہ پر ھی اندوہناک موت ہوگئی، جہاں صبح سے ہی لوگوں کی بھیڑ دیکھنے کو مل رہی ہے. وہیں سیتا مڑھی صدر ہسپتال کے ڈی ایس ڈاکٹر انجم اور منیجر وجے چندر جھا مستقل کیمپ کئے ہوئے ہیں. دوسری جانب مقتول کے اہل خانہ معاؤضہ کے ساتھ ساتھ مجرم کو سخت سے سخت سزا دینے کی مانگ کی ہے. واضح رہے کہ اس قبل بھی سیتا مڑھی صدر ہسپتال میں اور دیگر صدر ہسپتالوں میں بھی اس طرح کے درناک واقعہ اکثر و بیشتر دیکھنے کو ملتے رہے ہیں. حقیقتاً یہ سرکاری ہسپتال اس لئے قائم کیا گیا ہے تاکہ یہاں سے غرباء و مساکین فائدہ اٹھا سکیں لیکن یہاں تو ان کے ساتھ سوتیلاپن کیا جاتا ہے.

نمائندہ سے گفتگو کرتے ہوئے ڈی ایس مسٹر انجم نے کہا کہ مجھے تقریباً آٹھ بجے یہ درناک حادثہ کی اطلاع ملی کہ ایک بچی جو رامپور خرد ٹھانہ پوپری ضلع سیتامڑھی کی رہنے والی ہے وہ ڈیلیوری کے لئے صدر ہسپتال آئی تھی جہاں دوران ڈیلیوری صبح ساڑھے چھ بجے اپنے مالک حقیقی سے جاملی. جب نمائندہ نے مسٹر انجم سے یہ پوچھا کہ مقتول کے اہل خانہ کے جانب سے یہ الزام لگایا جارہا ہے کہ ڈاکٹروں نے ان سے ساٹھ ہزار رقم دینے کے لئے کہا تو ان کے اہل خانہ چار ہزار روپیہ دینے کے لئے تیار تھے لیکن ڈاکٹروں نے لینے سے انکار کردیا اس بات پر مسٹر انجم نے کہا کہ اگر واقعی یہ بات سچ ہے اور مقتول کے اہل خانہ مجھے تحریری شکل میں لکھ کر دیتے ہیں تو کاروائی کرنے کی پوری کوشش کرونگا. وہیں نمائندہ سے گفتگو کرتے ہوئے منیجر وجے چندر جھا نے کہا کہ یہ واقعہ جو رونما ہوا ہے اسے تو,اب واپس نہیں لایا جاسکتا البتہ مجرمین پر سخت سے سخت کاروائی کی جائےگی اور ان لوگوں سے تحریری شکل میں درخواست لی جارہی ہے. وہیں بچی کی لاش کو پوسٹ مارٹم کیلیئے لے جایا گیا ھے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker