ہندوستان

اللہ کے احکام کو مان کر چلیں مسلمان: مولانا مشتاق احمد قاسمی

 

کانپور6/جولائی ( سیف الاسلام مدنی)
5/جولائی بروز جمعہ سنہ 2019 کو بعد نماز عشا ء مدرسہ عربیہ مدینۃ العلوم نور گنج پکھرایاں میں ایک روزہ عظیم الشان فیضان مصطفیٰ ﷺ کانفرنس
منعقد ہوئی جس کی صدارت فرما رہے نمونہ اسلاف جناب حضرت مولانا مشتاق احمد قاسمی نے خطاب کرتے ہوئے فرمایا کہ اللہ رب العٰالمین نے پوری کائنات کو اپنی قدرت کاملہ سے،پیدا کیا ہے،پوری کائنات میں اللہ ہی کا حکم چلتا ہے، اللہ تعٰالی نے بے شمار مخلوقات کو اس دنیا میں پیدا کیا ہے، مگر ان میں انسانوں اور جناتوں کو اپنی عبادت کے لئے منتخب فرمایا،
پوری دنیا کے انسانوں کو اللہ رب العزت کے احکامات پر عمل پیرا ہونا چاہئے، اور اللہ ہی کی طرف رجوع کرنا چاہئے، اسی میں دونوں جہان کی کامیابی ہے،
جلسہ کو خطاب کرتے ہوئے مہمان خصوصی جناب مولانا نعمت اللہ صاحب قاسمی راجپوری نے کہا کہ اللہ نے اس دنیا میں انسانیت کی رشدو ھدایت کے لئے بہت سے انبیاء کو بھیجا اور آخر میں سید المرسلین محمد صلی اللہ علیہ وسلم کو بھیجا،تاکہ وہ دنیا میں انسانوں کو راہ راست دکھائیں، ظلم وستم میں گھری ہوئی دنیا کو ظلم سے نکال کر کفرو شرک کی تاریکی سے نکال کر، ایمان کا نور نصیب کریں،ہمارے نبی حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم سرزمین عرب کے شہر مکہ میں تشریف لائے، جہاں آپکے جد امجد سیدنا ابراہیم علیہ السلام نے اللہ کے حکم سے خانہ خدا کی تعمیر کی تھی، آپکی پوری زندگی، آزمائش و امتحان میں گزری اور آپ ہر امتحان اور آزمائش میں ثابت قدم رہے اور کامیابی حاصل کی، کہ مکرمہ آپکے ذریعہ ہی آباد ہوا، اللہ کے حکم سے سیدنا ابراہیم علیہ السلام نے اپنے بیوی ہاجرہ اور اپنے لخت جگر اسماعیل کو مکہ مکرمہ میں چھوڑ دیا تھا جہاں نہ کھانا تھا نہ پانی، نہ سبزہ نہ آبشاریں، بالکل چٹیل میدان تھا،
حضرت ابراہیم علیہ السلام اپنے ساتھ کچھ کھجور اور پانی کے مشک ساتھ لے کر گئے تھے جو جلد ہی ختم ہوگئے اور اسماعیل علیہ السلام پیاس سے پریشان ہونے لگے اسوقت حضرت ہاجرہ پانی کی تلاش میں نکلی اور واپس آئیں تو دیکھا کہ اسماعیل کے ایڑیوں کی جگہ پانی کا چشمہ پھوٹاہوا ہے،
حضرت ابراہیم اور اسماعیل علیہ السلام نے خانہ خدا کی تعمیر شروع کی.اور جب تعمیر مکمل ہوچکی تو ابراھیم علیہ السلام نے صدا لگائی، کہ اے لوگوں اس گھر میں آو اور اللہ کی عبادت کرو، یہی حج ہے، جو ابراہیم علیہ السلام کی اداؤں کا نام ہے حضرت ہاجرہ کی وفاووں کا نام ہے ‘
مفتی شاہد قاسمی نے بھی خطاب کیا ‘
مولانا فضل رب قاسمی و محمد ثانی نے نعت پاک ہدیہ پیش کیا کانفرنس میں حافظ محمد سیف الاسلام مدنی مولانا عبد الواجد قاسمی قاری محمد سفیان صاحب، مولانا خالد قاسمی حافظ و قاری محمد نعیم عرفانی حافظ محمد احسان الحق صاحب خاص طور سے شریک رہے نظامت کے فرائض نقیب ہندوستان مولانا عبدالماجد قاسمی نے انجام دئیے اور کثیر تعداد میں لوگوں نے شرکت کر کے پروگرام کو کامیاب بنایا !

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker