ہندوستان

بی جے پی حکومت بنگال کو ٹارگیٹ کررہی ہے،جھوٹے پروپیگنڈے کے تحت ممتا بنرجی کو بدنام کیا جارہاہے: مولانا صدیق اللہ چودھری

 

دیوبند، (سمیر چودھری) ٹی ایم سی حکومت میں وزیر اور جمعیة علماءبنگال کے صدر مولانا صدیق اللہ چودھری نے کہاکہ مرکز کی بی جے پی حکومت بنگال کو ٹارگیٹ کرکے کام کر رہی ہے، مغربی بنگال ملک کی پہلی ایسی ریاست ہے جو سخت ترین حالات کا ڈٹ کر مقابلہ کررہی ہے، وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی کسی بھی صورت میں بنگال کے حالات خراب نہیں ہونے دیں گی، انہوں نے کہاکہ بنگال ایک سیکولر صوبہ ہے، جہاں بی جے پی اور آر ایس ایس کے غنڈے ماحول خراب کر رہے ہیں؛ لیکن ہمارا مقصد صوبے میں امن و امان اور بھائی چارے کو برقرار رکھنا ہے۔ ترنمول کانگریس کے سینئر لیڈر اور ممتا بنرجی حکومت میں ماس ایجوکیشن، پارلیمانی امور اور لائبریری سروسز کے وزیر مولانا صدیق اللہ چودھری آج یہاں مدنی منزل میں جمعیة علماءہند کے صد سالہ پروگرام کی تیاریوں سے متعلق مقامی نامہ نگاروں سے گفتگو کر رہے تھے۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ بی جے پی ترنمول کانگریس کے خلاف جھوٹا پروپیگنڈہ پھیلارہی ہے اور اسی پروپیگنڈے کے تحت وہ بنگال حکومت کو بدنام کر رہی ہے ۔انہوں نے کہاکہ بی جے پی سے ہر طبقہ پریشان ہے، مگر اس نے مذہب کے نام پر ایک طبقے کو ذہنی یرغمال بنا کر ووٹ حاصل کیا، جس میں ای وی ایم کا بھی بڑا کمال ہے؛ لیکن آئندہ اسمبلی انتخابات میں ایک مرتبہ پھر ترنمول کانگریس بھرپور کامیابی حاصل کرےگی اور بی جے پی کو بنگال میں کچھ حاصل نہیں ہوگا؛ کیونکہ لوگ بی جے پی کی پالیسی کو بہت اچھی طرح سمجھ چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بنگال حکومت مودی سرکار کے غیر آئینی امور کو قطعی برداشت نہیں کرےگی اور ان کے خلاف ہر ممکن اقدامات کرےگی۔ انہوں نے کہاکہ بی جے پی کی جھوٹے وعدوں اور جملے کی سرکار ہے، جب کہ ٹی ایم سی ہمیشہ عوام کے مفاد کے تحت کام کرتی ہے اور اپنے تمام وعدوں کو پورا کرتی ہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ بنگال کے حالات اترپردیش سے بالکل مختلف ہیں آئندہ اسمبلی انتخابات کے بعد وہاں بی جے پی کا وجود بھی نہیں بچ پائےگا۔ انہوں نے کہاکہ حال میں امریکا سے خبر آئی ہے کہ ہندوستان میں بجرنگ دل دہشت گرد تنظیم ہے۔ مولانا صدیق اللہ چودھری نے کہاکہ وزیر داخلہ نے خط لکھ کر بنگال کے مدارس پر دہشت گردی کاالزام لگایا تھا، جس پر ممتا بنرجی نے تحریری جواب میں کہاکہ بنگال کے کسی ایک مدرسے میں بھی دہشت گردی کا کوئی ثبوت نہیں ہے جس پر وہاں کی تمام اپوزیشن پارٹیاں متحد ہیں۔ اس دوران جمعیة علماءہند کے سکریٹری مولانا حکیم الدین قاسمی، مہاراشٹر کے صدر مولانا ندیم صدیقی، صوبائی سکریٹری مولانا محمد مدنی، ضلع نائب صدر مولانا فرید مظاہری، سید ذہین احمد، مولانا ابراہیم قاسمی وغیرہ موجود رہے۔

.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker