ہندوستان

متھلانچل سمیت مغربی و مشرقی چمپارن میں سیلاب کا قہر جاری

 

۳۴ ؍لوگوں کی موت، دربھنگہ میں پھر پشتہ ٹوٹنے سے ہزاروں افراد متاثر، ریلوے نظام ٹھپ ، وزیراعلیٰ ہر متاثرین کو ۶۰۰۰ راحتی امداد دیں گے

دربھنگہ؍مظفر پور۔ ۱۷؍جولائی: (رفیع ساگر) شمالی بہار میں سیلاب سنگین رخ اختیار کرتا جارہا ہے۔ بوڑھی گنڈک، گنڈک و لکھندئی کے سطح آب میں تیزی سے اضافہ ہورہا ہے اس سے مظفر پور، سیتا مڑھی، شیوہر،دربھنگہ مغربی چمپارن، مشرقی چمپارن ضلع میں پانی ہر دن نئے علاقوں میں پھیل رہا ہے۔ دربھنگہ کے جالے حلقہ میں کھیروئی ندی کا مشرقی پشتہ موریٹھا و ملکی کے پاس ٹوٹنے سے پانچ پنچایتیں متاثر ہوگئی ہیں، دربھنگہ سیتا مڑھی ریلوے روٹپر کمتول جوگیارہ کے درمیان ریل پل ۱۸ کے پاس سیلاب کا پانی خطرے کے نشان سے اوپر بہنے سے ٹرینوں کی آمدروفت بند کردی گئی ہے۔ سیلاب کے پانی میں ڈوبنے سے اب تک ۳۴ لوگ جاں بحق ہوگئے ہیں۔ مہلوکین میں دربھنگہ کے دو، مظفر پور کے چار، موتیہاری کے ایک ، سیتامڑھی کے دو، شیوہر کے آٹھ، مدھوبنی کے ۶؍پورنیہ کے ۹ اور کٹیہار کے دو لوگ شامل ہیں۔ اطلاعات کے مطابق مظفر پور شہری علاقوں میں تیزی سے پانی داخل ہورہا ہے جس سے لوگوںمیں تشویش کی لہر ہے، مشرقی ومغربی چمپارن کے چھ بلاکوں کا ضلع ہیڈکوارٹر سے سڑک کا رابطہ ٹوٹ گیا ہے۔ وزیر اعلیٰ نتیش کمار نے اعلان کیا ہے کہ ۱۹ جولائی سے باڑھ متاثرہ علاقوں کے ہر خاندان کو چھ روپیہ ملے گا۔ ابھی ریاست کے ۱۲ ضلعوں کے ۲۶ لاکھ افراد سیلاب سے متاثر ہیں۔ این ڈی آر ایف کی ۲۶ کمپنیاں اب تک سوا لاکھ لوگوں کو محفوظ مقامات تک پہنچا شکی ہیں۔پٹنہ سے والمیکی نگر تک گنڈکے ندی کے پشتوں کا نتیش کمار نے ہوائی جائزہ لیا۔ شمالی بہار میں سیلاب کے پانی میں ڈوبنے سے ۲۳ لوگوں کی موت ہوگئی ہے، دربھنگہ ضلع کے اجان گائوں کے دو بھائی این ایچ 57کے پاس کملا ندی کی طغیانی میں سوموار کو ہی بہہ گئے تھے ان میں ایک آشو کرن 20کا کچھ پتہ نہیں چلا، جبکہ دوسرے کسو 23کی لاش ودیشور استھان علاقے سے ملی ہے۔ مظفر پور میں 4 موتیہاری میں ایک، سیتا مھڑی میں دو، شیوہر میں آٹھ لوگوں کی ڈوبنے سے موت کی اطلاعات ہیں، مدھوبنی کے جھنجھار پور میں تین ، لندنیا میں ایک مدھے پورا اور ہرلاکھی میں ایک کی موت ہوگئی ہے۔ مظفر پور ضلع کے اورائی کٹرا و گیا گھاٹ بلاک میں سیلاب کی صورتحال سنگین ہے، کٹرا بلاک کا سڑک رابطہ رکا ہوا ہے، تین علاقوں کی ۱۷ پنچایتوں کے ۶۵ گائوں میں پانی داخل ہوچکا ہے۔ کٹرا کے ۱۸ اور گیاگھاٹ بلاک کے ۶ پنچایتوں کا سڑک رابطہ ٹوٹ گیا ہے۔ وزیر اعلیٰ نتیش کمار نے پٹنہ سے والمیکی نگر تک گنڈک ندی کے پشتوں کا ہوائی جائزہ لیا، انہوں نےگوپال گنج کے قریب روپنچھاپ اور سمہرا دھار کے پشتوں کی خصوصی نگرانی اور سدھار کا حکم دیا۔ وزیراعلیٰ نے مشرقی چمپان کے چنپٹیا اور نرکٹیا گنج جبکہ مغربی چمپارن کے رمگڑھوا ، سگولی اور بنجریاعلاقوں کا بھی ہوائی دورہ کیا۔ سیلاب متاثرہ علاقوں میں 9ویں دسویں کے سہ ماہی امتحانات موخر کردئیے گے ہیں۔ نویں کلاس میں اندراج کی آخری تاریخ ۳۱ جولائی کردی گئی ہے، منگل کو ثانوی تعلیم کے ڈائریکٹرگرور دیال سنگھ نے اس تعلق سے سبھی ضلع تعلیمی عہدیداران کو خط روانہ کیا ہے۔

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker