ہندوستان

سیلاب کے پانی میں ڈوب جانے سے 9 ویں جماعت کے طالب علم سمیت تین بچوں کی موت

دربھنگہ۔ ۲۲؍جولائی: (رفیع ساگر) سمری اور جالے تھانہ علاقہ کے الگ الگ گاوں میں پیر کو سیلاب کے پانی میں ڈوب جانے سے 9 ویں کے طالب علم سمیت 3 بچوں کی موت ہوگئی ہے۔این ڈی آر ایف کی ٹیم نے کافی مشقت کے بعد لاشوں کو باہر نکالا۔خبر کے مطابق سمری تھانہ کے رام چیلا محلہ میں غسل کرنے کے دوران کرشن موہن ٹھاکر کا لڑکا 13 سالہ سائی ناتھ ٹھاکر اچانک سیلاب کے پانی کے تیز دھارے میں بہہ گیا۔جیسے ہی اس کے ڈوب جانے کی خبر عام ہوئی تلاش شروع ہوئی لیکن کوئی سراغ نہیں مل سکا ۔بعد میں بلاک انتظامیہ نے این ڈی آر ایف کی ٹیم کو لاش کی تلاش میں لگایا جس نے لافی جدوجہد کے بعد لاش کو برآمد کیا۔سائی ناتھ مقامی سمری ہائی اسکول میں 9 ویں جماعت میں پڑھتا تھا۔اس کی موت پر گھر میں کہرام مچا ہوا ہے۔وہیں شوبھن میں شبیر نداف کی ڈھائی سالہ بچی صابرین کی موت سیلاب کے پانی میں ڈوب جانے سے ہوگئی۔صابرین گھر کے قریب کھیلنے کے دوران سیلاب کے پانی میں گر گئی تھی جب تک اس کو باہر نکالا گیا اس کی موت ہوچکی تھی۔اسی طرح جالے بلاک کے راڑھی شمالی پنچایت کے بھنورپورہ میں سیلاب کے پانی میں ڈوب جانے سے للت یادو کے 3 سالہ لڑکے کندن کمار کی موت ہوگئی۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ کندن محلہ کے دیگر 4 بچوں کے ساتھ سیلاب کے پانی میں نہارہا تھا تبھی وہ گہرے پانی میں ڈوب گیا۔حالانکہ 4 بچے باہر نکلنے میں کامیاب رہے۔کندن کے اہل خانہ کے مطابق مقامی غوطہ خوروں کے ساتھ این ڈی آر ایف کی ٹیم نے لاش کو تلاش کر باہر نکالا۔بعد میں جالے تھانہ انچارج شیو کمار یادو نے موقع پر پہنچ کر لاش کو اپنی تحویل میں لیا اور پوسٹ مارٹم کے لئے دربھنگہ میڈیکل کالج اسپتال بھیج دیا۔

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker