ہندوستان

حضرت مولانا محمد یوسف متالا تاریخ اور دلوں کے صفحات پر ہمیشہ زندہ و جاوید رہیں گے

 

برطانیہ کے معروف عالم دین اور شیخ الحدیث مولانا زکریا رحمۃ اللہ علیہ کے خلیفہ مولانا یوسف متالا کے انتقال پر ملال پر دارالعلوم وقف دیوبند کے مہتمم حضرت مولانا محمد سفیان قاسمی کا اظہارِ تعزیت

دیوبند : 9 ستمبر (پریس ریلیز)

برطانیہ کے شہر بلیک برن کے مقیم برادر محترم و مکرم جناب حضرت مولانا محمد ہاشم صاحب مدظلہ کے پیغام سے ابھی ابھی یہ المناک خبر موصول ہوئی ہے کہ جماعت علمائے حق کی بزرگ ترین صاحب تقوی وورع شخصیت حضرت اقدس مولانا محمد یوسف متالا صاحب رحمہ اللہ کینیڈا کے وقت کے مطابق شام 8 بج کر 20 منٹ پر اس دارفانی سے رخصت ہو کر بارگاہِ اقدس میں آسودہ رحمت ہوگئے، اور اس طرح ایک بامقصد اور بامعنی زندگی اللہ تعالیٰ کی ناقابل تبدیل سنت کے مطابق اپنے حسن اختتام کو پہونچ گئی ہے. اناللہ وانا الیہ راجعون.

حق تعالیٰ حضرت رحمۃ اللہ علیہ کو اعلیٰ علیین میں مقام کریم سے سرفراز فرمائیں اور اس شدید صبر آزما مرحلے کے موقع پر جملہ اہل خانہ و خانوادہ اور جماعت کے تمام دیگر متعلقین و منتسبین کو صبر جمیل کی توفیق عطا فرمائے آمین یا رب العالمین.

برطانیہ میں جب بھی حضرت سے ملاقات کا شرف حاصل ہوتا تھا تو دو باتیں ہمیشہ گردش خیال میں رہتی تھیں کہ حضرت رحمۃ اللہ علیہ کی شخصیت میں حق تعالیٰ نے علم و تقویٰ اور اخلاق حسنہ کا ایک بہترین امتزاج رکھا ہے جس نے شخصیت کو ایسا جذاب بنادیا ہے کہ حضرت رحمۃ اللہ علیہ کی صحبت بافیض میں ایک صاحب دل کے قول کا عکس مشاہد صورت میں جھلکتا محسوس ہوتا تھا، پوچھنے والے نے پوچھا کہ بڑے آدمی کی تعریف کیا ہے؟ جواب آیا کہ جس کی صحبت میں بیٹھ کر کوئی شخص اپنے آپ کو چھوٹا محسوس نہ کرے، حقیقت واقعہ یہ ہے کہ حضرت رحمہ اللہ کی صحبت میں رہ کر ہر کوئی ایسا ہی محسوس کرتا تھا کہ جیسے ان کے انگ انگ سے اخلاص و محبت کے رنگ پھوٹ رہے ہوں، ہر ادا و انداز سے شفقت و رافت کے چشمے ابلتے محسوس ہوتے تھے اور ان سب رنگوں میں سب سے غالب سب سے برتر اور سب سے اعلیٰ رنگ صبغۃ اللہ یعنی اللہ کا رنگ تھا، ومن احسن من اللہ صبغۃ. حضرت رحمۃ اللہ علیہ کا وجود مسعود سرتاپا صبغۃ اللہ سے عبارت تھا، اس میں کوئی دو رائے نہیں ہے کہ حضرت رحمۃ اللہ علیہ کا شمار جماعت کے ان اکابر میں تھا جو اپنے تبحرعلمی و تفوق عملی، فہم و بصیرت، جدوجہد، حسن کردارواعمال اور اعلیٰ اخلاق و اخلاص کے سبب وفات پاجانے کے باوجود صدیوں اور نسلوں تک بھی دل و دماغ میں نسیا منسیا نہیں ہوتے ہیں بلکہ تاریخ اور قلوب کے صفحات پر ہمیشہ زندہ جاوید رہتے ہیں اور یہی وہ لوگ ہیں جوکہ کرہ ارض پر انسانوں کی بھیڑ میں اشرف المخلوقات اور خلیفۃ اللہ فی الارض کے عظیم تر لقب سے ملقب ہونے کا استحقاق بھی رکھتے ہیں اور منجانب حق جل مجدہ ان کو یہ شرف عظیم بھی حاصل ہوتا ہے… یہ رتبہ بلند ملا جس کو بھی مل گیا..

دارالعلوم وقف دیوبند کا ماحول اس المناک خبر سے سوگوار بھی اور مصروف دعا و ایصال ثواب بھی، حق تعالیٰ ان دعاؤں کو شرف قبولیت سے سرفراز فرماتے ہوئے حضرت رحمۃ اللہ علیہ کے لئے ترقی درجات کا وسیلہ بنادیں. آمین ،میں اپنی اور جماعت دارالعلوم وقف دیوبند کی جانب سے جملہ اہل خانہ، اعزاء واقارب اور متعلقین کی خدمت میں تعزیت مسنونہ پیش کرتا ہوں…

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker