ہندوستان

کالے جادو سے بچنے کے لیے تین سالہ بچی کا قتل، ملزم گرفتار، وہ دوست کی جڑواں بیٹیوں کو مارنا چاہتاتھا

ممبئی۔ ۹؍ستمبر: (اسٹاف رپورٹر) جنوبی ممبئی کے قلابہ علاقہ میں ایک شخص پر اپنے دوست کی تین سالہ معصوم بیٹی کو ساتویں منزلے سے پھینک کرجان سے مارنے کا الزام لگا ہے۔ پولس کو اس معاملے میں جادو ٹونے کا شک ہے۔ ملزم شخص کےگھر سے ملے ایک کاغد پر لکھا ہے ’اپنی زندگی بچانےکےلیے جڑواں بچوں کو مارڈالو‘ پولس کے مطابق چگانی (۴۳) اس بچی کی جڑواں بہن کو بھی اسی طرح مارنے کا منصوبہ بنارہا تھا کیو ںکہ اسے شک تھا کہ اس پر کسی نے کالا جادو کردیا ہے جس سے بچنے کےلیے صرف ایک ہی طریقہ ہے اور وہ ہے جڑواں بچوں کی بلی۔ پولس نے ابتدائی طور پر چگانی کے خلاف آئی پی ایس کی دفعہ ۳۰۲ کے تحت قتل کامعاملہ درج کیا تھا لیکن اب وہ مہاراشٹر نربل، اگھوڑی اور کالا جادوروک تھام ایکٹ ۲۰۱۳ کی دفعات بھی لگانے پر غور کررہی ہے۔ پولس کے مطابق سنیچر کو انیل نے اپنے بچپن کے دوست پریم لال ہاتی رمانی (۴۴) سے کہا کہ اسے اپنے قلابہ کے اشوکا اپارٹمنٹ والے فلیٹ میں اکیلا پن محسوس ہورہا ہے اس لیے وہ اس کے تینوں بچوں کو اپنے یہاں لے جاناچاہتا ہے۔ پریم لال نے تینوں بچوں جے (۶)، شریا (۳) اور شانیا (۳) کےساتھ نوکرانی کاکولی منڈل کو بھی بھیج دیا تھا کیوںکہ بچے پہلی بار انل کے گھر رہنے جارہے تھے۔ چگانی نے بچوں کو چاکلیٹ دی اور شام سوا سات بجے شانیا کا ہاتھ دھلوانے کےلیے اسے اپنے بیڈروم میں لے گیا، جہاں اس نے کھڑکی کے راستے شانیا کو ساتویں منزل سے نیچے پھینک دیا۔ بچی بلڈنگ سے ۲۰ فٹ دور نیچے کھڑی ایک کار پر گڑی، قریب سے گزرنے والے بچی کو سینٹ جارج اسپتال لے گئے جہاںڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دیا۔ پولس کاکہنا ہے کہ اس واردات کے بعد چگانی ڈر گیا اور اس نے خود کو بیڈ روم میں بند کرلیا اور پولس کو فون کیا کہ ایک بچے نیچے گر گئی ہے۔ نوکرانی کے ذریعے بار بار دروازہ کھٹکھٹانے پر بھی اس نے دروازہ نہیں کھولا۔ بعد میں پولس نے پہنچ کر چگانی کو گرفتار کرلیا۔ پوچھ تاچھ میں چگانی نے مبینہ طور پر پولس کو بتایا کہ مورکو میں رہنے کے دوران کسی نے اس پر کالا جادو کردیا تھا، اسے بھروسہ تھا کہ جڑواں بچوں کے قتل سے ہی اس سے چھٹکارہ مل جائے گا چونکہ گھر میںنوکرانی تھی اس لیے وہ اپنا منصوبہ پورا نہیں کرپایا۔ ایک پولس افسر نے بتایاکہ چگانی گزشتہ ۱۵ سالوں سے افریقہ کے مورکو میں رہ رہا تھا، وہ ہر سال دومہینے کےلیے ممبئی آتاتھا لیکن اس سال وہ چھ مہینے رہ گیا کیوں کہ وہ کالا جادو سےبچنے کی منصوبہ بندی کررہا تھا۔ عدالت نے چگانی کو ۱۳ ستمبر تک پولس حراست میں بھیج دیا ہے۔ ڈی سی پی ژون ون ڈاکٹر سنگرام سنگھ نشاندار نے بتایا کہ پولس کو چگانی کےگھر سے خط ملا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ ’اپنی زندگی بچانے کیلئے جڑواں بچوں کو مادو‘ ۔ چگانی کے وکیل سنیل پانڈے نے پولس کے دعوے کا انکارکرتے ہوئے کہا کہ سرکاری وکیل نے اپنے کیس کو مضبوط کرنے کےلیے قتل کا دعویٰ کیا ہے میرے موکل نے بچی کو کھڑکی سے نہیں پھینکا تھا بلکہ وہ خود اپنی غلطی سے کھڑکی کےنیچے گرگئی۔ بچی کے والد اور میرے موکل دوست تھے لیکن حال ہی میں دونوں کے درمیان بزنس کو لے کر کچھ ناچاقی ہوگئی ہے۔ وہیں پولس کا کہنا ہے کہ اگر لڑکی اپنے آپ گری ہوتی تو کھڑکی کےنیچے گرتی لیکن وہ بلڈنگ سے ۲۰ فٹ دور کھڑی ہوئی کار پر گری ہے اس کے علاوہ کھڑکی اتنی اونچائی پر تھی کہ تین سال کی بچی وہاں تک چڑھ نہیں سکتی تھی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker