مسلم دنیا

غیر ملکی قبضہ کے مکمل خاتمے تک ہماری جدوجہد جاری رہے گی، ٹرمپ کے ٹویٹ پر طالبان کاشدید رد عمل

کابل۔۹؍ستمبر:امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے مذاکرات سے متعلق ٹوئٹ پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے امارت اسلامیہ افغانستان(طالبان) نے میڈیا کےلیے مندرجہ ذیل بیان جاری کیا ہے۔ ’’امریکی مذاکرات ٹیم کیساتھ ہمارے مذاکرات مفید رہے اور معاہدہ مکمل ہوچکا ہے، کل تک امریکی مذاکراتی ٹیم پیشرفت سے راضی اور گفتگو خوشگوار ماحول میں اختتام پذیر ہوئی،فریقین معاہدہ کے اعلان اور دستخط کی تیاریوں میں مصروف تھے۔معاہدہ پر دستخط اور اعلان کے بعد ہم نے بین الافغان مذاکرات کی نشست ماہ ستمبر کی23 تاریخ کا پہلا دن مقرر کیا تھا۔خطے ، دنیا کے ممالک اور عالمی تنظیموں نے بھی اس عمل کی حمایت کی تھی۔اب چوں کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے طالبان سے مذاکراتی سلسلے کو منسوخ کرنے کا اعلان کیا، جس سے سب سے زیادہ نقصان امریکہ ہی کو پہنچے گا، اس کا اعتماد نقصان دہ،امریکی صلح مخالف مؤقف دنیا کے سامنے مزید واضح،امریکا کی جانی و مالی نقصانات میں اضافہ اور سیاسی تعامل میں اس کے کردار کو متزلزل متعارف کروائے گا۔مذاکرات کے سلسلے کو جاری رکھتے ہوئے امارت اسلامیہ (طالبان) نے دنیا کے سامنے یہ ثابت کردیا کہ جنگ اجنبی کی طرف سے ہم پر مسلط کی گئی ہے، اگر جنگ کی جگہ افہام وتفہیم کے طریقے کو اپنایاجائے، تو ہم آخر تک اس کے لیے پابند رہیں گے۔معاہدہ پر دستخط سے قبل ایک حملے پر ردعمل کا اظہار کرنا،یہ تو حوصلے اور نہ ہی کسی تجربے کی نشاندہی کرتی ہے،اس حال میں کہ مذکورہ حملے سے کچھ قبل امریکی افواج اوران کے افغان حامیوں نے متعدد حملوں میں سینکڑوں افغان شہریوں کو شہید اور ان کے سرمایہ کو نذرآتش کردیا۔صدر ٹرمپ کی جانب سے ریاستہائے متحدہ امریکا کے دورے کی دعوت نامہ ہمیں ماہ اگست کے آخر میں ڈاکٹر زلمے خلیل زاد نے دی، ہم نے دورے کو دوحہ میں معاہدے کے دستخط تک مؤخر کردی۔امارت اسلامیہ (طالبان) کی پالیسی پختہ اور مؤقف غیرمتزلزل ہے، ہم نے 20 برس قبل بھی افہام وتفہیم کی صدا بلند کی تھی،آج بھی وہی مؤقف ہے اور ہمیں یقین ہے کہ امریکی فریق دوبارہ یہی مؤقف اپنائے گا۔ہماری 18 سالہ مزاحمت نے امریکا کے سامنے ثابت کردیا کہ جب تک ہمارے ملک کا قبضہ مکمل طور پر ختم نہ ہوا ہو اور افغانوں کو اپنی مرضی پر نہ چھوڑا جائے،اس کے علاوہ کسی اور چیز پر ہم راضی نہیں ہوتے،اسی عظیم مقصد کے لیے اپنےموجودہ جہاد کو جاری رکھیں گے اور آخری فتح پر ہمیں مکمل یقین ہے‘‘۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker