ہندوستان

سوامی چنمیانند نے میری عصمت دری کی او رایک سال تک اذیت دیتا رہا، متاثرہ لڑکی نے پریس کانفرنس کرکے سوامی اور شاہ جہاں پورپولس پر الزام لگایا

شاہ جہاں پور۔ ۹؍ستمبر: سوامی چنمیانند پر اغوا اور عصمت دری کا الزام لگانے والی لڑکی نے پیر کو ایک پریس کانفرنس کی، لڑکی نے الزام لگایا کہ سوامی چنمیانند نے میری عصمت دری کی او رایک سال تک جسمانی زیادتی کی۔ وہ اپنے چہرے کو کالے کپڑے سے ڈھانک کر میڈیا کے سامنے آئی۔ اس نے یہ بھی الزام لگایا کہ شاہ جہاں پولس چنمیانند کے خلاف کیس درج نہیں کررہی تھی۔ لڑکی نے الزام لگایاکہ چنمیانند نے میری عصمت دری کی اور اس کے بعد ایک سال تک جسمانی اذیتیں دی۔ شاہ جہاں پور نے عصمت دری کا کیس نہیں درج کیا ، میں دہلی میں تھی تب دہلی پولس نے کیس درج کرکے اسے شاہ جہاں پولس کو فاررڈ کیا تھا مگر وہ اب بھی کوئی کارروائی نہیں کررہی ہے۔ اس نے مزید بتایاکہ اتوار کو ایس آئی ٹی نے مجھ سے تقریباً گیارہ گھنٹے پوچھ تاچھ کی میں نے عصمت دری کے بارے میں بتایا، انہیں یہ سب بتانے کے بعد بھی ابھی تک چنمیانند کو گرفتار نہیں کیاگیا ہے۔ اس نے کہا وقت آنے پر میں ویڈیو کلپ بھی پیش کروں گی۔ اس نے بتایاکہ اس سے قبل جب میرے والد نے چنمیانند کے خلاف جسمانی اذیت کے الزام میں تحریر دی تھی تب مقدمہ درج تو دور کی بات ضلع افسر اندر وکرم سنگھ نے میرے والد کو دھمکی دیتے ہوئے چنمیانند کے رسوخ کا حوالہ دیا تھا اور میری گمشدگی کی رپورٹ درج کرانے کو کہا تھا۔ اس نے کہاکہ میرے پاس ثمام ثبوت موجود ہیں، میں کالج کے جس کمرے میں رہتی تھی اسے سیل کردیاگیا ہے، میڈیا کے سامنے کھولا جائے گا، مناسب وقت آنے پر ویڈیو کلپ بھی پیش کیاجائے گا، لڑکی نے کہاکہ میں اپنی او راپنے اہل خانہ کی حفاظت کےلیے اپنا وہ ویڈیو وائرل کیا تھا جس میں میں نے چنمیانند سے جان کا خطرہ بتایا تھا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker