ہندوستان

بزرگ عالم دین مفتی محمد شوکت علی قاسمی سپرد خاک، علمی فضا سوگوار، کثیر تعداد میں جنازے میں عقیدتمندوں کی شرکت

منگل، 10ستمبر، 2019 ،فضل الرحمان قاسمی، بصیرت آن لائن، مئوآئمہ، الہ آباد،

الہ آباد ضلع کے بزرگ عالم دین مفتی محمد شوکت علی قاسمی خلیفہ شیخ طریقت مولانا قمرالزمان الہ آبادی کل اچانک ظہر اس دار فانی سے کوچ کرکے دارآخرت کی رحلت فرمایا،مولانا رحمہ اللہ مولانا احمد پرتاپگڑھی اور شاہ وصی اللہ صاحب الہ آبادی اور قاری صدیق باندوی رحمہ اللہ کے صحبت یافتہ تھے، ان اولیاء سے خصوصی تعلق تھا، ان کی روحانی مجلسوں کے فیض یافتہ تھے، فقیہ الامت مفتی محمود حسن رحمہ اللہ گنگوہی کے خاص شاگرد تھے،الہ آباد پرتاپگڑھ واطراف میں دینی میدان میں ان کی عظیم قربانیاں رہیں،جوناقابل فراموش اور آب زر سے لکھے جانے کے قابل ہیں،مسلسل 49سال تک دین کی خدمت میں مصروف عمل رہے، اور مدرسہ جامعہ انوارالعلوم مئوآئمہ کے لئے تاعمر خدمت انجام دیتے رہے، اور مدرسہ کی ترقی میں اہم کردار رہا، مولانا رحمہ اللہ سادگی پسند ملنسار چھوٹوں سے شفقت سے پیش آنے والے اخلاق وکردار کے بلند مقام پر فائز تھے، طلباء پر نرمی کامعاملہ فرماتے تھے، الہ آباد پرتاپگڑھ واطراف اضلاع میں کثیر تعداد میں طالبان علوم نبوت نے ان سے علمی روحانی فیض حاصل کیا اور ملک کے طول وعرض اور بیرون ممالک میں دینی خدمت انجام دے رہے ہیں، حضرت کی اچانک انتقال کی خبر سنتے ہی قصبہ مئوآئمہ اور دور دراز کے عقیدت ومحبت رکھنے والے محبین ومتوسلین میں غم کی لہر چھاگئی، نماز جنازہ بعد نماز عشاء عیدگاہ مئوآئمہ قبرستان میں اداکی گئی، جس میں ہزاروں کی تعداد میں عقیدت مند شریک ہوئے، الہ آباد پرتاپگڑھ واطراف کے کبار علماء وکثیر تعداد میں طلباءوعلماء نماز جنازہ میں شریک رہے،نماز جنازہ مشہور عالم دین مفتی حبیب الرحمان قاسمی نے ادا کرائی،معروف عالم دین مفتی محمد عفان منصورپوری، مفتی ابوامامہ امروہوی، مولانا عبدالمعید فتحپوری، مولانا ازہر مدنی، مولانا حسن مدنی نے حضرت کے فرزند مفتی فضل الرحمان قاسمی الہ آبادی سے فون پر تعزیت کااظہار کیا، جمعیت علماء ہند کے سکریٹری مولانا حکیم الدین قاسمی نے حضرت کے انتقال پر افسوس کااظہار کیا، اس موقع پر مولانا ضمیرڈروا، مفتی جمیل الرحمان کٹرا،مولانا حنیف باسوپور، مولانا عبدالرشیدسگرا، مولانا عبداللہ جنرل سکریٹری جنرل سکریٹری جمعیت علماء پرتاپگڑھ، قاری رحمت اللہ عرفانی، مولانا ابوالحسن مولانا مقصود بیت المعارف،مولانا شمیم کاتب، حافظ محمود، مولانا حسن الضمیر، حافظ امین، مفتی عبدالباسط،حاجی محمد شعیب انصاری چیرمین،ندیم انتخاب، حافظ عبیداللہ،ماسٹر مبین انصاری، عبداللہ زین انصاری، عبدالرحمان، اشتیاق احمد، عبدالقیوم،محمد شفیق، محمد توفیق، محمد احمد، اور قصبہ واطراف کے کثیر تعداد میں علماء وطلباء اور مدارس کے اساتذہ وذمہ داران موجود رہے،نماز جنازہ کے بعد مغفرت کی دعاکی گئی، حفاظ وعلماء کی ایک بڑی جماعت نے نمازجنازہ کے بعد قبرپر سورہ یس شریف پڑھ کر مغفرت کی دعاکی،

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker