ہندوستان

بابری مسجد مقدمہ : متنازعہ اراضی پر رام للا کا مالکانہ حق کبھی نہیں رہا:راجیو دھون

نئی دہلی ، 11 ستمبر (بصیرت نیوز سروس /ایجنسی ) ایودھیا میں رام جنم بھومی بابری مسجد اراضی تنازعہ پر آج 21 ویں دن سپریم کورٹ میں سماعت ہوئی ، جس میں جہاں سماعت کے براہ راست ٹیلی کاسٹ کے سلسلے میں عرضی کا خصوصی ذکر کیا گیا ، وہیں سنی وقف بورڈ نے اپنے مزید دلائل پیش کئے۔
چیف جسٹس رنجن گگوئی ، جسٹس ایس اے بوبڈے ، جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ ، جسٹس اشوک بھوشن اور جسٹس ایس عبدالنظیر کی آئینی بنچ کے سامنے سنی وقف بورڈ کے وکیل راجیو دھون نے ہندو فریق کے اس دعوے پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ ، ’’کیا رام للا ویراجمان کہہ سکتے ہیں کہ اس زمین پر مالکانہ حق ان کا ہے ؟” نہیں ، کیونکہ ان کا مالکانہ حق کبھی نہیں رہاہے ‘‘۔
مسٹر دھون نے 1962 میں عدالت عظمیٰ کے دئے گئے فیصلے کا حوالہ دیتے ہوئے الہ آباد ہائی کورٹ کے فیصلے پر سوال اٹھایا ، اور کہا کہ جو غلطی پہلے ہوچکی ہے اسے جاری نہیں رکھا جانا چاہئے۔ انہوں نے دلیل دی کہ یہ ثابت کرنے کی کوشش کی جارہی ہے کہ یہ زمین پہلے ہندو فریق کے قبضے میں تھی ، جو صحیح نہیں ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker