مسلم دنیا

کرفیو کے خاتمے پر کشمیر میں خون خرابے کا اندیشہ : عمران خان

 

نیویارک۔۲۷؍ستمبر: پاکستانی وزیر اعظم عمران خان نے جمعہ کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے ۷۴ ویں سیشن میں وزیر اعظم نریندر مودی کے بعد خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جب کشمیر سے کرفیو اُٹھے گا تو خون خرابہ ہوگا ہندوستانی فوجیں کشمیریوں کا قتل عام کریں گی۔ انہوں نے وزیر اعظم نریندر مودی کے بارے میں کہا کہ انہیں غرور نے ا ندھا کردیا ہے۔غرور میں ایسے فیصلے لیے جاتے ہیں۔ س موقع پر انہوں نے آر ایس ایس پر نشانہ سادھا او رکہاکہ آر ایس ایس نسل پرستی اور آریہ سماج پر یقین رکھتی ہے۔ آر ایس ایس مسلمانوں کی نسل کشی پر بھی یقین رکھتی ہے آر ایس ایس ہٹلر اور مسولینی سے متاثر ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان مشکل حالات سے گزر رہا ہے۔ وقت آگیا ہے غریب ملکوں کی دولت چرانے کا عمل ختم کیاجائے ۔ غریب ممالک کے اربوں ڈالر غیر قانونی طریقے سے باہر چلے جاتے ہیں۔ آف شور کمپنیوں سے غریب ممالک کے اثاثے جدید دنیا میں چلے جاتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ اقوام متحدہ کو ماحولیات کے سلسلے میں سنجیدہ اقدامات کرنے ہوں گے۔ عمران خان نےکہا کہ نائن الیون کے بعد اسلامو فوبیا پھیلا، بعض ممالک میں مسلمان خواتین کا حجاب پہننا معیوب ہوگیا یہ سب کیا ہے؟ یہ سب اسلامو فوبیا ہے، اسلام صرف ایک ہی ہے جو کہ حضرت محمدﷺنے دیا، کچھ مغربی لیڈروں نے اسلام کو دہشت گردی سے جوڑ دیا جس کی وجہ سے اسلامو فوبیا پھیلا اور اس میں اضافہ مسلمانوں کے لیے خطرناک ہے، افسوس کی بات ہے کہ بعض مغربی ممالک کے سربراہان اسلام پرستی اور بنیاد پرستی کے الفاظ استعمال کررہے ہیں حالاں کہ دہشت گردی کا کسی بھی مذہب سے کوئی تعلق نہیں۔ عمران خان نے کہا کہ نائن الیون سے قبل تامل ٹائیگرز خودکش حملے کرتے تھے یہ تامل ٹائیگرز ہندو تھے لیکن کسی نے انہیں دہشت گردی سے نہیں جوڑا جب کہ نائن الیون کے حملوں کو اسلام سے جوڑ دیا گیا، نبی کریمﷺ نے ریاست مدینہ قائم کی جس میں اقلیتوں اور خواتین کو حقوق دیے گئے یہ پہلی فلاحی ریاست تھی جس میں غلامی کا خاتمہ ہوا اور سب لوگوں کو ان کے حقوق دیے گئے، ریاست مدینہ میں حاصل شدہ ٹیکس کی رقم غریبوں پر خرچ کی جاتی تھی، جب اسلام کی توہین پر مسلمانوں کا ردعمل سامنے آتا ہے تو انہیں انتہا پسند کہہ دیا جاتا ہے، مغرب کو سمجھنا چاہیے کہ نبی کریم ﷺکی توہین کی کوشش مسلمانوں کے لیے بہت بڑا معاملہ ہے جس طرح ہولوکاسٹ کے بارے میں کہا جاتا ہے تو یہودیوں کو برا لگتا ہے لیکن یہ آزادی اظہار رائے نہیں دل آزادی ہے۔ عمران خان نے کہا کہ صرف ایک اسلام ہے جو حضرت محمد صلی اللہ علیہ والہ وسلم کا ہے، اسلامو فوبیا سے مسلمانوں کو تکلیف پہنچی اور صورت حال بدترین ہورہی ہے، مسلمان لیڈروں کو انتہا پسندی سے اتنا خطرہ تھا کہ وہ جدید مسلمان بن گئے۔عمران خان نے کہا کہ اللہ کے رسول نے حکم دیا قانون کے سامنے سب برابر ہیں، اسلام کے چوتھے خلیفہ نے یہودی کے خلاف اپنا مقدمہ ہارا، اللہ کے رسول ہمارے دلوں میں رہتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اسلامی معاشرے میں ایسا سوچا بھی نہیں جاسکتا ہے، اقلیت سے اچھا سلوک نہ کرنا اسلامی تعلیمات کے برعکس ہے، ہولوکاسٹ کے بارے میں احتیاط کی جاتی ہے کہ یہودیوں کو تکلیف ہوتی ہے، ہم چاہتے ہیں اللہ کے رسول کی عزت کی جائے۔عمران خان نے کہاکہ افغان جنگ کی فنڈنگ امریکہ نے کی لیکن جب جنگ ختم ہوگئی تو مجاہدین دہشت گرد ہوگئے۔ انہوں نے کہا کہ میں کشمیر کےلیے خصوصی طو رپر یہاں آیا ہوں۔کشمیر میں ۵؍اگست سے تاحال کرفیو ہے اور وہاں کے لوگ دنیا کی سب سے بڑی جیل میں ہیں گزشتہ 30 سال میں ایک لاکھ کشمیریوں کو مار دیا گیا جب کہ دس ہزار خواتین کو زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔ برطانیہ میں ۸۰ لاکھ جانوروں کو قید کردیاجائے تو شور مچ جائے لیکن کشمیر میں ۸۰ لاکھ مسلمان قید ہیں اور دنیا خاموش ہے۔

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker