ہندوستان

دربھنگہ میں فٹ بال میچ کے دوران فرقہ وارانہ تصادم

 

۵؍گرفتار، سماجی شخصیات کی جانب سے سماج دشمن عناصر پر سخت کارروائی کرنے کی اپیل

دربھنگہ۔ ۱۰؍اکتوبر: (رفیع ساگر) کمتول تھانہ کے ہریہر پور اور بہوواڑہ گاوں کے درمیان فٹبال کھیل میدان میں ہوئی مارپیٹ کے بعد فرقہ وارانہ جھڑپ معاملے میں کمتول تھانہ کے انچارج سرور عالم نے فورری کارروائی کرکے دونوں جانب سے 5 افراد کو گرفتار کر جمعرات کو عدالتی تحویل میں جیل بھیج دیا ہے اور دیگر فرار ملزمین کی گرفتاری کے لئے تابڑ توڑ چھاپہ ماری کی جا رہی ہے۔گرفتار ہونے والوں میں ہریہر پور باشندہ منیت کمار شرما،راکیش جھا اور بہوواڑہ گاوں کے محمد تبسم عرف عبدالصافی،محمد ظفیر عرف بھلا اور محمد سعود شامل ہے۔اس معاملے میں 2 الگ الگ ایف آئی آر کمتول تھانہ میں درج ہوئی ہے جس میں 11 اور 13 کل 24 افراد کو نامزد ملزم بنایا گیا ہے۔پہلی ایف آئی آر 19/147 بہوواڑہ باشندہ عبدالباسط کے لڑکے عبدالصافی کی تحریر پر درج کی گئی ہے جس میں الزام لگایا گیا ہے کہ میرا لڑکا محمد عادل منگل کو فٹبال میچ دیکھنے گیا تھا ۔جہاں ہاف ٹائم کے بعد کے بعد مراری جھا سمیت ہریہر پور کے 4-3 افراد نے میرے بیٹے کے ساتھ مار پیٹ کی تھی ۔جس کے لئے سرکردہ لوگوں کو پنچایت بلوانے کی بات کہی گئی تھی اس کے باوجود ہریہر پور چوک سے مشرق بہوواڑہ جانے والی سڑک میں ہریہر پور باشندہ مراری جھا ، سگم جھا ، آسوتوش کمار ٹھاکر ، راہل کمار جھا ، دلیپ جھا ، متھلیش جھا ، ببلو کمار ، روشن کمار جھا ، منیت کمار شرما ، راکیش جھا ، نندن کمار سمیت دیگر 40-50 افراد کے ساتھ مل کرہڑوے ہتھیار کے ساتھ جان مارنے کی نیت سے مارپیٹ اور لوٹ پاٹ کے واقعہ کو انجام دیا۔جس میں بہوواڑہ رہائشی محمد اسرائیل ، محمد قادر ، لال بابو ، محمد آصف ، محمد ساجد اور محمد بشیر بری طرح زخمی ہوئے جن کا علاج کیا جارہا ہے۔دوسری ایف آئی آر 19/148 ہریہر پور رہائشی رام ولاس جھا کے بیٹے اور ٹیمپو ڈرائیور راکیش جھا کی تحریر پر درج ہوئی ہے جس یہ الزام لگایا گیا ہے کہ بدھ کی شام دربھنگہ سے سواری لے کر آرہے تھے تبھی بہوواڑہ چوک پر جان مارنے کی نیت سے بہوواڑہ رہائشی محمد ذاکر ، عبد الصافی عرف تبسم ، محمد سعود ، محمد افتخار ،محمد مستقیم ، محمد قربان ، محمد چاند ، محمد چوکھا ، رفیع احمد ، محمد ساجد ، محمد صدام ،اور تبسم کے لڑکے محمد شاکر نے ہروے ہتھیار سے حملہ کر ٹیمپو کو نقصان پہنچایا اور مجھے بری طرح زخمی کر دیا ہے۔دونوں ایف آئی آر درج کرنے کے بعد پولیس نے ملزمین کی گرفتاری کے لئے کارروائی تیز کردی ہے۔غور طلب ہو کہ ہریہر پور کھیل میدان میں فٹبال میچ کے دوران ہوئی معمولی مارپیٹ کے معاملہ نے بدھ کی شام فرقہ وارانہ رنگ لے لیا تھا جس میں پرتشدد جھڑپ کے دوران دونوں جانب سے نصف درجن افراد کے زخمی ہونے کے بعد حالات کافی کشیدہ ہوگئے تھے۔بعد میں ٹریفک ڈی ایس پی برجو پاسوان و کمتول سرکل کے پولیس انسکپٹر بسنت کمار کی قیادت میں کمتول انچارج سرور عالم،جالے انچارج دلیپ کمار پاٹھک ،سمری انچارج ہری کشور یادو سمیت سنگھواڑہ ،مبی اور کیوٹی تھانہ کی پولیس نے اضافی پولیس فورس کے ساتھ کارروائی کرکے دیر رات تک صورتحال پر قابو پایا تھا۔اس کے بعد وہاں نظم و نسق بحال ہوئی۔فرقہ وارانہ کشیدگی پر قابو پانے کے باوجود احتیاط کے طور پر متاثرہ گاوں میں پولیس کیمپ جاری ہے۔جمعرات کو ایس ڈی او راکیش کمار گپتا اور صدر ایس ڈی پی او انوج کمار نے ہریہر پور پنچایت بھون پر امن کمیٹی کی میٹنگ کرکے گاوں میں سماجی ہم آہنگی برقرار رکھنے کی کوشش کی ۔میٹنگ میں موجود دونوں جانب کے سرکردہ شخصیات نے اس واقعہ کو اتفاقی قرار دیکر اس کی مذمت کی اور سماج دشمن عناصر پر سخت کارروائی کرنے کی اپیل کی تاکہ پھر اس طرح کا معاملہ پیش نہیں آسکے۔میٹنگ میں ہریہر پور مشرقی کے سرپنچ عبدالرازق،مکھیا کے شوہر جتندر جھا،سابق مکھیا وجئے کمار جھا،سابق پنچایت سمیتی رکن ضمیر احمد،سابق پیکس صدر سیاشرن مشرا،بہوواڑہ گاوں کے سابق مکھیا محمد انور،پنچایت سمیتی رکن محمد اشفاق،سرپنچ کے شوہر محمد جوہی اور محمد قاضی ملک کے علاوہ ٹریفک ڈی ایس پی برجو پاسوان ،انسپکٹر بسنت کمار ،کمتول انچارج سرور عالم ،سنگھواڑہ بی ڈی او سدھارتھ کمار ،سی او سشیل کمار اپادھیائے سمیت دیگر عوامی و سیاسی نمائندے شریک ہوئے۔امن کمیٹی کے ذریعہ علاقے میں امن بحالی کے لئے کوششیں تیز ہونے کے باوجود گاوں میں دہشت کا ماحول جاری تھا۔اقلیتی فرقہ کے زیادہ تر لوگ گاوں چھوڑ کر فرار ہیں۔

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker